آج کا شماره | اردو | हिन्दी | English
Politics

بی جے پی کی فرقہ پرست ذہنیت پھرسامنے آئی: اشوک چودھری

dr. ashoka chaudhary
Written by Tariq Hasan

چھپرہ، 19 مارچ (یو این آئی) بہار ریاستی کانگریس کے صدر اور ریاست کے وزیر تعلیم اشوک چودھری نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) پر فرقہ پرستی کی سیاست کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ اتر پردیش میں یوگی آدتیہ ناتھ کو وزیر اعلی بنانے سے پارٹی کی فرقہ پرست ذہنیت سامنے آ گئی ہے ۔مسٹر چودھری نے آج یہاں صحافیوں سے بات چیت میں کہا کہ بی جے پی پورے ملک میں فرقہ پرستی کی سیاست کر رہی ہے ۔ اتر پردیش میں یوگی آدتیہ ناتھ کو وزیر اعلی بنا کر بی جے پی نے اپنی فرقہ پرست سوچ کو لوگوں کے سامنے لا دیا ہے ۔ جس لیڈر کے خلاف 20 سے بھی زیادہ معاملے درج ہوں اور ان میں سے 11 مقدمات میں عدالت نے نوٹس بھی لے لیا ہو تو ویسے شخص کو وزیر اعلی کیوں بنایا گیا؟۔ انہوں نے کہا کہ یوگی آدتیہ ناتھ کو وزیر اعلی بنا کر بی جے پی نے واضح کر دیا ہے کہ اس کے سیاسی فیصلے راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) سے متاثر ہو کر کئے جاتے ہیں۔ کانگریس لیڈر نے کہا کہ اب وقت آ گیا ہے کہ ملک میں ایک صاف سیاست کے ساتھ ترقی کے لئے گاندھی وادی ذہن رکھنے والی جماعتوں کو ایک ساتھ آکر فرقہ پرست قوتوں کے بڑھتے تسلط کو ختم کرنا چاہئے ۔ اس سے قبل چھپرہ سٹی کونسل کے آڈیٹوریم میں منعقدہ ایک پروگرام میں شرکت کرنے پہنچنے پر تیس ماہ سے تنخواہ نہ ملنے سے ناراض اساتذہ نے وزیر تعلیم مسٹر چودھری کا گھیراؤ کیا۔ تقریبا پانچ دنوں سے بھوک ہڑتال پر بیٹھے اساتذہ نے ایک آواز میں بلا تاخیر تنخواہ ادا کئے جانے کا مطالبہ کیا۔ وزیر تعلیم نے تقریبا 10 منٹ تک مکمل سنجیدگی کے ساتھ اساتذہ کی باتیں سنیں اور دس دنوں میں تنخواہ ادا کئے جانے کی یقین دہانی کراتے ہوئے ان سے واپس ڈیوٹی پر لوٹ جانے کی اپیل کی۔ وزیر تعلیم کی یقین دہانی کے بعد تمام اساتذہ نے اپنی بھوک ہڑتال ختم کردیا۔

About the author

Tariq Hasan