اردو | हिन्दी | English
150 Views
Politics

ہائی کورٹ نے ازدواجی تنازعہ میں دائر اختیار سے باہر جانے پر این سی ڈ بلیو کو پھٹکار لگائی

1
Written by Taasir Newspaper

نئی دہلی، 3 ؍اپریل(آسیہ فاطمہ ) دہلی ہائی کورٹ نے ایک ازدواجی تنازعہ میں قانون میں نہ دئیے گئے طریقہ کارکواپنانے اور اپنے دائرہ اختیار سے باہر جانے پر قومی خواتین کمیشن(این سی ڈ بلیو)کوپھٹکار لگائی ہے۔اس معاملے کی وجہ سے ایک شخص کو اپنی ملازمت گنوانی پڑی ہے۔عدالت نے این سی ڈبلیو پر 30ہزار روپے کا جرمانہ بھی عائد کیاہے ۔معاملہ کے مطابق ایک خاتون نے اپنے شوہر کے خلاف این سی ڈ بلیو میں شکایت کی تھی۔اس شکایت کی بنیاد پر این سی ڈ بلیو نے سنگاپور ہائی کمیشن کو ہدایت دیتے ہوئے خط لکھاکہ وہ شکایت کنندہ کے شوہر کے آجر کو مشورہ دے کہ وہ اسے ہندوستان کے باہر تعینات نہ کرے۔جسٹس راجیو سہائے اینڈ لا نے این سی ڈ بلیو کی طرف سے دی گئی اس ہدایت کو غیر قانونی اوردائر ہ اختیار سے باہر قرار دیا۔ مذکورہ شخص سنگاپور میں ایک جاپانی سمندری ٹرانسپورٹ کمپنی میں میرین انجینئر کے طور پر مامور تھا اور ہدایات کے نتیجے میں اس کی ملازمت چلی گئی۔اس پر اس شخص نے ہدایت کو مسترد کرنے کے لیے ہائی کورٹ میں عرضی دائر کی اور این سی ڈ بلیو اور اپنی بیوی سے مشترکہ طور پر اور الگ الگ 7549958روپئے کے معاوضے کا مطالبہ کیا۔عدالت نے اس شخص کو معاوضے سے انکار کردیا کیونکہ یہ ازدواجی تنازعہ ہے۔اس نے حالانکہ متاثرہ شخص کی درخواست کا تصفیہ کرتے ہوئے کہا کہ کیونکہ این سی ڈ بلیو نے اپنے دائرہ اختیار سے باہر جاکر کام کیاہے ، اس لئے عدالت کو لگتا ہے کہ درخواست گزار کو اس درخواست کے خرچ کے طورپر30ہزارروپے ادا کیا جائے جو این سی ڈ بلیو کی طرف سے چار ہفتے کے اندر دئیے جائیں گے ۔

About the author

Taasir Newspaper

Leave a Comment