اردو | हिन्दी | English
248 Views
Indian

کمانڈر ذاکر موسی نے کیا حزب المجاہدین چھوڑنے کا اعلان

hizb
Written by Taasir Newspaper

سرینگر، 13 مئی.(پی ایس آئی)وادی کشمیر میں موسیٰ کا یہ قدم اس کی تنظیم کی جانب سے اس کے اس بیان سے پلہ جھاڑنے کے بعد آیا ہے، جس میں اس نے انتباہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ اگر حریت رہنماؤں نے کشمیر معاملے کو ‘سیاسی’ بتایا تو وہ ان کے سر کاٹ کر انہیں لال چوک پر لٹکا دے گا. گزشتہ جولائی میں تنظیم کی کمان سنبھالنے والے موسیٰ نے اعلان کیا ہے کہ ہفتہ کے بعد ان کا حزب المجاہدین سے کوئی ناطہ نہیں ہوگا.سوشل میڈیا پر جاری ایک نئے آڈیو پیغام میں موسیٰ نے کہا، ‘میرے آخری آڈیو پیغام کے بعد کشمیر میں بہت الجھن ہو گئی ہے. میں اپنے بیان اور پیغام پر قائم ہوں.’موسیٰ نے جمعہ کو کہا تھا کہ اگر حریت رہنماؤں نے کشمیر مسئلے کو’ اسلامی جدوجہد ‘نہ بتا کر’ سیاسی مسئلہ ‘قرار دیا تو وہ حریت رہنماؤں کے سر کاٹ کر انہیں سری نگر کے لال چوک پر لٹکا دے گا. تاہم، حزب المجاہدین نے ہفتہ کو کہا کہ موسیٰ کے بیان سے تنظیم اتفاق نہیں رکھتی. حزب کے ترجمان سلیم ہاشمی نے کشمیر کی ایک مقامی خبر رساں ایجنسی کو بھیجے گئے ایک ای میل بیان میں کہا، ‘اس طرح کا (موسیٰ کا) بیان ہمارے لئے ناقابل قبول ہے. اس میں ذاکر موسی کی ذاتی رائے جھلکتی ہے.’ حزب کے بیان پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے موسیٰ نے آڈیو پیغام میں کہا، ‘حزب المجاہدین نے کہا ہے کہ اس کا ذاکر موسیٰ کے بیان سے کوئی لینادینا نہیں ہے. لہذا، اگر حزب المجاہدین میری نمائندگی نہیں کرتا، تو میں بھی ان کی نمائندگی نہیں کرتا ہوں. آج کے بعد سے میرا حزب المجاہدین سے کوئی لینا دینا نہیں ہے.’20-22 سال کے موسیٰ نے کہا کہ اس نے کسی خاص شخص یا حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی شاہ گیلانی کے بارے میں کچھ نہیں کہا.اس نے کہا، ‘میں نے صرف اس شخص کے خلاف کہا ہے جو اسلام کے خلاف ہے اور ایک سیکولر ملک کے قیام کے لئے آزادی کی بات کرتا ہے.’اس نے کہا،’ ہم اسلام کے لئے آزادی کی جنگ لڑ رہے ہیں. میرا خون اسلام کے لئے بہے گا کہ کسی سیکولر قوم کے لئے.’غور طلب ہے کہ جمعہ کو سوشل میڈیا پر وائرل ایک آڈیو پیغام میں ذاکر نے کہا، ‘میں ان سبھی منافقانہ حریت لیڈروں کو انتباہ دے رہا ہوں. انہیں ہماری اسلامی جنگ میں مداخلت نہیں کرنا چاہئے. اگر وہ ایسا کرتے ہیں تو ہم ان کا سر کاٹ کر انہیں لال چوک پر لٹکا دیں گے.’اس نے کہا کہ کشمیر میں شریعت نافذ کرنے کو لے کر ان کی جنگ کا مقصد بالکل واضح ہے، نہ کہ وہ کشمیر مسئلے کو سیاسی جدوجہد بتا کر اس کا حل چاہتا ہے. مانا جا رہا ہے کہ اس ہفتے کے آغاز میں کشمیری فوجی افسر عمر فیاز کے قتل میں حزب المجاہدین کا ہاتھ ہے.

About the author

Taasir Newspaper