اردو | हिन्दी | English
339 Views
Politics

تقسیم کو ابھی تک قبول نہیں کر پایا ہے آندھرا : چندر بابو

cnahrta.jpg2
Written by Taasir Newspaper

وجئے واڑہ، 2 جون.(پی ایس آئی)وزیر اعلی این. چندر بابو نائیڈو نے جمعہ کو کہا کہ ریاست آندھرا پردیش کی تقسیم کو ابھی تک قبول نہیں کر پایا ہے. تلنگانہ دو جون کو اپنا تیسرا یوم تاسیس منا رہا ہے، جبکہ آندھرا پردیش نے اس دن ‘نو تخلیق بیداری شروع’ پروگرام کا انعقاد کیا، جہاں آندھرا کے لوگوں نے ریاست کے تعمیر نو کا حلف لیا. وجئے واڑہ میں ہوئے اہم کی تقریب میں وزیر اعلی نے لوگوں کو حلف دلایا. نائیڈو نے تقسیم کے بعد تمام رکاوٹوں کے باوجود ریاست کو نئی اونچائی پر پہنچانے کا حلف لیا. انہوں نے دو جون کو آندھرا پردیش کی تاریخ میں ‘سیاہ دن’ بتایا اور کہا کہ ریاست تقسیم کو ابھی تک قبول نہیں کر پایا ہے. تیلگو دیشم پارٹی (ٹی ڈی پی) کے سربراہ نے ریاست کی تقسیم کے طریقوں پر احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ ریاست کے لوگوں کو ریاست کی تعمیر نو کے لئے خود کو وقف کر دینا چاہئے. تقسیم سے پہلے کانگریس کی قیادت والی مرکزی حکومت کے طریقوں کو یاد کرتے ہوئے نائیڈو نے کہا کہ کانگریس پارٹی کے رویے سے لوگوں کو ٹھیس پہنچی ہے. نائیڈو نے کہا کہ پارلیمنٹ میں تقسیم بل دروازہ بند کرکے پاس کیا گیا اور مزاحمت کرنے کی کوشش کر رہے ٹی ڈی پی ممبران پارلیمنٹ پر حملہ کیا گیا. انہوں نے کہا کہ بل کو ریاستی اسمبلی کی تصدیق کے لئے لڑاکا طیارے سے حیدرآباد بھیجا گیا. نائیڈو نے الزام لگایا کہ کانگریس صدر سونیا گاندھی نے اپنے ملک اٹلی کے یوم آزادی پر ریاست کو تقسیم کر دیا. اپنی حکومت کی طرف سے گزشتہ تین سالوں میں ریاست کو پٹری پر لانے کے لئے کی جانے والی کوششوں کو یاد کرتے ہوئے نائیڈو نے کہا کہ اگر لوگ مشکل محنت کرتے ہیں تو کچھ بھی ناممکن نہیں ہے. ٹی ڈی پی سربراہ نے کہا کہ جاپان جیسے ملک آندھرا پردیش کے لئے ایک مثال ہونا چاہیے، کیونکہ دوسری عالمی جنگ میں تباہ ہونے کے بعد یہ دنیا کی معروف معیشت کے طور پر ابھر کر سامنے آئے۔اسمبلی اسپیکر کوڈیلا شیوپرساد راؤ اور وزراء اور اعلی حکام نے ریلی میں شرکت کی.

About the author

Taasir Newspaper