سیاست

عظیم اتحاد حکومت کی کارکردگی کا رپورٹ کارڈآن لائن جاری

پٹنہ 21 نومبر (اسٹاف رپورٹر): حکومت بہار نے اپنے ایک سال کے کام کا لیکھا جوکھا کا رپورٹ کارڈ جاری کردیا ہے۔ رپورٹ کارڈ کے مطابق صوبے میں قانون کی بالادستی قائم رہی ہے اور شراب بندی سے حالات بہتر ہوئے ہیں۔ ریاست ہمہ جہت ترقی کی راہ پر لگاتار گامزن ہے۔ رپورٹ کارڈمیں حکومت ریاست میں قانون وانتظام کی بہتری کے ساتھ ساتھ تعلیم ، صحت ، سڑک ، بجلی ، پانی ،شفافیت ، زراعت ، آبپاشی اورترقیات کے دیگر تمام شعبوں میں بہتر کارکردگی کی تفصیل سے وضاحت کی گئی ہے۔ وزیراعلیٰ کے سات عزائم کو زمین پر اتارنے کاکام تیزی کے ساتھ جاری ہے۔ عوامی شکایت قانون کے تحت اب تک 60 ہزار معاملوں کو نپٹایا جاچکا ہے۔ ریاست لگاتار ترقی کی راہ پر گامزن ہے۔ مالی سال 2005-06 کے 22 ہزار 500 کروڑ کے بجٹ کی بنسبت آج ریاست کا بجٹ بڑھ کر 144000 کروڑ تک پہنچ چکا ہے۔ رپورٹ کارڈ کے مطابق ”آرتھک حل یواﺅں کو بل“ عزم کے تحت بہار اسٹوڈنٹس کریڈٹ کارڈ منصوبہ ،وزیر اعلیٰ سیلف ہیلپ بھتہ منصوبہ اور اسکلڈ یوتھ پروگرام 2 اکتوبر 2016 سے شروع کیا جاچکا ہے۔ مذکورہ تینوں منصوبوں کے عمل درآمد اور آن لائن درخواستوں کا رجسٹریشن ، متعلقہ کاغذات کی تصدیق اور آگے کی کارروائی کیلئے ہرایک ضلع میں سبھی جدید ترین سہولیات اور آلات سے آراستہ ضلع رجسٹریشن اور صلاح مراکز قائم کئے گئے ہیں۔ ضلع رجسٹریشن اور صلاح مراکز بھی 2 اکتوبر 2016 سے کام کرنے لگے ہیں۔ اب تک ایک لاکھ 50 ہزار سے زائد نوجوانوں نے آن لائن درخواستیں دی ہیں۔ بہار اسٹارٹ اپ پالیسی 2016 کے حوالہ سے رپورٹ کارڈ میں بتایا گیا ہے کہ یہ 7 ستمبر 2016 سے لاگو ہے۔ اس پالیسی کے تحت 500 کروڑ روپئے کے وینچر کیپٹل کا انتظام کیا گیا ہے۔ سبھی سرکاری یونیورسٹیوں اور کالجوں میں مفت وائی فائی کی سہولت کے سلسلے میں رپورٹ کارڈ میں کہا گیا ہے کہ یہ سہولت فروری 2017 تک مہیا کرادی جائے گی۔ وزیرا علیٰ کے عزم ’محفوظ روزگار خواتین کا اختیار‘ کے سلسلے میں رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اس عزم کے تحت ریاست کے سبھی سروس کیڈروں میں سیدھی تقرری میں خواتین کیلئے 35 فیصد …. ریزرویشن 20 جنوری سے لاگو کردیا گیا ہے۔ ”ہر گھر بجلی لگاتار“ عزم کاآغاز 15 نومبر 2016 سے ہوچکا ہے۔ آئندہ 2 برسوں میں وزیر اعلیٰ بجلی کنکشن عزم منصوبہ کے تحت اپنے وسائل سے دیہی علاقوں میں سبھی گھروں تک میٹر کے ساتھ بجلی کنکشن فراہم کرنے کا نشانہ ہے۔ ”ہر گھر نل کا جل “اور” سوچالیہ نرمان، گھر کا سمان“ عزم کو زمین پر اتارنے کی شروعات 27 ستمبر 2016 کو ہوچکی ہے۔ رپورٹ کارڈ میں کہا گیا ہے کہ ہر گھر نل کا جل عزم کو پورا کرنے کیلئے 4 منصوبوں کو ایک ساتھ شروع کیا گیا ہے۔ مثلاََ وزیراعلیٰ دیہی پینے کا پانی عزم منصوبہ ، وزیراعلیٰ دیہی پینے کا پانی (متاثرہ کوالیٹی علاقہ ) عزم منصوبہ ، وزیراعلیٰ دیہی پینے کا پانی (غیر متاثرہ کوالیٹی علاقہ) عزم منصوبہ اور وزیر اعلیٰ شہری پینے کا پانی عزم منصوبہ ۔ اسی طرح’ سوچالیہ نرمان ، گھر کا سمان ‘عزم کو پورا کرنے کیلئے دو منصوبے شروع کئے گئے ہیں۔ پہلا لوہیا سوچھ بہار مہم اور بیت الخلا تعمیر (شہری علاقہ) منصوبہ ۔ رپورٹ کارڈ میں ’گھر تک پکی گلی ۔ نالیاں“ عزم کے سلسلے میں کہا گیا ہے کہ دیہی انفراسٹرکچر کو مستحکم کرنے کی سمت میں 28 اکتوبر 2016 سے کارروائی شروع کردی گئی ہے۔ رپورٹ کارڈ میں بدعنوانی کے خلاف حکومت کی ”زیرو ٹالرنس “کا ذکر کرتے ہوئے بتایا گیا ہے کہ اس پالیسی کو مضبوطی کے ساتھ لاگو کیا گیا ہے۔ گذشتہ ایک سال میں بہار اسپیشل عدالت ایکٹ ، 2009 کے تحت کل تین معاملوں میں 1.96 کروڑ روپئے کی مالیت حکومت نے ضبط کی ہے۔ اب تک کل 8 معاملوں میں مالیت کی ضبطی کی کارروائی کی گئی ہے۔ ویجلنس کے ذریعہ ٹریپ سے متعلق کی گئی کارروائی کے سلسلے میں رپورٹ کارڈ میں بتایا گیا ہے کہ 93 معاملوں ، عہدے کے غلط استعمال سے متعلق 25 اور غیر متناسب دھن جمع کرنے سے متعلق 12 معاملوں سمیت کل 130 معاملے درج کئے گئے ہیں۔ جن میں 106سرکاری وغیر سرکاری ملازمین وافسران گرفتار کئے گئے ہیں۔ اکانامیکل کرائم یونٹ میں سائبر کی صلاحیت میں اضافہ کیلئے ہیڈکوارٹر اور ضلع سطح پر سائبر کرائم اینڈ سوشل میڈیا لیب کی تشکیل کی گئی ہے۔ پرائمری وسیکنڈری سطح کے تعلیمی نظام کے حوالہ سے رپورٹ کارڈ میں کہا گیا ہے کہ 6-14 عمر زمرہ کے اسکول سے باہر کے بچوں کو اسکول میں لانے میں ریاستی حکومت کی جانب سے موثر کارروائی کی گئی ہے۔ فی الحال لگ بھگ ایک فیصد بچے ہی اسکول سے باہر رہ گئے ہیں۔ تعلیمی سال 2015-16 کے تحت ریاستی حکومت کے پرائمری اسکولوں میں داخلہ لینے والے کلاس ایک سے 8 تک کے لگ بھگ 15408356 (75 فیصد) بچوں کو مفت نصابی کتابیں دستیاب کرائی گئی ہیں۔ جبکہ درجہ ایک سے 8 تک کے سبھی طلبا وطالبات کو مفت پوشاک دستیاب کرایا گیا ہے۔ ساتھ ہی جنرل کیٹگری کو چھوڑ کر سبھی طلبا وطالبات کو وظیفہ بھی دیا گیا ہے۔ اس طرح سے رپورٹ کارڈ میں بہار کو ہر محاذ پر کامیابی کی راہ پر گامزن دکھایا گیا ہے۔ رپورٹ کارڈ ہندی، اردو اور انگریزی تینوں زبانوں میں جاری کیا گیا ہے۔ واضح ہوکہ اس رپورٹ کارڈ کو بروز اتوار وزیر اعلیٰ نتیش کمار کے ہاتھوں جاری کیا جانا تھا لیکن کان پور میں ٹرین حادثہ کے بعد حکومت نے اس پروگرام کو ملتوی کردیا گیا تھا۔ آج یہ رپورٹ کارڈ ریاستی حکومت نے محکمہ تعلقات عامہ کی ویب سائٹ پر جاری کیا ہے۔ دوسری جانب اپوزیشن نے بغیر پریس کانفرنس کے رپورٹ کارڈ ویب سائٹ پر جاری کردینے کی کارروائی کی سخت مخالفت کی ہے۔ بھاجپا لیڈر نند کشور یادو نے الزام لگایا ہے کہ وزیراعلیٰ نہیں چاہتے تھے کہ میڈیا کے ذریعہ حکومت کے کام کاج پر سوال کئے جائیں۔ اپوزیشن کا الزام ہے کہ رپورٹ کارڈ میں ترقی کا بکھان ہے لیکن اپنی ناکامیوں پر حکومت نے چپی سادھ لی ہے۔

About the author

Dr.Mohammad Gauhar

Chief Editor - Taasir