آج کا شماره | اردو | हिन्दी | English
bihar

اپنے بچوں کو ہر حال میں تعلیم کے زیور سے آراستہ کریں:اسدالدین اویسی

20170318_222119
Written by Tariq Hasan

کشن گنج 19 مارچ (توصیف ثمر )تعلیم ایک ایسی دولت ہے جو دنیا کے قائم اور آباد رہنے تک باقی رہے گی لہذا ہم اپنے بچوں کو ہر حال میں تعلیم دیں۔مذکورہ باتیں کشن گنج کے مشہور سی بی ایس ای انگلش میڈیم کریسنٹ پبلک اسکول کی سالانہ ثقافتی اور الوراعیہ تقریب میں بطور مہمان خصوصی تشریف فرما آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے قومی صدر و حیدر آباد کے ایم پی مسٹر اسدالدین اویسی نے اپنے خطاب میں کہیں۔ انہوں نے کہا کہ دنیا کی وہی قومیں کامیاب ہوں گی جن کے پاس تعلیم کی دولت ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ مسلمانوں اور دلتوں کی تعلیمی شرح افسوسناک ہے لہذا مسلمان اور دلت اپنے بچوں کو تعلیم کے زیور سے آراستہ کرکے انہیں طاقتور بنائیں۔مسٹر اسدالدین اویسی نے کہا ہم لوگ مر کر خاک ہو جائیں گے مگر علم ہمیشہ باقی رہے گی کریسنٹ پبلک اسکول کے ڈائریکٹر غلام شاہد اور انکی ٹیم کے ذریعہ کئے جا رہے تعلیمی کام ہمیشہ رہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ بہار کے اس پیچھڑے علاقہ سیمانچل کی تعلیمی حالت انتہائی خستہ ہے۔انہوں نے ASER نامی تنظیم کی ایک سروے رپورٹ کا تذکرہ کیا اور کھا کہ بہار میں ایسے 60 فیصدی بچے ہیں جو ہیں تو تیسری جماعت کے لیکن پہلی جماعت کی کتاب نہیں پڑھ سکتے ہیں۔ انہوں نے کریسنٹ پبلک اسکول کی تعلیمی معیار پر خوشی کا اظہار کیا اور کھا کہ آج ایسے اداروں کی ضرورت ہے۔ اس موقع پر ایم آئی ایم کے بہار ریاستی صدر مسٹر اخترالایما نے کہا کہ ہمارے تمام تر مسائل کا حل تعلیم ہی لہذا ہماری اصل توجہ تعلیم پر ہو۔ مذکورہ اسکول کے ڈائریکٹر مسٹر غلام شاہد نے کہا اسدالدین اویسی صاحب جہاں میدان سیاست کے شہسوار ہیں ونہی تعلیم کے میدان کے معمار بھی ہیں ان کی سرپرستی میں آج الحمداللہ بہت سے تعلیمی ادارے چل رہے ہیں۔صحافی و سرگرم سماجی کارکن الحاج علی رضا صدیقی نے اسکول کے اس پروگرام کو تاریخی بتا یا اور کہا کہ انشاءاللہ اس کے دور درس نتائج بر آمد ہوں گے۔ اس موقع پر مختلف میدانوں میں خدمات انجام دے رہے چند معزز حضرات کو اسدالدین اویسی کے ہاتھوں اسکول انتظامیہ کی جانب سے مومنٹو پیش کیا گیا جن میں الحاج علی رضا صدیقی، ایڈوکیٹ لعل محمد، بہار یونیورسٹی کے پی آر او مدثر عالم اور سید مظہر الحسن کے نام شامل ہیں۔ اسکول کے اساتذہ کو بھی نمایا کارکردگی پر اعزاز سے نوازا گیا۔ پروگرام کا آغاز تلاوت قرآن سے ہوا اور بچوں نے ایک سے بڑھ کر ایک رنگا رنگ پروگرام پیش کیا۔ اس پروگرام کو کامیاب بنانے میںڈائریکٹر مسٹر غلام شاہد کے ساتھ جن اساتذہ اور استانی نے اہم رول انجام دیا ان میں نارو سر، آصیف اقبال سر،آفتاب سر،سرفراز اکبر سر، اکبر حسین سر، انوپ سر ،زینت مس، تبسم مس، ڈاکٹر شمیم اختر، فاطمہ مس، شینتین میڈم، شمع مس،نفرین مس،مسیرا مس،عبدالصمد سر،خرم سر اور اسکول کی پرنسپل محترمہ واجدہ تبسم وغیرہ کے نام قابل ذکر ہیں۔ اسکول ہازا کی سالانہ ثقافتی اور الوراعیہ تقریب کے موقع پر کشن گنج اور اطراف کے جہاں ہزاروں معزز و دانشور حضرات موجود تھے ونہی اپنے قومی صدر کی آمد کو لیکر آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے کارکنان و عہدیداران بھی کشن گنج اور بہار کے مختلف حصوں سے بڑی تعداد میں یہاں پہنچے تھے جن میں انجنئر آفتاب، سید مظہرالحسن،غلام سرور،ویشو جیت چٹرجی، امیت کمار، پاسوان منوج ٹھاکر، شاہد ربانی، آفتاب یزدانی، التمش خان ،اشتییاق احمد، محمد شاہنواز، عادل حسین، لعل محمد، ناسد حسین انصاری، خورشید عالم، ببن خان اور عید و حسین وغیرہ کے نام شامل ہیں۔

About the author

Tariq Hasan