آج کا شماره | اردو | हिन्दी | English
Indian

مشتبہ دہشت گرد اور اے ٹی ایس کے درمیان فائرنگ ، یوپی میں ہائی الرٹ

10_1488901408
Written by Tariq Hasan

لکھنؤ07 مارچ (ایجنسی): اترپردیش کی راجدھانی لکھنؤکے کاکوری میں حاجی کالونی میں سرچ کیلئے گئی اے ٹی ایس پر مشتبہ آئی ایس آئی ایس دہشت گرد سیفل نے فائرنگ کردی اس کے بعد اے ٹی ایس کے ذریعہ اسے کسی بھی طرح سے زندہ پکڑنے کی کوشش لگاتارجاری ہے۔ اس بیچ ریاستی حکومت نے اس صورتحال کے مد نظرپوری ریاست میں ہائی الرٹ کا فرمان جاری کردیا ہے۔یوپی پولس کے ڈی جی پی کے مطابق مدھیہ پردیش کے کھنڈوا میں آج صبح ہوئے ٹرین دھماکے میں اس مشتبہ دہشت گرد کا ہاتھ بتایا جارہا ہے۔ ادھر مدھیہ پردیش کے آئی جی لااینڈ آرڈر مکرند دیوسکر نے بھی بھوپال۔ اجین پسنجر ٹرین میں ہوئے دھماکے کو دہشت گردانہ واقعہ قرار دیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ اے ٹی ایس نے پورے علاقے کو گھیر لیا ہے۔ یوپی اے ٹی ایس کے آئی جی نے بتایا کہ ہمیں اطلاع ملی تھی کہ مشتبہ دہشت گرد ٹھاکر گنج علاقہ میں موجود ہے۔ جو دہشت گردانہ حملے میں شامل ہے۔ ہم کارروائی کررہے ہیں۔ دہشت گرد کے ساتھ انکاؤنٹر جاری ہے۔ وہ ایک گھر چھپا ہوا ہے دونوں طرف سے پہلے رک رک کر فائرنگ ہوئی۔ بعد میں فائرنگ تھم گئی ، اے ٹی ایس نے مشتبہ دہشت گرد سے بات کرنے کی کوشش کی لیکن اس نے کہا کہ وہ جان دے دے گا لیکن سرینڈر نہیں کرے گا۔ اس کے بعد فائرنگ دوبارہ تیز ہوگئی۔ 20 راؤنڈ فائرنگ کے بعد اے ٹی ایس نے موقع پر ایمبولنس بلالی۔ موصولہ اطلاع کے مطابق فائرنگ میں دہشت گرد زخمی ہوگیا ہے۔ اے ٹی ایس کمانڈوز گھر میں داخل ہوچکے ہیں۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اس مشتبہ دہشت گرد کے تار ایم پی میں بروز منگل ہوئے ٹرین بلاسٹ سے جڑے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ یوپی اے ٹی ایس کو اطلاع ملی تھی کہ مشتبہ شخص ٹھاکر گنج علاقہ میں موجود ہے۔ جو کسی دہشت گردانہ حملے میں ملوث ہے۔ انہوں نے کہا کہ پہلے ہم نے دروازہ کھٹکھٹایا تو اس نے کمرے کو لاک کرلیا۔ اس دوران ہم نے بندوق کی آواز سنی، انہوں نے کہا کہ اس کے پاس اسلحہ ہے لیکن وہ اکیلا ہے۔ اس کمرے میں کوئی بھی بندھک نہیں ہے اور کوئی موجود نہیں ہے۔ اے ٹی ایس آئی جی کے مطابق مرچی بم کا استعمال کر کے اس مشتبہ دہشت گرد کو زندہ پکڑنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ دہشت گرد سیفل کے بارے میں کانپور میں گرفتار ہوئے ایک دیگر ملزم سے پولس کو جانکاری ملی تھی۔ جس جگہ دہشت گرد اور اے ٹی ایس کے بیچ یہ مڈبھیڑ چل رہی ہے یہ اترپردیش اسمبلی سے محض 8کلو میٹر کی دوری پر ہے۔ ذرائع کے مطابق لکھنؤمیں چھپے مشتبہ دہشت گرد کے بارے میں ابتدائی اطلاع کیرل کے اے ٹی ایس کے ذریعہ خفیہ محکمہ کو دی گئی تھی۔ آپ کو بتادیں کہ پولس اس دہشت گرد کو خفیہ طریقے سے پکڑنے کیلئے وہ جیسے ہی پہنچی دہشت گرد نے پولس اور اے ٹی ایس پر فائرنگ شروع کردی۔ تادم تحریر موقع پر بڑی تعداد میں پولس فورس موجود ہے۔ پولس اور دہشت گرد کے بیچ گذشتہ ایک گھنٹے سے گولی باری جاری ہے۔ اترپردیش پولس نے لکھنؤ پولس کو ٹھاکر گنج علاقے کو پوری طرح سے اپنے قبضے میں لے کر اس گھر کو گھیر رکھا ہے جس میں مشتبہ دہشت گرد چھپا ہوا ہے۔ وہیں اس آپریشن کیلئے 20 اسپیشل کمانڈو موقع پر پہنچ گئے ہیں۔ آپریش کے دوران عام لوگوں کو گھر سے نکلنے کو منع کردیا گیاہے۔ موصولہ اطلاع کے مطابق اس پورے آپریشن کی قیادت اے ڈی جی لااینڈ آرڈر دلجیت چودھری کررہے ہیں۔ ڈی جی پی جاوید احمد بھی پورے آپریشن پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔ اے ٹی ایس کمانڈو کو اے ٹی ایس کے آئی جی اسیم ارون لیڈ کررہے ہیں۔ موقع پر اے ٹی ایس سمیت اترپردیش پولس کے اعلیٰ افسران موجود ہیں۔ اے ڈی جی لااینڈ آرڈر یوپی دلجیت چودھری کا کہنا ہے کہ مشتبہ دہشت گرد لکھنؤ کا ہی رہنے والا ہے اور اس کے پاس اے کے 47 ہتھیار ہے جس سے وہ فائرنگ کررہا ہے۔ وہیں مدھیہ پردیش کے وزیرداخلہ بھوپندر سنگھ نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ کھنڈوا میں ہوئے ریل حادثے میں دہشت گردوں کا ہاتھ ہونے کا شک پہلے ہی جتایا جارہا تھا۔ ادھر مدھیہ پردیش کے آئی جی لااینڈ آرڈر مکرند دیوسکر نے بھی بھوپال ۔ اجین ٹرین دھماکے کو دہشت گردانہ حملہ بتایا ہے۔

About the author

Tariq Hasan