اردو | हिन्दी | English
575 Views
Sports

بھارت کی جنوبی افریقہ پر دلچسپ خطابی جیت

Cricket
Written by Tariq Hasan

کولمبو، 21 فروری (یو این آئی) دیپتی شرما (71) اور مونا میشرام (59) کی شاندار نصف سنچریوں کے بعد کپتان ھرمن پریت کور کی ناٹ آ¶ٹ 41 رنز کی فیصلہ کن اننگز کی بدولت ہندوستان نے جنوبی افریقہ کو منگل کو آخری گیند پر ایک وکٹ سے شکست دے کر آئی سی سی خواتین ورلڈ کپ کوالیفائنگ کا خطاب جیت لیا۔جنوبی افریقہ کی خواتین ٹیم نے 49.4 اوور میں 244 رن کا مشکل اسکور بنایا جبکہ ہندوستانی ٹیم نے 50 اوور میں نو وکٹ پر 245 رنز بنا کر سانسوں کو روک دینے والے فائنل میں خطاب اپنے نام کر لیا۔ھرمن پریت نے کپتانی کی ذمہ داری ادا کرتے ہوئے 41 گیندوں پر دو چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے ناٹ آوٹ 41 رن کی میچ فاتح اننگز کھیلی۔ہندوستان کو آخری اوور میں جیت کے لیے نو رن کی ضرورت تھی اور اس کے دو وکٹ باقی تھے ۔مارسیا لیتسوالو کے آخر¸ اوور کی پہلی گیند پر پونم یادو رن آ¶ٹ ہو گئیں۔ھرمن پریت اگلی تین گیندوں پر کوئی رن نہیں بنا سکیں۔ہندوستانی خیمے کی دھڑکنیں تیز ہو رہی تھیں اور اب دو گیندوں پر آٹھ رنز چاہیے تھے ۔ھرمن پریت نے پانچویں گیند پر وکٹ پر آگے آتے ہوئے ڈیپ مڈ وکٹ کے اوپر سے شاندار چھکا جڑ دیا۔اب آخری گیند پر دو رنز چاہیے تھے ۔ھرمن پریت نے وکٹ پر آگے آتے ہوئے گیند کو فل ٹاس میں بدلا اور گیند کو لانگ آن کی جانب اٹھا دیا۔فیلڈر نے کیچ کی پوری کوشش کی لیکن گیند ان سے آگے گر گئی۔اس درمیان ھرمن پریت اور راجیشور¸ گایکواڈ نے تیزی سے بھاگتے ہوئے دو رن پورے کرکے جیت اور خطاب ہندوستان کی جھولی میں ڈال دیا۔ہندوستان کے جیتتے ہی تمام کھلاڑی میدان میں دوڑ پڑیں اور انہوں نے ھرمن پریت کو کندھے پر اٹھا لیا۔ہندوستانی خاتون کرکٹ کیلئے یقینا یہ فخریہ لمحہ تھا۔ہندوستان نے انگلینڈ اور ویلز میں 24 جون سے 23 جولائی تک ہونے والے عالمی کپ کے لیے پہلے ہی کوالیفائی کر لیا تھا اور اب فائنل جیت کر اس نے ورلڈ کپ کے لیے اپنا حوصلہ بلند کر لیا۔ھرمن پریت نے دبا¶ کے لمحات میں غضب کا تحمل کا مظاہرہ کرتے ہوئے میچ فاتح اننگز کھیلی۔ ان کا پانچویں گیند پر مارا گیا چھکا طویل عرصے تک یاد کیا جائے گا۔ ہندستانی ٹیم 44 ویں اوور تک چار وکٹ پر 209 رنز بنا کر آسان جیت کی طرف گامزن تھی لیکن اس کے بعد ہندوستان نے 28 رن کے وقفہ میں پانچ وکٹ گنوا دیے لیکن ھرمن پریت نے پورے ٹورنامنٹ میں ہندستانی ٹیم کا مضبوط آرڈر ٹوٹنے نہیں دیا اور ملک کو خطاب دلا کر ہی دم لیا۔ہندستان کی جیت میں اوپنر مونا (59) اور تیسرے نمبر کی بلے باز دیپتی (71) کا بھی اہم کردار رہا جنہوں نے دوسرے وکٹ کے لئے 124 رن کی قیمتی شراکت کی۔مونا نے ٹورنامنٹ کی اپنی تیسری نصف سنچری بنائی اور 82 گیندوں کی اننگز میں سات چوکے اور ایک چھکا لگایا۔ مونا کے کیریئر کی یہ تیسری نصف سنچری بھی تھی ۔دیپتی نے بھی ٹورنامنٹ کی تیسری نصف سنچری بنائی۔انہوں نے 89 گیندوں پر 71 رنز کی اننگز میں آٹھ چوکے لگائے ۔ویدا کرشنامورتی نے 27 گیندوں میں 31 رنز بنائے ۔شکھا پانڈے نے 12 رنز بنائے ۔جنوبی افریقہ کی جانب سے میریجین کیپ نے 36 رن پر دو وکٹ اور ایابوگا سانچہ نے 55 رن پر دو وکٹ لئے ۔اس سے پہلے جنوبی افریقہ کی اننگز میں کوئی نصف سنچری تو نہیں بنی لیکن کئی بلے بازوں نے مفید شراکت دیتے ہوئے ٹیم کو 49.4 اوور میں 244 کے اسکور تک پہنچایا۔مگنان ڈو پریز نے 72 گیندوں پر 40 رن، لیزل لی نے 31 گیندوں میں 37 رنز، کپتان ڈین وان نیکرک نے 42 گیندوں میں 37 رنز، سن لس نے 29 گیندوں میں 35 رن اور شلو ٹراین نے 23 رنز بنائے ۔ترشا چئٹ¸ نے 22 اور ایل وولوارٹ نے 21 رنز بنائے ۔ہندوستانی گیند بازوں نے کنٹرول بولنگ کرتے ہوئے جنوبی افریقہ کے وکٹ برابر لئے اور اس کو بڑا اسکور بنانے سے روک دیا۔لیفٹ آرم اسپنر راجیشور¸ گایکواڈ نے 51 رن پر تین وکٹ اور درمیانے تیز گیند باز شکھا پانڈے نے 41 رن پر دو وکٹ لئے ۔ایکتا بشٹ، پونم یادو اور دیپتی شرما کو ایک ایک وکٹ ملی۔

About the author

Tariq Hasan