اردو | हिन्दी | English
436 Views
Sports

وجے اور وراٹ نے دلائی بھارت کو سبقت

Indian cricket captain Virat Kohli, left, greets Murali Vijay on the third day of the fourth cricket test match between India and England in Mumbai, India, Saturday, Dec. 10, 2016. (AP Photo/Rafiq Maqbool)
Written by Tariq Hasan

ممبئی، 10 دسمبر (یواین آئی) سلامی بلے باز مرلی وجے (136) اور کپتان وراٹ کوہلی (ناٹ آوٹ 147) کی شاندار سنچریوں سے ہندوستان نے انگلینڈ کے خلاف چوتھے ٹیسٹ کے تیسرے دن ہفتہ کو سات وکٹ پر 451 بنا کر اپنی پوزیشن مضبوط کر لی۔ ہندوستان کے پاس 51 رن کی برتری ہو چکی ہے اور اس کے تین وکٹ ابھی محفوظ ہیں۔ وجے نے 282 گیندوں کی اپنی اننگز میں 10 چوکے اور تین چھکے لگائے وہیں وراٹ نے 241 گیندوں پر ناٹ آ¶ٹ 147 رن میں 17 چوکے لگائے ۔ وجے نے سیریز کی اپنی دوسری اور کل آٹھویں سنچری بنائی جبکہ وراٹ نے سیریز کی اپنی دوسری اور اوورآل اپنی 15 ویں سنچری بنائی۔وجے اور وراٹ نے تیسرے وکٹ کے لئے 35.2 اوور میں 116 رن کی ساجھے داری کرکے ہندوستان کو مضبوط پوزیشن میں پہنچا یا۔ وجے نے اس سے پہلے چتیشور پجارا (47) کے ساتھ دوسرے وکٹ کے لئے 47 رن جوڑے ۔ وراٹ نے آل را¶نڈر رویندر جڈیجہ (25) کے ساتھ ساتویں وکٹ کے لیے 57 رن اور جینت یادو (ناٹ آوٹ 30) کے ساتھ آٹھویں وکٹ کے لیے 87 رن کی ناٹ آوٹ شراکت کرکے ہندوستان کو فیصلہ کن برتری دلا ئی ۔دن کے اختتام پر وراٹ 147 رن بنا کر مورچہ سنبھالے ہوئے ہیں اور 150 رن بنانے سے محض تین رنز دور ہیں۔ وراٹ نے اپنی اننگز کے دوران ٹیسٹ کرکٹ میں 4000 رن مکمل کر لیے اور اس سال 1000 رن پورے کرنے کی کامیابی بھی اپنے نام کر لی۔ وراٹ کے 2016 میں 1112 رنز ہو چکے ہیں،۔اپنے کپتان کے ساتھ دوسرے اینڈ پر جینت یادو 30 رن بناکر ناٹ آ¶ٹ ہیں۔جینت نے 86 گیندوں کی اپنی ذمہ دارانہ اننگز میں تین چوکے لگائے ۔ وراٹ اور جینت کی شراکت نے ہی ہندوستان کو سات وکٹ پر 364 رن کے اسکور سے دن کے اختتام تک 451 رن پر پہنچایا۔ ہندوستان اب چوتھے دن اپنی برتری کو اور مضبوط کرنے کی کوشش کرے گا۔
364 رنز کے اسکور پر رویندر جڈیجہ کے آ¶ٹ ہونے کے بعد کریز پر آئے جینت نے وراٹ کے ساتھ جم کر کھیلتے ہوئے ٹیم کو پہلے برابری دلائی اور پھر 51 رن کی اہم برتری دلائی ۔مرلی اور وراٹ کے علاوہ چتیشور پجارا (47) تیسرے بہترین اسکورر ہیں۔ تاہم وہ تین رن سے اپنی نصف سنچری سے چوک گئے ۔ ہندوستان نے صبح ایک وکٹ پر 146 رن سے آگے کھیلنا شروع کیا۔وجے 70 اور پجارا 45 رن پر ناٹ آ¶ٹ تھے ۔ پجارا اپنے اسکور میں کوئی اضافہ کئے بغیر جیک بال کی گیند پر بولڈ ہو گئے ۔ پجارا نے 104 گیندوں میں چھ چوکے لگائے ۔ اس کے بعد میدان پر اترے وراٹ اور وجے نے مورچہ سنبھالتے ہوئے لنچ تک اسکور دو وکٹ پر 247 پہنچایا۔ وجے نے اپنی سنچری 231 گیندوں پر مکمل کی۔ لنچ کے وقت وجے 124 اور وراٹ 44 رن پر پہنچ گئے تھے ۔ہندوستان کو تیسرا جھٹکا لنچ کے بعد لگا جب لیگ اسپنر عادل راشد نے وجے کو اپنی ہی گیند پر کیچ آوٹ کیا۔ وجے کا وکٹ 262 کے اسکور پر گرا۔کر ن نائر 13 رن بنانے کے بعد آف اسپنر معین علی کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہو گئے ۔ نائر کو امپائر نے ناٹ آوٹ قرار دیا تھا لیکن انگلینڈ نے ڈی آر ایس مانگا اور تیسرے امپائر نے کئی ری پلے دیکھنے کے بعد امپائر کو اپنا فیصلہ تبدیل کرنے کے لئے مجبور کر دیا۔ نائر مایوس ہوکر پویلین لوٹ گئے ۔
گزشتہ میچ میں اوپننگ میں اترنے والے وکٹ کیپر پارتھیو پٹیل اس بار چھٹے نمبر پر آئے اور 15 رن بنانے کے بعد جو روٹ کا شکار بن گئے ۔پٹیل کا کیچ وکٹ کیپر جانی بیرسٹو نے لیا۔گزشتہ کافی عرصے سے شاندار فارم میں کھیل رہے روی چندرن اشون حیرت انگیز طور پر اس بار صفر پر آ¶ٹ ہو گئے ۔ اشون کو روٹ نے کیٹن جیننگز کے ہاتھوں کیچ کرایا۔ہندوستان کا چھٹا وکٹ 307 رن پر گرا۔اس وقت ایسا لگ رہا تھا کہ ہندوستان کے لیے برتری حاصل کرنا مشکل کام ہوگا لیکن وراٹ نے جڈیجہ اور جینت کے ساتھ اہم شراکت کرتے ہوئے ہندوستان کو 51 رنز کی برتری دلا دی۔
انگلینڈ کی جانب سے معین علی نے 139 رن، عادل راشد نے 152 رن اور جو روٹ نے 18 رن پر دو دو وکٹ لئے جبکہ جیک بال کو 29 رن پر ایک وکٹ ملا۔

About the author

Tariq Hasan