اردو | हिन्दी | English
273 Views
Politics

کپل بی جے پی کی زبان بول رہے ہیں: سنجے سنگھ

sanjay.jpg2
Written by Taasir Newspaper

نئی دہلی، 14 مئی.(پی ایس آئی)چندے کی آڑ میں سیاہ دولت کو سفید کرنے کے الزام پر عام آدمی پارٹی نے کہا ہے کہ کپل مشرا بی جے پی کی زبان بول رہے ہیں اور وہی الزام لگا رہے ہیں کہ جو ڈھائی سال پہلے بی جے پی اور خود وزیر اعظم مودی نے بھی لگائے تھے. کپل کے الزامات پر جواب دیتے ہوئے پارٹی لیڈر سنجے سنگھ نے اتوار کو کہا کہ یہ مکمل سازش کجریوال اور عاپ کو بدنام کر اس کی شناخت منسوخ کروانے کی ہے. کپل مشرا نے اپنی پریس کانفرنس میں دو مبینہ فرضی کمپنیوں کی طرف سے عام آدمی پارٹی کے نام پر دیے گئے 35-35 کروڑ کے چیک دکھائے تھے، اس کے جواب میں سنجے سنگھ نے بی جے پی کے نام پر 70 کروڑ کا ایک چیک دکھایا. انہوں نے کہا کہ کپل طرف دکھائے گئے تمام چیک فرضی تھے. ساتھ ہی کپل کے ساتھ موجود نیل نام کے شخص کو انہوں نے بی جے پی کارکن بتایا.سنجے سنگھ نے کہا، ‘وزیر اعظم نے کہا تھا …آدھی رات کا کالا سچ …ڈھائی سال سے عاپ کی حکومت ہے،عاپ کی کوئی خرابی نہیں پکڑ پائے. وزیر اعظم، کیجریوال کو بدنام کرنا بند کیجیے. ہم نے چندہ لینے کے سارے قوانین کی پیروی کی ہے. جو بی جے پی کہتی تھی، وہی بات اب کپل مشرا بول رہے ہیں. منوج تیواری بھی اسی شکایت کے ساتھ گزشتہ دنوں الیکشن کمیشن سے ملے تھے اور عاپ کی منظوری منسوخ کرنے کی مانگ کی تھی.’سنجے نے کہا کہ یہ عام آدمی پارٹی کو ختم کرنے کی بی جے پی کی سازش ہے. جو بات کپل کہتے ہیں، وہی بات بی جے پی کہتی ہے اور جو بات بی جے پی کہتی ہے، وہی بات کپل کہتے ہیں۔بی جے پی پر طنز کستے ہوئے عاپ لیڈر نے کہا، ‘جب بی جے پی بدعنوانی کے خلاف ہونے کی بات کرتی ہے تو لگتا ہے کہ جیسے ڈاکو گبر سنگھ عدم تشدد کے بارے میں بول رہا ہے.’بی جے پی کو گھیرتے ہوئے انہوں نے کہا،’ عاپ کاصدر کیمرے پر پیسہ لیتے ہوئے پکڑا گیا تھا، عاپ کے ہی ایک لیڈر نے کہا تھا کہ پیسہ خدا نہیں، پر خدا سے کم بھی نہیں.’سنجے سنگھ نے یدی یورپا، ویاپم کا گھوٹالہ، آئی پی ایل کی بدعنوانی، للت مودی، وسندھرا راجے، کیرتی آزاد اور ڈی ڈی سی اے گھوٹالے کا ذکر کرتے ہوئے بی جے پی پر سوال کھڑے کیے.سنجے سنگھ نے کہا کہ مرکزی حکومت کا واحد مقصد کیجریوال کو اور عاپ کو بدنام کرنا ہے. انہوں نے کہا کہ بی جے پی اور کانگریس کے بارے میں ہائی کورٹ نے کہا تھا کہ دونوں نے غیر ملکی کمپنیوں سے چندہ لیا اور ان کے خلاف کارروائی ہونی چاہیے، لیکن غیر ملکی کمپنیوں کی تعریف بدل دونوں پارٹیوں نے خود کو کارروائی سے بچا لیا. سنجے نے دعویٰ کیا کہ گزشتہ 10 سالوں سے بی جے پی اور کانگریس نے اپنے 70-80 فیصد چندے کا اعلان نہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ انہیں نامعلوم ذریعہ سے ملا ہے.سنجے سنگھ نے کپل سے ساتھ پی سی میں موجود نیل کو بی جے پی لیڈر قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ ارون جیٹلی کے ساتھ کام کرتا ہے.عاپ لیڈر راگھو چڈھا نے بھی کپل کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ وہ پارٹی بننے سے پہلے سے بھی غیر ملکی دوروں پر جاتے تھے اور اب بھی اپنے خرچ پر بیرون ملک جاتے ہیں. انہوں نے کہا کہ کپل کے الزامات میں کچھ بھی نیا نہیں ہے. اس پرانے الزام کو کوئی جانچ ایجنسی گزشتہ 3 سالوں میں صحیح ثابت نہیں کر پائی ہے. کپل کو ‘شکھنڈی’ بتاتے ہوئے انہوں نے کہا، ‘2 کروڑ کا چندہ بہت پرانا الزام ہے، گزشتہ ہفتے ہمیں چار نوٹس آئے ہیں انکم ٹیکس کے …جس کا ہم نے جواب بھی دے دیا ہے. کیا اب بی جے پی کو شکھنڈیو کا سہارا لے کر ہم پر الزام لگانا پڑے گا.’

About the author

Taasir Newspaper