اردو | हिन्दी | English
833 Views
Health

تناؤ کے شکار ذہن کو پرسکون بنانے کیلئے بہترین طریقہ

tanau ke shikar
Written by Tariq Hasan

*۔ شاذیہ ماٹن
گہری سانس لینا تناؤ کے شکار ذہن اور جسم کو پرسکون بنانے کے لیے بہترین طریقہ ہے۔ یہ بات امریکا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آئی۔ اسٹینفورڈ یونیورسٹی اور کیلیفورنیا یونیورسٹی کی مشترکہ تحقیق کے دوران 175 دماغی خلیات کی شناخت کی گئی جو کہ سانس اور ذہن کو پرسکون بنانے کا درمیان تعلق کا باعث ہیں۔ صدیوں سے یوگا کی تعلیمات میں کہا جارہا ہے کہ سانس کو کنٹرول کرنا ذہن پرسکون بنانے میں مددگار ثابت ہوتا ہے اور چند گہری سانسیں غصے کو کم کرتی ہیں مگر اب اس کی سائنسی وضاحت تلاش کرلی گئی ہے۔ تحقیق کے مطابق سست روی سے گہری سانس لینا مزاج میں تبدیلی لانا کا باعث بنتی ہے۔ تحقیق میں مزید بتایا گیا کہ اگر سانسوں کی رفتار میں کمی بیشی کرنا چاہتے ہیں تو آپ کو درست طریقہ کار جاننا چاہئے، ورنہ کوئی فائدہ نہیں ہوتا۔ یہ دماغی خلیات جو سکون، توجہ، جوش اور ذہنی تشویش کا باعث ہوتے ہیں، وہ جماہی، نیند، ہنسنے اور دیگر کیفیات کے درمیان فرق پہچان سکتے ہیں۔ چوہوں پر تجربات کے دوران محققین نے چوہوں کے ان خلیات میں تبدیلیاں کیں جس کے نتیجے میں وہ زیادہ پرسکون ہوگئے۔ محققین کے مطابق گہری سانسیں تناؤ اور دیگر منفی جذبات پر کنٹرول کرکے ذہن اور جسم کو پرسکون بنانے میں مددگار ثابت ہوتی ہیں۔

About the author

Tariq Hasan