اردو | हिन्दी | English
232 Views
Entertainment

پاکستانی فنکاروں کو بھارت میں کام کرنے کا حق ہے، چیرمین بھارتی سنسربورڈ

617207-fawadkhanmahirakhanali-1475417526-958-640x480
Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network | Updated on 2 Oct 2016, 9:36 PM IST

ممبئی:  بھارتی سنسر بورڈ کے چیرمین پہلاج نہلانی بھی پاکستانی فنکاروں کی حمایت میں میدان میں کود پڑے ہیں جن کا کہنا ہے کہ پاکستانی فنکاروں کو بھارت میں کام کرنے کا پورا حق حاصل ہے۔

ہندو انتہا پسندوں اور پروڈیوسر ایسوسی ایشن کی جانب سے پاکستانی فنکاروں پر پابندی کے خلاف بھارتی فلم نگری سے ہی آوازیں بلند ہونا شروع ہوگئی ہیں جب کہ سلمان خان ، سیف علی خان، اوم پوری، مہیش بھٹ، کرن جوہر سمیت متعدد اسٹارز پاکستانی فنکاروں کے حق میں بیان دے چکے ہیں لیکن اب مودی سرکار کے قریبی سمجھے جانے والے بھارتی سنسر بورڈ کے چیرمین پہلاج نہلانی بھی پاکستانی فنکاروں کی حمایت میں میدان میں آگئے ہیں۔

mahesh-bhatt

 سنسر بورڈ کے چیرمین پہلاج نہلانی کا کہنا ہے کہ انتہا پسند پاکستانی فنکاروں پر پابندی کا مطالبہ کس حیثیت سے  کر رہے ہیں اور پروڈیوسر ایسوسی ایشن میں شامل کوئی بھی رکن کسی پاکستانی اداکار کے ساتھ کام نہیں کررہا جس سے ان کا نقصان ہو تاہم پاکستانی فنکاروں پر پابندی سے کرن جوہر اور رتیش سدھوانی کو نقصان ہوا ہے جنہوں نے پاکستانی اداکاروں کے ساتھ اپنی فلموں کی شوٹنگ مکمل کرلی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جن پاکستانی اداکاروں نے فلموں میں کام کیا ہے انہیں کسی صورت کام کرنے سے نہیں روکنا چاہیئے کیوں کہ بھارت میں ان کو سب کی طرح کام کرنے کا حق حاصل ہے لہذا فنکاروں کو ہدف بنانے سے گریز کیا جانا چاہیئے۔

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں ہندو انتہا پسند تنظیموں کی جانب سے پاکستانی فنکاروں کو 48 گھنٹے میں بھارت چھوڑنے کا الٹی میٹم دیا گیا تھا جس کے بعد کئی اسٹارز بھارت چھوڑ چکے ہیں۔

About the author

Taasir Newspaper