اردو | हिन्दी | English
218 Views
Bihar News

سابق گورنرڈاکٹر اخلاق الرحمان قدوائی کا انتقال

A. R. KIDWAI
Written by Tariq Hasan

نئی دہلی، 24 اگست (یو این آئی) بہار اور مغربی بنگال کے سابق گورنر اخلاق الرحمان قدوائی کا آج یہاں ایسکورٹس اسپتال میں انتقال ہوگیا۔ وہ 96 برس کے تھے ۔ پسماندگان میں دو لڑکے اور چار لڑکیاں ہیں۔مسٹر قدوائی یکم جولائی 1920 کو اترپردیش کے ضلع بارہ بنکی کے بڑا گاؤں میں پیدا ہوئے تھے ۔ وہ دوبار 1979 سے 1985تک اور 1993 سے 1998 تک بہار کے اور 1998 سے 1999 تک مغربی بنگال اور 2004 سے 2009 تک ہریانہ کے گورنر رہے ۔مسٹر قدوائی نے جون 2007 میں راجستھان کے گورنر کے عہدہ سے محترمہ پرتبھا پاٹل کے استعفی کے بعد ریاست کے گورنرکے فرائض انجام دیئے اور 6 ستمبر 2007 تک جب ایس کے سنگھ کو گورنر بنایا گیا، اس عہدہ پر فائز رہے ۔وہ 2000 سے 2004 تک راجیہ سبھا کے رکن رہے وہ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے شعبہ کیمسٹری میں پروفیسر اور صدر شعبہ بھی رہ چکے تھے اور 1974 سے 1977 تک یونین پبلک سروس کمیشن (یو پی ایس سی) کے چیئرمین رہے ۔ وہ انسٹی ٹیوٹ آف مارکیٹنگ اینڈ منیجمنٹ نئی دہلی کے چیئرمین اور ووکیشنل ایجوکیشنل سوسائٹی فار وومن کے بھی صدر رہ چکے تھے ۔ عوامی زندگی میں ان کی گراں قدر خدمات کے اعتراف میں 2011 میں انہیں پدم وبھوشن سے نوازا گیا تھا۔ بہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمار نے ریاست کے سابق گورنر ڈاکٹر اخلاق الرحمن قدوئی کے انتقال پر گہرے صدمے کااظہار کیا ہے۔ وزیراعلیٰ نے اپنے تعزیتی پیغام میں کہا ہے کہ وہ ایک ممتاز ماہر تعلیم ،سماجی خدمت گار اور بڑے لیڈر تھے۔ ثقافتی شعبے میں بھی ان کا اہم تعاون رہا ہے۔ ان کے انتقال سے ناقابل تلافی نقصان ہوا ہے۔

About the author

Tariq Hasan