اردو | हिन्दी | English
196 Views
Deen

حد یث خدا بلند امور کو پسند ،اور اچھے کامو ں کو پسند کرتا ہے ۔ نبی کریم ﷺ

اسلامی تاریخ : حضرت عمارؓ

حضرت عمارؓکی جوانی کے دور میں حضورﷺ نے اسلام کی دعوت شروع کی، جس سے متاثر ہوکر حضرت عمارؓ ایمان میں داخل ہوئے ، اسلام لاتے ہی اپنی والدہ حضرت سمیہؓ کے پاس آئے اور ان کے سامنے توحید کی دعوت پیش کی، وہ بھی مسلمان ہوگئیں، پھر ان دونوں نے حضرت یاسرؓ کو اسلام کی باتیں بتائیں، بیوی اور بیٹے کی بار بار دعوت اور ذہن سازی سے حضرت یاسرؓ نے بھی ایمان قبول کرلیا؛ مسلمان ہوتے ہی کفار نے ظلم ڈھانا شروع کردیا، ایک روز خوب تکلیف دینے کے بعد کفار ان کے جسم کو جلانے لگے، تو حضرت عمارؓ نے جان چھڑانے کے لیے ان کے جھوٹے بتوں کا نام لے لیا، ان لوگوں نے انہیں چھوڑ دیا، وہ حضورﷺ کے پاس آئے اور چیخ کر رونے لگے، حضور ﷺ نے وجہ دریافت کی تو بتایا کہ جان بچانے کے لیے میں نے بتوں کا نام لے لیا، حضورﷺ نے فرمایا: ’’تمہارا دل پر ثابت تھا؟‘‘ تو عرض کیا: ہاں! اسی وقت اللہ تعالیٰ نے حضرت عمارؓ کے حق میں آیت نازل فرمائی، پھر وہ مکہ سے ہجرت کرگئے اور مسجد قباء کی تعمیر میں حصہ لیا جن میں نماز پڑھنے والوں کی پاکی کی تعریف اللہ نے قرآن میں بیان فرمائی ہے۔ حضرت عمارؓ حضورﷺ کے ساتھ تمام غزوات میں ساتھ رہے، ۳۷ھ ؁ میں ایک غزوہ کے دوران ان کو دودھ دیا گیا تو فرمایا: مجھ سے حضورﷺ نے فرمایا تھا: ’’تم دنیا میں سب سے آخری چیز دودھ پیوگے‘‘۔ پھر دودھ پیا اور میدان میں اُترے اور شہید ہوگئے، اس وقت ان کی عمر ۹۴ سال تھی۔ حضرت علیؓ نے نماز جنازہ پڑھاکر کوفہ میں دفن کیا۔

About the author

Taasir Newspaper