اردو | हिन्दी | English
284 Views
Sports

راہل کے ہاتھوں سے پھسلی ڈبل سنچری

256417
Written by Tariq Hasan

چنئی، 18 دسمبر (یو این آئی) ہندستانی اوپنر لوکیش راہل (199) رنز بنا کر اپنی پہلی ڈبل سنچری کی کامیابی سے چوک گئے لیکن ان کے کیریئر کی بہترین اننگز کی بدولت میزبان ٹیم نے انگلینڈ کے خلاف آخری کرکٹ ٹیسٹ کے تیسرے دن اتوار کو پہلی اننگز میں دن کا کھیل ختم ہونے تک چار وکٹ پر 391 رن کا مضبوط اسکور بنا کر اپنی پوزیشن کو مضبوط کر لیا۔ہندستان نے دن کے اختتام تک پہلی اننگز میں 108 اوور میں چار وکٹ کے نقصان پر 391 رنز بنا لئے ہیں اور اب وہ انگلینڈ کے اسکور سے محض 86 رنز پیچھے ہے جبکہ اس کے چھ وکٹ باقی ہیں۔بلے باز کرو نانائر (71) اور مرلی وجے (17) ناٹ آ¶ٹ کریز پر ڈٹے ہوئے ہیں۔میچ کا تیسرا دن پوری طرح اوپنر راہل کے نام رہا جو چوٹ کے بعد ٹیم میں واپسی کر رہے ہیں۔ تاہم دن کے اختتام پر جب راہل اپنی ڈبل سنچری سے صرف ایک رن دور تھے تبھی عادل راشد نے انہیں جوس بٹلر کے ہاتھوں کیچ کراکر کیریئر کی اس بڑی کامیابی سے محروم کر دیا۔کل کے ناٹ آ¶ٹ بلے باز راہل نے اگرچہ 311 گیندوں کا سامنا کیا اور 16 چوکے اور تین چھکے لگا کر 199 رنز کی اننگز کھیلی جو ان کے ٹیسٹ کیریئر کی بہترین کارکردگی بھی ہے ۔راہل ہندستان کے دوسرے بلے باز ہیں جو 199 کے اسکور پر آ¶ٹ ہوئے ہیں۔ان سے پہلے سابق کپتان محمد اظھرالدین سال 1986 میں سری لنکا کے خلاف اپنی ڈبل سنچری سے ایک رن دور آ¶ٹ ہو گئے تھے ۔راہل کے علاوہ نو اور بلے باز ٹیسٹ کرکٹ میں اس اسکور پر آ¶ٹ ہو چکے ہیں۔24 سالہ راہل کی کیریئر کے 12 ویں ٹیسٹ میں یہ چوتھی سنچری بھی ہے ۔اس کے علاوہ انگلینڈ کے خلاف کسی ہندستانی اوپنر کی یہ دوسری بہترین کارکردگی ہے ۔اس معاملے میں سنیل گواسکر سب سے اوپر ہیں جنہوں نے سال 1979 میں اوول گرا¶نڈ پر انگلینڈ کے خلاف 221 رنز کی اننگز کھیلی تھی۔راہل کے علاوہ اوپننگ بلے باز پارتھیو پٹیل (71) اور کرونا نائر (ناٹ آ¶ٹ 71) نے بھی نصف سنچری اننگز کھیلی۔اس سے پہلے ہندستان نے اپنی پہلی اننگز کا آغاز کل کے 60 رن سے آگے بڑھاتے ہوئے کیا تھا اور اس وقت اس کے تمام وکٹ محفوظ تھے اور بلے باز راہل 30 اور پٹیل 28 رنز بنا کر کریز پر تھے ۔اس کے بعد دونوں بلے بازوں نے تیسرے دن بھی اننگز کی ٹھوس شروعات کی اور پہلے وکٹ کے لئے 152 رن جوڑے ۔تاہم لنچ سے پہلے پٹیل کو معین علی نے جوس بٹلر کے ہاتھوں کیچ کراکر اس شراکت کو توڑ دیا۔انگلینڈ کو لنچ تک صرف ایک وکٹ کی ہی کامیابی مل سکی جبکہ اس نے ہندستانی بلے بازوں کو دبا¶ میں ڈالنے کے لیے اپنے سات گیند بازوں کو میدان پر اتار دیا۔