آج کا شماره | اردو | हिन्दी | English
Health

ایچ آئی وی کے خاتمے کی امید

HIV ADS
Written by Tariq Hasan

*۔ عامر حسن
ایچ آئی وی وائرس کے علاج کو ناممکن سمجھا جاتا ہے مگر اب طبی ماہرین نے ایک نئی ویکسین پر مبنی علاج کے ذریعے 5 مریضوں میں اس وائرس کے خاتمے میں کامیابی حاصل کی ہے۔
اسپین کے IrsiCaixa ایڈز ریسرچ انسٹیٹیوٹ کی تحقیق کے دوران محققین نے دو ایچ آئی وی ویکسینز کو کینسر کے علاج کے لیے استعمال ہونے والی دوا کے ساتھ مکس کرکے مریضوں کو تین سال تک استعمال کرایا۔ اس طریقہ علاج کے بعد 24 میں سے پانچ مریضوں میں اس وائرس کا خاتمہ ہو گیا اور ان کے جسم کے دفاعی نظام میں اس کا پھیلا? رک گیا۔ اس کامیابی سے توقع پیدا ہوئی ہے کہ مزید تحقیق کے ذریعے مستقبل قریب میں ایڈز کو روزانہ ادویات کے استعمال کے بغیر بھی روکا جا سکے گا۔ اس تحقیق میں صحت یاب ہونے والے مریضوں میں سے ایک گزشتہ سات ماہ سے ادویات کا استعمال نہیں کر رہا اور یہ مرض اب تک دوبارہ سامنے نہیں آسکا ہے۔
محققین کا کہنا تھا کہ ایچ آئی وی کے علاج کے حوالے سے ہمارا کام درست سمت میں آگے بڑھ رہا ہے اور یہ روزانہ کی ادویات کا متبادل ثابت ہو سکتا ہے۔ اس وقت دنیا بھر میں دو کروڑ کے قریب افراد ایچ آئی وی کا شکار ہیں جو اینٹی ریٹرو وائرل ادویات (اے آر ٹی) کا روزانہ استعمال کرتے ہیں جو اس وائرس کے پھیلا? کو سست کرنے میں مدد دیتا ہے۔ مگر یہ ادویات کافی مہنگی ہوتی ہیں اور ان کے ناخوشگوار اثرات بھی مرتب ہوتے ہیں۔
اس تحقیق کے دوران مریضوں کو روزانہ کی ادویات کے ساتھ نئی ویکسین کا بھی استعمال کرایا گیا اور ان کے دفاعی نظام کے ردعمل پر نظر رکھی گئی۔ 24 مریضوں میں اس ویکسین سے وائرس کا خاتمہ ہوا مگر 10 افراد میں وہ پھر واپس آکر پھیلنے لگا جب کہ پانچ مکمل طور پر اس سے صحت یاب ہو گئے اور انہیں روزانہ ادویات لینے کی ضرورت نہیں رہی۔

About the author

Tariq Hasan