اردو | हिन्दी | English
205 Views
Indian

ہند۔افریقہ تعلقات مزید مضبوط ہوئے ہیں: مودی

The Prime Minister, Shri Narendra Modi delivering his address at the opening ceremony of the 52nd African Development Bank Annual meetings, in Gandhinagar, Gujarat on May 23, 2017.
Written by Taasir Newspaper

گاندھی نگر، 23 مئی (یو این آئی) وزیر اعظم نریندر مودی نے آج تقریبا 80 رکن ممالک والے افریقی ترقیاتی بینک گروپ کے بورڈ آف ڈائریکٹرس کے سالانہ اجلاس کا باقاعدہ افتتاح کرتے ہوئے ملک کو نیا ہندوستان بنانے کے لئے اپنی حکومت کی کوششوں اور منصوبوں کا ذکر کیا اور کہا کہ ایسی کوششوں اور بنیادی ڈھانچہ، توانائی وغیرہ شعبوں میں خطیر سرمایہ کاری کی بدولت اگلے سال تک ملک میں ایک بھی ایسا گاؤں نہیں رہے گا جہاں پر بجلی کی پہنچ نہ ہو۔ چار افریقی ممالک کے موجودہ یا سابق سربراہان اور 80 ممالک کے تقریبا 3000 نمائندوں کی موجودگی میں یہاں مہاتما مندر میں کل سے شروع ہونے والی اس میٹنگ کا آج باضابطہ افتتاح کرتے ہوئے مسٹر مودی نے ہند۔افریقہ اور گجرات کے صدیوں پرانے تعلقات کا بھی تفصیل سے ذکر کیا۔ انہوں نے کہا کہ اس سے دونوں تہذیبیں مسلسل مستحکم ہوئے ہیں۔ سواحیلی زبان میں بہت سے الفاظ ہندی کے ہی ہیں۔ انہوں نے افریقی ممالک کی آزادی کی تحریک میں ہندوستانیوں کے کردار کابھی ذکر کرتے ہوئے کہا کہ بابائے قوم مہاتما گاندھی نے اپنی تحریک عدم تشدد کے ہتھیار کو جنوبی افریقہ میں ہی تیز کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ دونوں براعظموں میں تعلقات مزید مضبوط ہی ہوئے ہیں اور ہندوستان کو اس پر فخر ہے۔ سال 2014 میں وزیر اعظم بننے کے بعد سے انہوں نے افریقہ کو سب سے زیادہ ترجیح دی ہے۔ انہوں نے اور دیگر ہندوستانی وزراء ، صدر جمہوریہ اور نائب صدر نے افریقی ممالک کے پیہم دورے کئے ہیں۔ تعلیم کے میدان میں بھی دونوں میں گہرا رشتہ ہے اور 13 سربراہوں سمیت دیگر معزز افریقی شخصیات نے ہندوستانی اداروں میں تعلیم حاصل کی ہے۔ دونوں ممالک کے درمیان دو طرفہ تجارت بھی بڑھی ہے۔ ہندوستان اور جاپان نے مل کر بھی افریقہ کی ترقی کے لئے منصوبہ بنایا ہے۔ ہندوستان کے پرائیویٹ سیکٹر نے بھی گجرات میں گزشتہ 20 سال میں 54 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی ہے۔ ہندوستان وہاں سب سے بڑے پانچ سرمایہ کاروں میں سے ایک ہے۔ مسٹر نریندر مودی نے کہا کہ ہندوستان زراعت میں خوشحالی لانے کے معاملے میں افریقی ترقیاتی بینک سے سیکھنا چاہتا ہے جس کا استعمال سال 2022 تک کسانوں کی آمدنی دوگنی کرنے کے منصوبے کے لئے وسائل، مارکیٹ کی دستیابی وغیرہ کے لئے کیا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں افراط زر جیسے بڑے اقتصادی اشاروں کو کنٹرول میں رکھتے ہوئے محدود وسائل کے ساتھ غربت کے خاتمے اور بنیادی ڈھانچہ کی ترقی وغیرہ کے کام کرنے ہیں۔ ہندوستان نے کم نقد والی معیشت کی پہل کے معاملے میں کینیا کی کامیاب موبائل بینکاری نظام سے بہت کچھ سیکھا۔ انہوں نے کہا کہ ان کی حکومت کے تین سال کے دوران مالیاتی خسارہ، ادائیگیوں کے توازن کا خسارہ اور افراط زر کی سطح نیچے آگئی ہے جبکہ جی ڈی پی، فاریکس ذخائر اور سرمایہ کاری میں اضافہ ہوا ہے۔ مسٹر نریندر مودی نے ہندوستانی معیشت کو بہتر بنانے کے لئے سرکاری امداد کو براہ راست بینک اکاؤنٹ میں منتقل کرنے کے تناظر میں رسوئی گیس سبسڈی کے ذریعے کی گئی چار ارب ڈالر کی بچت کا ذکر بھی کیا۔ انہوں نے یوریا پر نیم کی پرت چڑھانے کی کامیاب اسکیم، مٹی کی صحت مندی کی معلومات والے سوئل ہیلتھ کارڈ منصوبہ وغیرہ پر بھی تفصیل سے تبادلہ خیال کیا۔انہوں نے کہا کہ میک ان انڈیا، اسمارٹ سٹی اسکیم، سب کے لئے رہائش منصوبہ، ڈیجیٹل انڈیا وغیرہ کے ذریعے آنے والے وقت میں ہندوستان کو دنیا کی ترقی کا انجن بنایا جائے گا۔ تاہم ،اس کے علاوہ اسے ماحولیات دوستانہ ترقی کا ایک نمونہ بھی بنایا جائے گا۔ پچھلے کچھ عرصے میں بنیادی ڈھانچہ اور دیگر شعبوں میں غیر معمولی سرمایہ کاری ہوئی ہے۔اس کے نتیجے میں اگلے سال سے ہندوستان میں ایک بھی گاؤں بجلی کے بغیر نہیں رہے گا۔ انہوں نے ملک کی اقتصادی ترقی کو رفتار دینے میں دو اہم عوامل عوامی بینکنگ اور اس کے ذریعے جن دھن جیسی اسکیم اور آدھار کارڈ کو بتایا۔ مسٹر مودی نے کہا کہ کھیل میں ہندوستان افریقی ممالک کے باشندوں کے طویل فاصلے کی دوڑ میں تو مقابلہ نہیں کر سکتا ، مگر وہ بہتر مستقبل کے لئے طویل اور مشکل دوڑ میں اس کے ساتھ ہی رہے گا۔

About the author

Taasir Newspaper