اردو | हिन्दी | English
137 Views
Indian

پاکستان کو جھٹکا،سارک کانفرنس ملتوی

pakistan-ko-jhatka
Written by Tariq Hasan

نئی دہلی 28 ستمبر (ایجنسی): پاکستان میں آئندہ 9 اور 10 نومبر کو منعقد ہونے والی سارک چوٹی کانفرنس بھارت سمیت 4 ممبر ملکوں کے انکار کے بعد ملتوی کردی گئی ہے۔ ذرائع کے مطابق بھارت کے بعد بنگلہ دیش، بھوٹان اور افغانستان نے بھی سارک کانفرنس میں شرکت سے انکار کردیاتھا اس لئے سارک کے موجودہ چیئرمین نیپال نے کانفرنس کو ملتوی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ سارک کے آئین کے مطابق کوئی بھی ممبر ملک اگر کانفرنس میں حصہ نہیں لیتا ہے تو یا تو کانفرنس رد کردی جاتی ہے یا تو اس کی تاریخ آگے بڑھادی جاتی ہے۔ اس سے قبل سری لنکا نے بھی کہا تھا کہ اگر بھارت سارک کانفرنس میں حصہ نہیں لے رہا ہے تو پھر اس کانفرنس کا کوئی مطلب ہی نہیں رہ جاتا ہے۔ سارک کانفرنس کے التوا کو سفارتی محاذ پر بھارت کی کامیابی اور پاکستان کی شکست کے طور پر دیکھا جارہا ہے۔ ہندوستانی وزارت خارجہ نے کل ہی کانفرنس میں حصہ نہ لینے کے فیصلے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ خطہ میں سرحد پار سے بڑھتے ہوئے دہشت گردانہ حملوں اور ایک ملک کے ذریعہ رکن ممالک کے داخلی امور میں بڑھتی ہوئی دخل اندازی کی وجہ سے سارک کانفرنس کے کامیاب انعقاد کیلئے مناسب ماحول نہیں ہے ۔افغانستان نے اپنے خط میں کہا کہ ”تشدد کے بڑھتے ہوئے واقعات کی وجہ سے افغانستان دہشت گردی کا شکار ہورہا ہے ۔ افغانستان کے صدر محمد اشرف غنی کمانڈر ان چیف کی حیثیت سے اپنی ذمہ داریوں کے تئیں پرعزم ہیں اور وہ کانفرنس میں حصہ نہیں لیں گے ۔بنگلہ دیش حکومت نے خط میں کہا کہ ایک ملک کی طرف سے بنگلہ دیش کے داخلی امور میں بڑھتی ہوئی مداخلت سے ایسا ماحول بن گیا ہے جو اسلام آباد میں 19 ویں سارک کانفرنس کے انعقاد کے حق میں نہیں ہے ۔بھوٹان حکومت نے بھی یہی موقف اختیار کرتے ہوئے خط میں کہا ہے کہ بھوٹان سارک کے عمل اور علاقائی تعاون کو مستحکم کرنے کیلئے پوری طرح پرعزم ہے لیکن خطہ میں حال ہی میں بڑھتے ہوئے دہشت گردانہ واقعات باعث تشویش ہیں اور سارک کانفرنس کے کامیاب انعقاد کیلئے موافق ماحول نہیں ہے ۔ خط میں کہا گیا ہے کہ دہشت گردی کی وجہ سے علاقائی امن و سلامتی کی خراب ہوتی صورتحال پر سارک کے کچھ رکن ممالک نے تشویش ظاہر کی ہے اور انہیں ملکوں کی طرح ہماری بھی یہی تشویش ہے اس لئے موجودہ صورتحال میں سارک کانفرنس میں حصہ لینے سے ہم قاصر ہیں ۔

About the author

Tariq Hasan