اردو | हिन्दी | English
111 Views
Politics

مودی کے ایران دورے سے پڑوسی ممالک کے ساتھ تعلقات بہتر ہوں گے

Narendra-Modi
Written by Taasir Newspaper

نئی دہلی، 20 مئی (یو این آئی) وزیر اعظم نریندر مودی کے ایران دورے کے دوران چابہار بندرگاہ کے پہلے مرحلے کی تعمیر کا معاہدہ ہونے کے ساتھ ہندوستان۔ افغانستان۔ایران کے سہ فریقی ٹرانسپورٹ اور ٹرانزٹ معاہدے پر بھی دستخط کئے جائیں گے . ان معاہدوں سے ہندوستان کی ان پڑوسی ممالک کے ساتھ اسٹریٹجک صورتحال میں بڑی تبدیلی نظر آئے گی۔ایران کے صدر حسن روحانی کی دعوت پر مسٹر مودی 22 اور 23 مئی کو تہران جا رہے ہیں. وزیر اعظم کایہ دورہ بنیادی طور پر کنیکٹیوٹی اور انفراسٹرکچر، توانائی میں شراکت داری، دوطرفہ کاروبار میں اضافہ، امن و استحکام اور عوام کے درمیان رابطے کو فروغ دینے پر مرکوز ہے ۔مسٹر مودی کی 23 مئی کو ایرانی لیڈر آیت اللہ سید علی حسینی خمینی سے ملاقات ہوگی اور اسی دن رسمی استقبال کے بعد صدر ڈاکٹر روحانی کے ساتھ دو طرفہ سربراہی اجلاس ہو گا جس میں دونوں رہنما دوطرفہ تعلقات کے ساتھ ساتھ مشترکہ مفادات پر علاقائی صورتحال اور عالمی مسائل پر تبادلہ خیال کریں گے ۔ ایرانی صدر ہندوستانی رہنما کے لیے دوپہر کی دعوت کا بھی اہتمام کریں گے ۔وزارت خارجہ میں جوائنٹ سکریٹری (پاکستان، افغانستان، ایران) گوپال واگلے نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ چابہار۔زاہدان۔جارانج کوریڈور کے تعلق سے ہندوستان۔ افغانستان۔ایران کے سہ فریقی معاہدے سے علاقائی کنیکٹیوٹی کی صورتحال میں تبدیلی آئے گی۔

About the author

Taasir Newspaper