کھیل

پیٹرسن نے انگلینڈ کو اشون سے ہوشیار رہنے کا مشورہ دیا

Written by Dr.Mohammad Gauhar

لندن، 03 نومبر (یواین آئی) انگلینڈ کے سابق بلے باز کیون پیٹرسن نے ہندوستان کے دورے پر انگلش بلے بازوں کے لئے آف اسپنر روی چندرن اشون کو سب سے بڑا چیلنج قرار دیتے ہوئے انہیں اشون سے محتاط رہنے کا مشورہ دیا ہے ۔ہندوستان اور انگلینڈ کے درمیان پانچ ٹیسٹ میچوں کی سیریز کا پہلا میچ نو نومبر سے راجکوٹ میں شروع ہو رہا ہے ۔ہندوستان نے اپنی 15 رکنی ٹیم میں تین گیندبازوں روی چندرن اشون، امت مشرا اور آل راؤنڈر رویندر جڈیجہ کو شامل کیا ہے ۔ انگلینڈ کی ٹیم جب پچھلی بار 2012 میں ہندوستان کے دورے پر آئی تھی اس وقت اشون نے چار میچوں میں صرف 14 وکٹ ہی لئے تھے . لیکن اس کے بعد سے اشون کے کھیل میں مزید بہتری دیکھنے کو ملی ہے ۔ پیٹرسن نے کہا، “اشون ایک بہترین گیندباز ہیں۔ ان کے پاس ایسی تکنیک ہے جو ہمیشہ بلے بازوں کو پریشانی میں ڈالتی ہے ۔وہ ہمیشہ جارحانہ ہوکر کرکٹ کھیلتے ہیں اور بلے بازوں کو پریشان کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔”اشون ہندوستان میں کھیلے گئے 22 ٹیسٹ میچوں میں اب تک 153 وکٹ لے چکے ہیں۔ سال 2011 کے بعد سے گھریلو سر زمین پر ہندوستان کی ہر جیت میں اشون کا اہم کردار رہا ہے ۔ ہندوستان نے حال ہی میں نیوزی لینڈ کو ٹیسٹ سیریز میں تین ۔صفر سے کلین سویپ کیا ہے اور اشون 27 وکٹ لے کر اس سیریز میں مین آف دی سیریز رہے ہیں۔ وہ سیریز میں اپنی شاندار کارکردگی کی بدولت پھر سے دنیا کے نمبر ایک ٹیسٹ گیندباز ہیں۔سابق بلے باز نے کہا، “اشون کا دوسرا انگلش بلے بازوں کو پریشانی میں ڈال سکتا ہے ۔ جب میں نے ان کے خلاف بلے بازی کی تھی تو میں دوسرا کھیلنے کے قابل تھا. لیکن اب کے بلے بازوں کو ان کا دوسرا کھیل میں دقت ہو سکتی ہے ۔ ہندوستان میں اسپنروں کی گیند زیادہ تر نیچے ہی رہتی ہے جو بلے بازوں کو سمجھ میں نہیں آتی لیکن یہ سب کرکٹ کا حصہ ہے اور اگر آپ ہندوستان میں کھیلتے ہیں تو اس چیلنج کے لئے آپ کو تیار رہنا ہوگا۔ “پیٹرسن نے ہندوستان میں خود کی بلے بازی کے سلسلے میں کہا، ” ہندوستان میں باؤنڈری آسانی سے نہیں ملتی ہے ۔ اس لئے آپ کو اس اسٹرائیک روٹیٹ کرتے رہنا ہوگا ۔ جب میں بلے بازی کرتا تھا تو میں نے بھی ایسا ہی کیا تھا۔ میں نے ہندوستان میں اپنے کھیل کا پورا لطف اٹھایا اور وہاں زیادہ رن بنائے ہیں۔ “انگلینڈ کی ٹیم جب پچھلی بار ہندوستان دورے پر آئی تھی تو انہوں نے دو ۔ایک سے سیریز جیتی تھی۔اس سیریز میں پیٹرسن نے 338 رن بنائے تھے ۔انہوں نے انگلینڈ کو اشون کے علاوہ اسٹار بلے باز وراٹ کوہلی سے بھی ہوشیار رہنے کا مشورہ دیا۔36 سالہ پیٹرسن نے کہا، “کوہلی اس وقت شاندار فارم میں ہیں۔ ان کے علاوہ ہمارے پاس جو روٹ بھی ہیں جو اچھی فارم میں کھیل رہے ہیں لیکن روٹ کا کوہلی سے موازنہ کرنا درست نہیں ہوگا ۔ کوہلی ہمیشہ جارحانہ کرکٹ کھیلنا پسند کرتے ہیں۔ انھوں نے اپنی ٹیم کے لئے اب تک کافی رن بنائے ہیں۔

About the author

Dr.Mohammad Gauhar

Chief Editor - Taasir