اردو | हिन्दी | English
583 Views
Entertainment

سونو نگم کے معاملے پر بولنا خطرناک ہے: عرفان خان

sonu nigham
Written by Taasir Newspaper

سماجی اور قومی مسائل پر اکثر اپنی مضبوط رائے دینے والے انڈین اداکار عرفان خان نے کہا ہے کہ سونو نگم کے معاملے میں بولنا خطرے سے خالی نہیں ہے۔یاد رہے کہ حال ہی میں اذان کے حوالے سے گلوکار سونو نگم کے بیانات سے ملک میں ایک تنازع اٹھ گیا تھا۔بی بی سی ہندی سے گفتگو کرتے ہوئے عرفان خان کا کہنا تھا کہ ’میں اس معاملے پر بات اس لیے نہیں کرنا چاہتا کیونکہ مجھے نہیں پتہ کہ یہ کس طرح پیش کرے گا۔ مجھے ایک پلیٹ فارم دو جہاں اس معاملے پر بحث ہو سکے پھر میں اپنے خیالات سامنے رکھوں گا۔ مجھے پتا نہیں ہے سونو نگم نے کیا کہا ہے اور ان کی بات کو کیسے پیش کیا گیا ہے تو اس معاملے پر بات کرنا خطرے سے خالی نہیں ہے۔‘مذہب پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے عرفان نے کہا کہ ہر انسان کے لیے اپنا مذہب اور اپنی تلاش ضروری ہے۔ان کا خیال ہے کہ کسی دوسرے کی طرف سے بتایا گیا مذہب کوئی مذہب نہیں ہوتا اور جو ایمان لائے وہ صرف اپنی تسلی کے لیے مانتے ہیں۔عرفان خان کا کہنا تھا کہ ’ہر مذہب میں موت کے بعد کی کہانی بتائی گئی ہے اور ہر مذہبی شخص کو لگتا ہے کہ اس کے مذہب نے صحیح کہا ہے تو دیکھ لیجیے دنیا کتنے بڑے بہکاوے میں جی رہی ہے۔‘’لائف آف پائی’، ‘انفرنو’، ‘دی امیزنگ سائڈر مین’ جیسی ہالی وڈ فلموں میں کام کرنے والے عرفان خان کا کہنا ہے کہ ہالی وڈ فلموں میں بالی وڈ فلموں کے مقابلے پیسے کم ملتے ہیں۔عرفان کہتے ہیں، ’جب تک آپ بڑے سٹوڈیو کی فلم یا اہم کردار نہیں کرتے آپ کو پیسے کم ملتے ہیں۔‘اپنی آنے والی فلم ‘ہندی میڈیم’ کے بارے میں تبصرہ کرتے ہوئے انھوں نے کہا، ’لوگوں کی ذہنیت ہے کہ انگریزی بولنے والے اعلیٰ درجے کے ہوتے ہیں اور جو انگریزی زبان مناسب طریقے سے نہیں بول پاتے ہیں، اس کو ہم کم تر دیکھتے ہیں۔ جتنے بھی سپر سٹار ہیں انھیں ہندی آتی ہے۔‘اس فلم میں دکھایا گیا ہے کہ بھارت میں ہندی زبان کے ساتھ ہونے والی زیادتی کے ساتھ ساتھ کس طرح سے قومی زبان ہندی اپنا احترام انگریزی زبان کے سامنے کھوتی جا رہی ہے.اس فلم میں پاکستانی اداکارہ صبا قمر عرفان خان کی بیوی کا کردار ادا کر رہی ہیں۔عرفان نے تصدیق کی ہے کہ صبا فلم پروموشن کے لیے بھارت آئیں گی اور انھوں نے ویزے کے لیے درخواست دی ہے۔ہدایت کار ساکیت چودھری کی فلم ‘ہندی میڈیم’ 12 مئی کو ریلیز ہو گی۔

About the author

Taasir Newspaper