اردو | हिन्दी | English
324 Views
Science

اسرو کاخلائی محاذ پر تاریخ ساز کارنامہ

satellite_0
Written by Tariq Hasan

شری ھری کوٹا، آندھرا پردیش، 15 فروری (یو این آئی)ہندوستانی خلائی تحقیقی تنظیم (اسرو) نے بے مثال کامیابی حاصل کرتے ہوئے آندھرا پردیش کے شري ھری کوٹا واقع ستیش دھون خلائی مرکز سے آج پولرسیٹلائٹ لانچ ویہیکل پی ایس ایل وی سی 37 کے ذریعے ریکارڈ 104 مصنوعی سیاروں کو خلا میں بھیجا۔ اب تک کسی ملک نے 50 سیٹلائٹ بھی ایک ساتھ نہیں چھوڑے ہیں۔ روس نے ایک ساتھ سب سے زیادہ 33 سیٹلائٹ چھوڑے تھے ۔ان 104 مصنوعی سیاروں کا کلُ وزن 1378 کلو گرام ہے اور ان میں 96 صرف امریکہ کے سیٹلائٹ ہیں۔یہ سیارے ستیش دھون خلائی مرکز کے پہلے لانچنگ پیڈ سے صبح 9.28 بجے داغے گئے ۔ مشن میں اہم سیٹلائٹ 714 کلو گرام وزن والا کارٹوسیٹ -2 سیریز سیٹلائٹ ہے جو اسی سیریز کے پہلے لانچ ہوئے دیگر مصنوعی سیارہ کی طرح ہے ۔ اس کے علاوہ اسرو کے دو اور 101 غیر ملکی نینو سیٹلائٹ (مصنوعی سیاروں) کو بھی خلا میں بھیجا جن کا کل وزن 664 کلو گرام ہے ۔ پی ایس ایل وی کی یہ 39 ویں پرواز تھی اور ان میں سے صرف ایک ہی پرواز ناکام رہی ہے ۔اسرو کے دو نینوسیٹلائٹ آئی این ایس -1 اے اور آئی این ایس -1 بی ہیں۔ اس کی لانچنگ کا مقصد ان سیٹلائٹ کی نئی صلاحیتوں کو پرکھنا ہے ۔ ان پر کل چار پیلوڈ لگے ہوئے ہیں جنہیں اسرو کے خلائی ایپلی کیشنز سینٹر اور لیباریٹری فار الیکٹرو آپٹک سسٹمز نے بنایا ہے ۔غیر ملکی سیٹلائٹ میں اسرائیل، قزاقستان، ہالینڈ، سوئٹزرلینڈ اور متحدہ عرب امارات کے ایک ایک اور امریکہ کے 96 سیٹلائٹ شامل ہیں۔ اس کے ساتھ ہی پولرسیٹلائٹ لانچ ویہیکل (پی ایس ایل وی) سے خلا میں بھیجے گئے مصنوعی سیاروں کی تعداداب بڑھ کر 206 ہو جائے گی۔ اسرو کا یہ قابل اعتماد لانچنگ پیڈ اب تک 122 مصنوعی سیاروں کو کامیابی سے مدارمیں قائم کر چکا ہے ۔ اس میں 79 غیر ملکی اور 43 ملکی سیٹلائٹ شامل ہیں۔لانچنگ کے ٹھیک 17 منٹ بعد جہاز کے 510 کلومیٹر کی اونچائی پر پہنچنے کے ساتھ سب سے پہلے کارٹوسیٹ -2 سیٹلائٹ الگ ہوا اور اسے متعین مدارمیں قائم کر دیا گیا۔ اس کے ایک منٹ بعد آئی این ایس -1 اے اور آئی این ایس -1 بی راکٹ سے الگ ہو گئے ۔ اس کے بعد ایک ایک کر کے تمام 101 غیر ملکی سیٹلائٹ بھی راکٹ سے الگ ہو کر اپنے مقررہ شمسی مدارمیں قائم ہو گئے ۔صدر، نائب صدر اور وزیر اعظم سمیت ملک کے کئی معزز لیڈروں نے پی ایس ایل وی کے ذریعے کارٹوسیٹ کے ساتھ 103 نینو سیٹلائٹ کو کامیابی کے ساتھ خلا میں بھیجنے کو مثالی اور تاریخی کامیابی قرار دیتے ہوئے اس کے لئے ہندوستانی خلائی تحقیق کی تنظیم کے سائنسدانوں مبارک باد پیش کی ہے اور کہا ہے کہ اس سے پوری دنیا میں ہندوستان کا نام روشن ہوا ہے اور اس کے وقار میں اضافہ ہوا ہے ۔اسرو نے آندھرا پردیش کے شري ھری کوٹا واقع ستیش دھون خلائی مرکز سے آج پی ایس ایل وی سی 37 کے ذریعے ریکارڈ 104 مصنوعی سیاروں کو کامیابی کے ساتھ مدار میں قائم کرنے کا کارنامہ انجام دیا۔ ان میں دو کارٹوسیٹ -2 سریز کا مقامی سیٹلائٹ اور 101 غیر ملکی نینو سیٹلائٹ ہیں۔ ان میں سے 96 سیٹلائٹ صرف امریکہ کے ہیں۔صدر پرنب مکھرجی نے خلائی محکمہ کے سکریٹری اور اسرو کے صدر مسٹر اے ایس کرن کمار کو بھیجے تہنیتی پیغام میں کہا کہ یہ دن ہندوستان کے خلائی پروگرام کی تاریخ میں ایک اہم دن کے طور پر جانا جائے گا۔ملک کو اس کامیابی پر فخر ہے ۔ اس شاندار کارکردگی نے ایک بار پھر ہندوستان کی بڑھتی ہوئی اندرونی صلاحیتوں کو اجاگر کیا ہے ۔صدرنے کہا کہ وہ اس کے لئے مسٹر کمار سمیت اس مشن سے منسلک سائنسدانوں، انجینئرز، تکنیکی ماہرین اور دیگر تمام ساتھیوں کو مبارک باد پیش کرتے ہیں اور اسرو سے درخواست کرتے ہیں کہ وہ ملک کی اندرونی صلاحیتوں کی ترقی کے لئے کوششیں جاری رکھے ۔نائب صدر حامد انصاری نے اپنے پیغام میں کہا کہ جس بہترین طریقے سے 104 مصنوعی سیاروں کو انتہائی کامیابی کے ساتھ خلامیں چھوڑا گیا اس نے ایک بار پھر خلا میں ہندوستان کی صلاحیتوں کو ثابت کیا ہے ۔ اس کے لئے اسرو کے سائنسداں مبارکباد کے مستحق ہیں۔اسرو کے مستقبل کے مہمات کے لئے میری طرف سے نیک خواہشات. ‘ وزیر اعظم نریندر مودی نے اپنے تہنیتی پیغام میں اسرو کے سائنسدانوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ اس کامیابی کے لئے ‘ہم اپنے سائنسدانوں کو سلام کرتے ہیں۔ آج کی اس غیر معمولی کامیابی کے لئے اسرو کی پوری ٹیم کودل سے مبارک باد. ‘کانگریس صدر سونیا گاندھی نے اپنے تہنیتی پیغام میں کہا کہ ایک ساتھ 104 مصنوعی سیاروں کو مدار میں قائم کرنابڑی کامیابی ہے ۔ اس کے ذریعے ہندوستان نے خلائی سائنس کے میدان میں ایک طرح سے دنیا کی قیادت کی ہے ۔ اس کامیابی نے ہمارے اجداد کی اس امید کا احساس کرایا ہے جس میں وہ ملک کو ایک سائنسی طاقت کے طور پر دیکھنا چاہتے تھے ۔انہوں نے کہا کہ اس کے لئے میں اسرو کے تمام سائنسدانوں کو مبارکباد پیش کرتی ہوں۔سائنس اور ٹیکنالوجی کے وزیر ڈاکٹر ھرش ورددھن نے مصنوعی سیاروں کی کامیاب لانچنگ کو ملک کے لئے “فخر کا لمحہ” بتاتے ہوئے اسرو کے سائنسدانوں اور اس مشن کو کامیاب بنانے کے لئے پردے کے پیچھے کام کرنے والے تمام افراد کو مبارک باد دی۔ انہوں نے کہا “یہ بہت بڑی کامیابی ہے ۔ یہ ملک کا ڈی این اے ہے جو ہم نے ماضی سے حاصل کیا ہے اور اس کی مدد سے ہمیں اپنے مستقبل کو ماضی سے بھی زیادہ خوبصورت بنانا ہے . “کیمیکل اور کھادکے مرکزی وزیر اننت کمار نے کہا کہ ایک ساتھ 104 سیٹلائٹ کی لانچنگ اسرو نے تاریخ رقم کی ہے ۔ اس نے ایک پیچیدہ خلائی مہم کو کامیابی عطا کر اپنی پیشہ ورانہ صلاحیت کی حیرت انگیز کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے ۔ اس کامیابی کے پیچھے اسرو کی ٹیم کی انتھک کوشش شامل ہے . “دنیا ملک کا پرچم لہرانے کے لئے میں اسرو کے سائنسدانوں کو مبارکباد پیش کرتا ہوں۔

About the author

Tariq Hasan