اردو | हिन्दी | English
255 Views
Politics

کشمیر میں فوجی کالونیوں کے قیام کا کوئی منصوبہ حکومت کے زیر غور نہیں:محبوبہ مفتی

Mehbooba-Mufti-Sayeed
Written by Taasir Newspaper

سری نگر ، 28مئی (یو ا ین آئی) جموں وکشمیر کی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے وادی کشمیر میں سینک کالونیوں کے قیام پر ہورہی تمام قیاس آرائیوں کو ختم کرتے ہوئے کہا کہ ایسا کوئی منصوبہ ریاستی حکومت کے زیر غور نہیں ہے ۔ ہفتہ کو یہاں قانون ساز اسمبلی میں گورنر کے خطے پر شکریہ کی تحریک پر جاری بحث میں حصہ لیتے ہوئے محترمہ محبوبہ نے کہا ‘ہم نے واضح کردیا ہے کہ ایسا کوئی منصوبہ نہیں ہے ۔ حقیقت تو یہ ہے کہ ہمارے پاس یہاں وادی کشمیر میں ایسی کسی کالونی کے قیام کے لئے کوئی اراضی ہی نہیں ہے ‘۔ تاہم انہوں نے کہا کہ اگر وادی میں ایسی کسی کالونی کا قیام عمل میں لایا گیا تو وہ صرف اور صرف ریاست سے تعلق رکھنے والے فوجیوں کے لئے ہوگی’۔ انہوں نے کہا کہ ریاست میں سینک بورڈ کا قیام 1965 ء میں عمل میں آیا اور بعد میں مرحوم شیخ محمد عبداللہ نے بھی بحیثیت وزیر اعلیٰ بورڈ کی میٹنگوں میں شرکت کی۔ محترمہ محبوبہ نے کہا کہ اس بورڈ کا قیام ریاست کے سابق فوجیوں کی مدد کے لئے عمل میں لایا گیا تھا اور بورڈ کے قوانین کے مطابق صرف ریاستی باشندوں (ریاست سے تعلق رکھنے والے فوجیوں) کو ہی ایسی کسی کالونی میں مکان یا فلیٹ فراہم کیا جاسکتا ہے ۔انہوں نے سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ سے مخاطب ہوکر کہا ‘آپ نے بھی 2012 ء، 2013 ء اور 2014 ء میں بحیثیت وزیر اعلیٰ سینک بورڈ کی متعدد میٹنگوں میں شرکت کی اور وادی میں سینک کالونی کے قیام کے لئے اراضی کی نشاندہی کا حکم دے دیا’۔ انہوں نے کہا کہ گورنر نے بھی بورڈ کی میٹنگ کی اور اراضی کی نشاندہی کا حکم دیا۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ علیل ہونے کی وجہ سے وہ بورڈ کی حال ہی میں وزیر اعلیٰ کی صدارت میں منعقد ہوئی میٹنگ میں شرکت نہ کرسکیں جنہوں نے بعد میں اراضی کی نشاندہی کا حکم دیا۔ محبوبہ مفتی نے کہا ‘ہم نے واضح کردیا ہے کہ ایسی کالونی کے قیام کے لئے ہمارے پاس سری نگر، بڈگام اور پلوامہ اضلاع میں کوئی اراضی نہیں ہے ‘۔ انہوں نے کہا ‘ہم نے سینک کالونی کے قیام کے لئے کسی اراضی کی نشاندہی نہیں کی ہے اور اس پر پیدا کردہ تنازعہ کو اب ختم کیا جانا چاہیے ‘۔ انہوں نے عمر عبداللہ پر تنقید کرتے ہوئے کہا ‘آپ بورڈ کی میٹنگوں میں شرکت کرچکے ہیں اور بخوبی جانتے ہیں کہ کسی بھی غیرریاستی باشندے کو سینک کالونی میں بسایا نہیں جاسکتا ہے ۔

About the author

Taasir Newspaper