آٹھ سال بعد ٹیسٹ ٹیم میں کھیل رہے پارتھیو نے 112 گیندوں میں سات چوکے لگا کر 71 رنز بنائے جو ان کی ٹیسٹ میں چھٹی نصف سنچری ہے ۔اوپننگ بلے باز راہل نے پارتھیو کے ساتھ پہلے وکٹ کے لئے 41.5 اوور میں 152 رن کی سنچری شراکت کی اور اس کے بعد چوتھے وکٹ کے لئے نائر کے ساتھ 161 رن کی سنچری شراکت کر کے ہندوستان کو مضبوط پوزیشن میں پہنچا دیا۔نائر نے 136 گیندوں میں چھ چوکے لگا کر ناٹ آ¶ٹ 71 رنز بنائے ۔ہندستان کی پہلی اننگز میں تیسرے دن بلے بازوں نے کمال کا مظاہرہ کیا اور 331 رنز شامل کر ڈالے ۔لنچ تک صرف ایک وکٹ ہی حاصل کر سکی کپتان ایلیسٹیر کک کی انگلش ٹیم کو لنچ کے بعد جا کر ہندستان کے تین وکٹ حاصل ہوئے ۔پٹیل کے آ¶ٹ ہونے کے بعد میدان پر آئے چتیشور پجارا اس بار سستے میں پویلین لوٹ گئے ۔پجارا نے 29 گیندوں کی اننگز میں تین چوکے لگائے اور 16 رنز بنائے ۔لیکن وہ لنچ کے ٹھیک بعد بین اسٹوکس کی گیند پر کک کو کیچ دے بیٹھے اور انگلینڈ کو دن کی دوسری کامیابی ملی۔انگلینڈ کا اس وکٹ سے حوصلہ کافی بلند ہوا اور پھر اسے کچھ دیر بعد کپتان وراٹ کوہلی کا اہم وکٹ بھی جلد ہی مل گیا جو 60 ویں اوور میں اسٹورٹ براڈ کی گیند پر کیٹن جیننگ کو کیچ تھما بیٹھے ۔وراٹ نے 29 گیندوں میں ایک چوکا لگا کر 15 رنز بنائے ۔ہندوستان نے 211 کے اسکور پر تین وکٹ گنوائے ۔وراٹ کا وکٹ یقینا انگلینڈ کے لیے کافی اہم رہا لیکن دوسرے اینڈ پر راہل اور نائر ٹک کر رن بناتے رہے ۔دونوں نے سنچری شراکت کی لیکن پھر دن کا کھیل ختم ہونے سے کچھ دیر پہلے راہل جب اپنی ڈبل سنچری سے ایک قدم دور تھے اسپنر راشد نے راہل کو ایک بڑی کامیابی سے ایک رن کی دوری پر رہتے ہوئے آ¶ٹ کر دیا۔راشد کی سست آتی گیند پر رن [؟][؟]لینے کے چکر میں راہل شاٹ کھیل بیٹھے جو سیدھے بٹلر کے ہاتھوں میں تھما گئی۔راہل 199 پر آ¶ٹ ہونے پر جیسے یقین ہی نہیں کر پا رہے تھے اور اپنے ہاتھ سر پر رکھ کر حیرانی بھرے انداز میں کھڑے رہے ۔فیلڈنگ کے دوران کندھے میں چوٹ لگا بیٹھے باقاعدہ اوپنر مرلی وجے چھٹے نمبر پر بلے بازی کے لیے اترے اور انہوں نے دن کا کھیل مکمل ہونے تک 31 گیندوں میں تین چوکے لگا کر ناٹ آ¶ٹ 17 رنز بنائے ۔انہوں نے پانچویں وکٹ کے لیے نائر کے ساتھ 19 رن کی ناٹ آ¶ٹ ساجھے داری کی۔انگلینڈ کے لیے بولنگ کرنے اترے بریڈ نے 46 رن، معین علی نے 96 رنز، بین اسٹوکس نے 37 رن اور راشد نے 76 رنز دے کر ہندوستان کا ایک ایک وکٹ حاصل کیا۔اس کے علاوہ جیک بال کو 50 رن، لیام ڈاوسن کو 72 رنز اور جو روٹ کو 12 رنز دے کر کوئی کامیابی نہیں ملی۔

About the author

Tariq Hasan