اردو | हिन्दी | English
296 Views
Bihar News

ریزرویشن کو لے کر لالو نے رکھی ایسی شرط کہ تمام پارٹیاں ہو گئیں راضی

images
Written by Taasir Newspaper

تاثیر اردو ڈیلی پٹنہ

جولائ 30، 2016 طارق حسن

اپڈیٹید 9:20 IST

پٹنہ
ریزرویشن کو لے کر لالو نے رکھی ایسی شرط کہ
پٹنہ : بہار میں سرکاری اور نجی اداروں میں ہونے والی تقرریوں میں بہار کے لوگوں کو 80 فیصد ریزرویشن دئے جانے کی راشٹریہ جنتا دل کے صدر لالو پرساد کے مطالبے پر تمام جماعتوں کے رہنما متفقہ نظر آ رہے ہیں ۔ تقریبا تمام پارٹی ریاست کی ملازمتوں میں مقامی لوگوں کو ریزرویشن دیئے جانے کی وکالت کر رہے ہیں ۔ وزیر اعلی نتیش کمار بھی اس مسئلے کو کبھی ضروری بتا چکے ہیں ۔
وزیر اعلی نے جمعہ کو کہا کہ مقامیت کا مسئلہ آج کے تناظر سے تعلق رکھتا ہے ۔ بہار میں جو آئینی نظام ہے ، اس کے تحت ملک کے کسی حصے میں لوگ جا کر کام کر سکتے ہیں ، لیکن اب آہستہ آہستہ ایسی صورت آئی ہے کہ مقامیت کا مسئلہ زور پکڑ رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جھارکھنڈ میں جا کر میں نے مقامیت کے معاملہ کی حمایت کی ہے تو بہار میں اس قسم کا کوئی مسئلہ اٹھتا ہے ، تو اس سے مختلف رائے رکھنے کا کوئی سوال ہی نہیں ہے ۔ یہ ایک ایسا سوال ہے جس پر تبادلہ خیال کرکے فیصلہ لینا چاہئے

بہار میں اہم اپوزیشن پارٹی بھارتیہ جنتا پارٹی  کے لیڈر نند کشور یادو نے کہا کہ حکومت اگر اس کی تجویز لاتی ہے ، تو ان کی پارٹی مقامیت کی بنیاد پر ریزرویشن سے متعلق تجویز کی حمایت کرے گی ۔ یہ بہار کے مفاد میں ہے اور پارٹی اس کے حق میں ہے ۔ یہاں ہندوستانی عوام مورچہ کے سربراہ اور سابق وزیر اعلی جتن رام مانجھی نے بھی لالو پرساد کے مقامی لوگوں کو ریاست کی ملازمتوں میں 80 فیصد ریزرویشن کی حمایت کی ہے ۔

ریاست کے نائب وزیر اعلی تیجسوی یادو نے بھی کہا کہ بہار کے لوگوں کو روزگار کے لئے باہر نہ جانا پڑے ، تو یہ ضروری ہے کہ انہیں یہاں ریزرویشن ملے ۔ اس معاملے پر مها گٹھ بندھن کی اعلی قیادت فیصلہ کرے گی ۔ کانگریس کے سینئر لیڈر اور بہار کے لینڈ ریفارم وزیر ڈاکٹر مدن موہن جھا نے لالو پرساد کے اس بیان کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ بہار کے نوجوانوں کو اس سے فائدہ ملے گا ۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی اس تجویز کی حمایت کرے گی۔

About the author

Taasir Newspaper