اردو | हिन्दी | English
223 Views
Politics

سدھو نے نئی پارٹی بنائی، کجریوال اور بادل خاندان پر جم کربرسے

sidhu
Written by Tariq Hasan

چنڈی گڑھ، 8 ؍ستمبر(آئی این ایس انڈیا )کرکٹر اور سابق ممبر پارلیمنٹ نوجوت سنگھ سدھو نے آج پنجاب میں نئے محاذ کی بنیاد رکھی اور ریاست میں اکالی ۔بھاجپا اتحاد اور کانگریس پر شدید حملہ کرنے کے ساتھ اروند کجریوال کی قیادت والی عام آدمی پارٹی کو جمہوریت کی آڑ میں افراتفری بتایا۔انہوں نے کہا کہ کجریوال صرف ان لوگوں کو پسند کرتے ہیں جو ان کی ہاں میں ہاں ملاتے ہیں۔پنجاب کی بھلائی کے لئے غیر سیاسی تنظیم ’’آواز ہند‘‘کو رسمی طور پر پیش کرتے ہوئے سدھو نے نامہ نگاروں سے کہا کہ ان کا مقصد جمہوریت کی طاقت کو عوام کے ہاتھوں میں سونپنا اور ریاست میں ایک خاندان کی حکمرانی کو ختم کرنا ہے۔بی جے پی کے سابق ایم پی سدھو نے جولائی میں راجیہ سبھا سے استعفی دے دیا تھا۔انہوں نے کہا کہ اگلے 15.20دن میں وہ مستقبل کی منصوبہ بندی کے ساتھ سامنے آئیں گے۔بادل خاندان پر براہ راست نشانہ لگاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سیاہ بادل نے پنجاب کو گھیر لیا ہے اور لوگ سورج کی روشنی دیکھنے کو بے چین ہیں۔انہوں نے کہا کہ لوگ اپنے لئے حکومت کا انتخاب کرتے ہیں، کسی ایک خاندان کو نہیں۔انہوں نے الزام لگایا کہ بادل نے پنجاب اور پارٹی کو اپنے خاندان کی جاگیربنا رکھا ہے۔سدھو نے دعوی کیا کہ اکالی اور کانگریس ایک ہی سکے کے دو پہلو ہیں جنہوں نے دوستانہ میچ کھیلا اور پنجاب کو برباد کیا،بہتر مستقبل کے لئے اس میں تبدیلی کی ضرورت ہے۔آپ میں شامل ہونے کے بارے میں قیاس آرائی پر پوزیشن واضح کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آپ کی قیادت ان کے پیچھے دو سالوں سے لگی تھی اور کئی طرح کی پیشکش کی گئی۔انہوں نے اس بارے میں کجریوال پر آدھا سچ بولنے کا الزام لگایا کیونکہ انہیں انتخابات نہیں لڑنے اور صرف تشہیر کرنے کو کہا گیا۔سدھو نے الزام لگایا کہ کجریوال اور ان کے لوگ گزشتہ دو سالوں سے مجھے آپ میں شامل کرنے کی کوشش کر رہے تھے۔انہوں نے میرے سامنے کئی پیشکش رکھی لیکن میں نے ان سے صرف میرا کردار واضح کرنے کو کہا،میں ان کا ارادہ اور مقصد جاننا چاہتا تھا۔انہوں نے نامہ نگاروں سے کہا کہ انہوں نے مجھے الیکشن نہیں لڑنے اور صرف تشہیر کرنے کو کہا لیکن انہوں نے کہا کہ میری بیوی الیکشن لڑ سکتی ہیں اور انہیں وزیر بنایا جائے گا،میں نے ان کا شکریہ ادا کیا،وہ مجھے سجاوٹ کی چیز بنانا چاہتے تھے، جس میں پہلے تھا۔آپ لیڈر پر نشانہ لگاتے ہوئے سدھو نے کہا کہ کجریوال کو ویسے لوگ پسند ہیں جو ان کی ہاں میں ہاں ملاتے ہیں ، جمہوریت میں اکڑ ناقابل قبول ہے۔انہوں نے کہا کہ کجریوال سمجھتے ہیں کہ صرف وہ ہی ایماندار ہیں اور دوسرا کوئی نہیں،یہ ان کا کاپی رائٹ ہے،وہ مانتے ہیں کہ دوسروں کو یہ کہنے کا حق نہیں ہے کہ وہ ایماندار ہیں،میں یہاں ان کے ساتھ بیٹھا ہوں جو پنجاب کی مدد کرنا چاہتے ہیں،میں پنجاب کے لئے زندگی قربان کرنے کو تیار ہوں۔

About the author

Tariq Hasan