سیاست

نوٹ بندی کے خلاف کانگریس کاریاست گیر احتجاجی مارچ

Written by Dr.Mohammad Gauhar

پٹنہ، 23 نومبر (یو این آئی) مرکزی حکومت کے 500 اور 1000 روپے کے نوٹ کو لین دین سے باہر کرنے کے فیصلے کی مخالفت میں آج بہار پردیش کانگریس کمیٹی نے دارالحکومت پٹنہ میں احتجاجی مارچ نکالا۔پٹنہ کے تاریخی گاندھی میدان واقع کارگل چوک سے جے پی گولمبر تک چلنے والے اس احتجاجی مارچ میں کانگریس پارٹی کے وزیر، رکن اسمبلی اور کارکن شامل تھے ۔ اس دوران کارکنوں نے وزیر اعظم نریندر مودی کا پتلا بھی جلایا۔ احتجاجی مارچ کی قیادت پردیش کانگریس کے صدر اور ریاست کے وزیر تعلیم اشوک چودھری نے کی۔مسٹر چودھری نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے نوٹ کی منسوخی کا اعلان بغیر کسی سابقہ تیاری کے کیا جس سے ملک کے زیادہ تر عوام پریشان اور مایوس ہیں۔ پورے ملک میں آج افراتفری کی صورت حال پیدا ہو گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مزدور، کسان، تاجر، چھوٹے خوردہ دکاندار اور عام انسان اپنی ایمانداری سے کمائی گئی رقم کو نکالنے کے لئے دن بھر بینکوں اور اے ٹی ایم میں لائن لگا کر کھڑے ہیں۔ اس کی وجہ سے بہت سے لوگوں کی موت ہو گئی، کئی شادیاں ٹوٹ گئیں، دکانیں بند ہونے کے دہانے پر پہنچ گئیں، کتنے گھروں میں چولہا نہیں جل رہا ہے ۔اس موقع پر پردیش کانگریس کمیٹی کے ترجمان ونود کمار سنگھ یادو نے بتایا کہ نوٹ کی منسوخی کے خلاف احتجاجی مارچ کا یہ پروگرام آج تمام ضلع کواٹر میں ضلع کانگریس کمیٹی کے صدر کی قیادت میں نکالا گیا جس میں کانگریس کے رکن اسمبلی اور اہم رہنما شامل ہوئے ۔

About the author

Dr.Mohammad Gauhar

Chief Editor - Taasir