اردو | हिन्दी | English
171 Views
Bihar News

وکرم شیلا کومعیاری یونیورسٹی بنایا جائے: صدرجمہوریہ

parnub
Written by Tariq Hasan

بھاگلپور 3؍اپریل (منہاج عالم )وکرم شیلا یونیورسٹی قدیم یونیورسٹی تھی جہاں دور دراز کے علاوہ بیرونی ملک میں برازیل وملیشیا سے طلبا واساتذہ تعلیم لیتے ودیتے تھے۔اور ہندستان کی قدیم یونیورسٹیوں میں ایک مذکورہ باتیں صدر جمہوریہ عزت مآب پرنب مکھرجی اپنے خطاب عام میں کہی ۔اس زمانے میں تکشیلہ ،نالندہ ،و کرم شیلا آٹھویں صدی کے زمانے کی یونیورسٹی ہے ۔آج مجھے اس تاریخی جگہ کو خود معائنہ کرنے کا موقع فراہم ہوا ۔اور میں یہاں کے لوگوں کی مانگ کو مرکزی حکومت تک پہونچانے کی کوشش کرونگا۔اور یہاں کے عوام و نمائندہ گان کے مانگ پورا کر انے کی بھرپور کوشش کرونگا۔انہوں نے وکرم شیلا کو میوزیم کے طور پر رکھنے سے کام نہیں چلے گا بلکہ ضرورت ہے کہ اونچی سے اونچی یونیورسٹی بنانے کی جانب سبھی کو کارگر قدم اٹھانا چاہیئے۔اور مجھے خوشی ہے کہ یہاں کی خواہش مرکزی یونیورسٹی بنے جو ضروری بھی ہے۔پوری ہونی چاہیئے۔جبکہ لوک سبھا میں 2015الاؤنس کیا تھا اورفنڈ بھی چار پانچ کروڑ دیا گیا ہے۔تمام باتوں کو میں مرکزی حکومت تک پہونچا ؤنگا ۔اس موقع پر گڈا کے ممبر پارلیامنٹ کانت دوبے ۔راجیوپرتاپ روڑی مرکزی وزیر ، سابق ممبر پارلیامنت سید شہنواز حسین ،سبھی ہمارے زمانے سے ممبر پارلیامنٹ ہیں میں ان لوگوں کو جانتا ہوں ۔آخیر میں انہونے کہا کہ مجھے ہند ی بولنے کم آتی ہے اسلئے جو غلطی ہوئی تو اسے معاف کرنا ۔جبکہ صدر جمہوریہ نے پریس کلب آف ایسٹرن بہار کی جانب سے کتاب و کرم شیلا پر مبنی ماضی وحال پر مشتمل کتاب کا رسم اجراء کیا۔شیو شنکر سنگھ وپروفیسر رمن سنہا ،گوتم سرکار کے علاوہ راجیو سدھارتھ ۔ورند کمار ، انوج کمار، شیو لوچن آفاق اللہ آزاد ، کمار راجیش ، ابھیجیت وسواس ، رام پرکاش گپتا رسم اجراء کے بعد صحافیوں نے منچ پر کتاب تقسیم کیا۔جبکہ اتی چک بھوانی پور کے وکرم شیلابہار میں صدر جمہوریہ کاخیر مقدم اتر واہنی گنگا ساحل پر سے وکرم شیلا ٹورزم مقام پر خیر مقد م کیا ۔صدر جمہوریہ نے میوزیم کا بھی معائنہ کیا۔منچ سے سدا نند سنگھ رام ولاس پاسوان ،ممبر اسمبلی ، ممبر پارلیامنٹ ، نشی کانت دوبے سید شہنواز حسین مرکزی وزیر راجیو پرتاپ روڑی وغیر ہ نے خطاب کیا۔جبکہ جلسہ کی نظامت وجئے نے کی اور اس موقع پر راجد صدر تروپتی ناتھ کانگریس صدر سید شاہ علی سجاد موجود تھے۔جبکہ ایسٹرن پریس کلب آف بہار کے صدر راجویندر نے بھی خطاب کیا۔

About the author

Tariq Hasan