اردو | हिन्दी | English
129 Views
Politics

بنگال پر ممتا اورتمل ناڈو پر اماں کاقبضہ برقرار،آسام میں بھاجپا سرکار

پانچ-ریاستوں
Written by Taasir Newspaper
کیرالہ میں بایاں محاذ اور پڈوچیری میں کانگریس اتحاد کو اکثریت ،ممتا بنرجی 27 مئی کو لیں گی حلف
نئی دہلی، 19 مئی (یو این آئی) پانچ ریاستوں کے اسمبلی انتخابات میں بی جے پی نے شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے آسام میں پہلی بار اپنا پرچم لہرایا ہے جبکہ مغربی بنگال میں ممتا بنرجی اور تمل ناڈو میں جے للتا اپنی حکومت بچانے میں کامیاب رہی ہیں۔ کیرالہ اور آسام میں کانگریس کو اقتدار سے محروم ہونا پڑا ہے ۔کیرالہ میں بایاں محاذ اتحاد اور پڈوچیری میں کانگریس اتحاد اکثریت حاصل کرنے میں کامیاب رہا ہے۔ مغربی بنگال میں حسب اندازہ ممتا بنرجی کی قیادت والی ترنمول کانگریس کا اقتدار پر قبضہ برقرار رہا۔ تمل ناڈو میں ایگزٹ پول کی گو مگو والی کیفیت ختم کرنے کا سہرا اناڈی ایم کے کے سر بندھا۔ادھرجنوبی ریاست تمل ناڈو میں ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کرونا نیدھی ریاست میں اقتدار کی تبدیلی کی روایت اس بار اپنے حق میں برقرار رکھنے میں ناکام رہے ۔بنگال میں ممتا بنرجی کی قیادت والی ترنمول کانگریس 294 سیٹوں والی اسمبلی میں211 سیٹیں جیت کر دو تہائی اکثریت حاصل کرلی ہے۔کانگریس اور بایاں محاذ کا اتحاد 76 سیٹوں پر سمٹ کر رہ گیاہے۔ بی جے پی کو زیادہ سیٹیں تو نہیں ملی ہیں مگر اس کے ووٹوں کا تناسب 10 فیصد سے زیادہ ہوگیا ہے۔ آسام میں بی جے پی 126 رکنی اسمبلی میں مطلوبہ اکثریت سے کہیں زیادہ 86 سیٹیں حاصل کرلی ہیں۔یہاں حکمراں اتحاد کو محض 26 سیٹیں حاصل ہوئی ہیں۔یو ڈی ایف 13 سیٹیں جیتنے میں کامیاب رہی ہے۔تمل ناڈو میں محترمہ جیہ للیتا کی قیادت والی انا ڈی ایم کے 234 رکنی اسمبلی میں 134 سیٹیں جیت کر واضح اکثریت حاصل کرلی ہے۔اس طرح وہ لگاتار دوسری بار ریاست کی کمان اپنے ہاتھ میں رکھنے میں کامیاب رہی ہیں جو تمل ناڈو کی روایت کے خلاف ہے۔ایسا شاذ ونادر ہی ہوتا ہے کہ حکمراں جماعت اقتدار بچانے میں کامیاب رہتی ہے۔تمل ناڈو میں کرونا ندھی کی قیادت والا ڈی ایم کے کانگریس اتحاد پارٹی 98 سیٹیں جیتنے میں کامیاب رہا ہے۔ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی نے ریکارڈ تیرھویں بار اسمبلی الیکشن جیت لیا ہے ۔مسٹر کروناندھی نے اپنے قریب ترین حریف انا ڈی ایم کے کے آر پننیرسیلوم کو 68 ہزار 366 ووٹوں سے شکست دی۔ انہیں کل ایک لاکھ 21 ہزار 473 ووٹ ملے جبکہ مسٹر پننیرسیلوم کو 53 ہزار 107 ووٹ ملے ۔انہوں نے ریکارڈ تیرھویں بار اسمبلی انتخاب جیت لیا ہے ۔ وہ ملک کے اکلوتے ایسے لیڈر ہیں جنہیں اب تک کسی الیکشن میں شکست کا سامنا نہیں کرنا پڑا ہے ۔ 93 سالہ مسٹر کروناندھی نے پہلا اسمبلی انتخابات سال 1957 میں ضلع تھنجاور کے کلي تھلي سیٹ سے آزاد امیدوار کی حیثیت سے لڑا تھا۔ کیرالہ میں بائیں جمہوری محاذ کو 91 سیٹیں حاصل ہوگئی ہیں۔یو ڈی اے کو 47 سیٹیں ملی ہیں ،بی جے پی یہاں کھاتہ کھولنے میں کامیاب رہی ہے۔بھارتیہ جنتا پارٹی کے امیدوار و راج گوپال نے کیرالہ کے نیموم اسمبلی سیٹ پر مارکسی کمیونسٹ پارٹی (سی پی ایم) کے وشونکٹي کو آٹھ ہزار 600 سے زیادہ ووٹوں سے شکست دے کر ریاست میں پارٹی کا اکاؤنٹ کھول دیا۔

About the author

Taasir Newspaper