اردو | हिन्दी | English
402 Views
Bihar News

سید شہاب الدین کے انتقال پربہار میں رنج و غم کی شدید لہر

syed-shahabudin-story-647_030417080345
Written by Tariq Hasan

پٹنہ، 4مارچ (نمائندہ)۔ آل انڈیا مسلم مجلس مشاورت کے سابق صدرسید شہاب الدین ، سابق ایم پی،کشن گنج و سابق آئی ایف ایس کے سانحہ ارتحال پر آل انڈیا مسلم مجلس مشاورت (بہار چیپٹر) کے سکریٹری جنرل انوارالہدیٰ نے اپنے تعزیتی پیغام میں کہا کہ انکی وفات سے ملت اسلامیہ کو ایک بڑا خسارہ ہوا ہے۔ آزادی کے بعد ملت اسلامیہ کیلئے ایک مضبوط آواز کی شکل میں انکی پہچان کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔ ایمرجنسی کے فوراً بعد انہوں نے انڈین فارن سروس سے استعفیٰ دے کر سیاست میں حصہ لیا ۔ انجہانی چندر شیکھر کے قریبی حلقوں میں سے نمایاں مسلم چہرہ رہے اور جنتا پارٹی کے سکریٹری بنے۔ اس کے ساتھ ہی کل ہند مسلم مجلس مشاورت کے صدر مرحوم مفتی عتیق الرحمان عثمانی سے رابطہ ہوااور مشاورت اور مسلم سیاست میں ایک متحرک اور فعال شخصیت بنے۔ 1979سے 1996تک تین ٹرم وہ پارلیامنٹ کے ممبر رہے اور مسلمانوں کے مسائل بے باکی اور دلائل کے ساتھ اٹھاتے رہے ۔ پارلیامنٹ اور میڈیا کیلئےسب سے زیادہ نمائندہ چہرہ اور آواز بن گئے۔ ڈاٹا و ریسرچ پر مبنی انگریزی ماہنامہ مسلم انڈیااپنی ادارت میں نکالتے رہے اور حکومت اور دنیا کو ہندوستانی مسلمانوں کے احوال واقعی سے باخبر کیا کہ مسلمانوں کی تعداد، سرکاری اور نیم سرکاری ملازمتوں میں ان کا تناسب،، حکومت میں انکی حصہ داری ، انکی معاشی اور تعلیمی پسماندگی اور حکومت کی بے توجہی جیسے حقائق پر مبنی مضامین کی وجہ سے جہاں ایک طرف مسلم انڈیا کافی مقبول ہوا، شاہ بانو کیس، اور بابری مسجد قضیہ پر اپنے موقف پر ڈٹے رہے۔ اللہ تعالیٰ مرحوم کی مغفرت فرمائے اور پسماندگان کو صبرجمیل عطا کرے ۔ آل انڈیا مسلم مجلس مشاورت (بہار چیپٹر) کے جنرل سکریٹری احمد امام نے انکے انتقال پر اپنے شدید رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ طویل عرصہ سے انکے ساتھ دیرینہ تعلقات رہے اور انصاف پارٹی کے قیام عمل میں انے سے رشتہ اور بھی گہرا ہو ااور انہوں نے انصاف پارٹی کا بہار کا سکریٹری نامزد کیا اور انکے ساتھ انصاف پارٹی کے بینر تلے پورے بہار میں مسلمانوں کے درمیان جانے کا موقع مل اور جس طرح سے مسلمانوں میں انکی محبت اور عظمت کو دیکھا وہ بہت کم رہنما کو حاصل ہوتا ہے ۔ وہ ملت کی سربلندی کیلئے ہمیشہ کوشاں رہے مختلف پلیٹفارم سے بڑی مضبوط آواز بلند کرتے رہے۔ بہار کے مسلم کثیر آبادی والے پارلیامانی حلقہ کشن گنج سے دو بار ایم پی منتخب ہوئے ۔ بابری مسجد قضیہ پر پارلیامنٹ اور پارلیامنٹ کے باہر بے باکی سے اپنی آواز اٹھاتے رہے ۔ انکے انتقال سے مسلمانوں نے ایک ذہین ، قوم پرست اور بے باک رہنما کھو دیا ہے ۔ جس کی تلافی ماضی قریب میں ممکن نہیں ہے ۔ اللہ تعالیٰ ان کو غریق رحمت کرے اور کروٹ کروٹ جنت نصیب عطا فرمائے اور انکے پسماندگان کو صبر جمیل عطا فرمائے۔وزیر اقلیتی فلاح ڈاکٹر عبدلغفور ،سینئر صحافی اشرف استھانوی ، سابق وائس چیئر مین پندرہ نکاتی عملدرآمد کمیٹی شریف قریشی، سابق ایم ایل سی ڈاکٹر تنویر احسن ،سابق ایم اے ڈاکٹر اظہاراحمد ،افسر نواب عرف چھوٹا لالو ، پرو فیسر عارف حسین ، سماجی کارکن اشرفرید ، انجینئر شاہ عظمت اللہ ابوسعید، ڈاکٹر خورشید انور، آل انڈیا مسلم مجلس مشاورت کے ممبر نوشاد انصاری، آل انڈیا مسلم مجلس مشاورت (بہار چیپٹر) کے نائبین صدور سید شکیل حسن، باری اعظمی،حسن نواب حسن، جنرل سکریٹری آفتاب النبی، افسر امام، ڈاکٹر اشرف النبی قیصر سمیت پورے بہارسے بڑی تعداد میںسماجی ، ملی اور سیاسی رہنماﺅں نے بھی سید شہاب الدین کے سانحہ ارتحال پر اپنے گہرے تاسف کا اظہار کیا ہے اور کہا کہ مرحوم کے انتقال سے ملت اسلامیہ کا ایک اہم سپوت ہمارے درمیان سے رخصت ہوگیا اور خاص طور پر بہار نے اپنے ایک نا یاب ہیرا کھو دیا ہے۔ اللہ تعالیٰ مرحوم کو اپنے جوار رحمت میں جگہ عطا کرے اور کروٹ کروٹ جنت نصیب عطا فرمائے اور انکے پسماندگان کو صبر جمیل عطا فرمائے۔

About the author

Tariq Hasan