اردو | हिन्दी | English
308 Views
Politics

تلنگانہ کی ترقی کے لئے پابند عہد : راؤ

rao
Written by Taasir Newspaper

حیدرآباد2جون (یو این آئی)تلنگانہ کے وزیراعلی کے چندرشیکھر راو نے کہا ہے کہ وہ ریاست تلنگانہ کی ترقی کے لئے بے لوث اور پابند عہد ہوکرکام کررہے ہیں۔انہوں نے دو نئی اسکیمات کا اعلان کیا۔ پہلی اسکیم تنہا زندگی گزارنے والی خواتین کے لئے ایک ہزار روپے ماہانہ مالی امداد اور حاملہ خواتین کے لئے 12 ہزار روپے شامل ہیں۔ریاست کی یوم تاسیس کے موقع پر پریڈ گراونڈ سکندرآباد میں خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 2ہزار روپے مالیت کی کے سی آر کٹس کی بھی آج سے تقسیم عمل میں لائی جائے گی تاکہ نو زائیدہ بچوں کی صحت کو یقینی بنایا جاسکے ۔انہوں نے تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے لئے عظیم قربانیاں دینے والے شہیدوں کو بھر پور خراج عقیدت پیش کیا۔ توقع کے مطابق عوام کے مختلف طبقات کی ترقی کے لئے بیشتر اسکیمات کی بھی انہوں نے نشاندہی کی۔انہوں نے کہا کہ ریاست کے زرعی شعبہ کو اس کے ساتھ امتیاز کے سبب متحدہ آندھراپردیش میں بحران میں ڈھکیل دیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ حکومت کی تشکیل کے بعد اس نے کسانوں اور بچانے کے لئے کوششوں کا آغاز کیا۔؂ملک میں پہلی مرتبہ 35.30 لاکھ کسانوں کے 17 ہزار کروڑ روپے کے قرضہ جات معاف کئے گئے ۔ انہوں نے کہا کہ بہترین جذبہ کے ساتھ مشن کاکتیہ پروگرام جاری ہے تاکہ ریاست بھر کے تقریباً 46 ہزار تالابوں کو کار گر بنایا جاسکے ۔گزشتہ دو برسوں کے دوران پہلے ہی 16 ہزار تالابوں میں نئی جان پیدا کی گئی ہے ۔ اس سال مزید پانچ ہزار تالابوں کے احیا کے لئے کام کئے جارہے ہیں۔مشن کاکتیہ کے تحت جن تالابوں کا احیا کیا گیا ہے وہ پانی سے لبریز ہیں اور زیر زمین پانی کی سطح میں بھی اضافہ ہوا ہے ۔ اس کے نتیجہ میں مواضعات میں زندگی اور ماحولیاتی تبدیل ہوئی ہے ۔ماضی میں کسانوں کو تخم اور کھاد کے لئے مشلکات کا سامنا کرنا پڑتا تھا۔ تلنگانہ حکومت کسانوں کی دہلیز پر ان کی دستیابی سے پہلے ان کا ذخیرہ کررہی ہے ۔ اب تخم اور کھاد کی کوئی قلت نہیں ہے ۔ ہم نے زر پیداوار کے ذخیرہ کی گنجائش کے ساتھ گوداموں کی تعمیر کی۔ریاست کی تشکیل کے موقع پر چار لاکھ میٹرک ٹن کے گنجائش کے 179 گودام تھے تاہم 17.07 لاکھ میٹرک ٹن کے گنجائش والے مزید 364 گوداموں کی تعمیر عمل میں لائی گئی ہے ۔ بہ حیثیت مجموعی ریاست میں 22.5لاکھ ٹن گنجائش والے گودام ہیں۔ ہم کسانوں کو سبسیڈی پر ٹریکٹرس فراہم کررہے ہیں اور ٹریکٹرس کے ٹرانسپورٹ ٹیکس کو ختم کیا گیا ہے ۔اس ماہ سے ہم یادو اور کرما طبقہ کیلئے اسکیم کا آغاز کررہے ہیں اور بکروں کے یونٹس کے قیام کے لئے 75 فیصد سبسیڈی فراہم کررہے ہیں۔ اس کے لئے ریاست میں بکروں کی افزائش کی امداد باہمی انجمنوں میں رکنیت سازی کا اندراج جاری ہے ۔تمام اہل ارکان کو ایک یونٹ میں 24 بکروں کی فراہمی کے انتظامات کئے جارہے ہیں۔ مجھے یہ اعلان کرتے ہوئے خوشی ہورہی ہے کہ یادو اور کرما کے لئے پانچ ہزار کروڑ روپے کی سرمایہ کاری سے 24 لاکھ بکروں کی خریدی اور تقسیم کررہے ہیں۔انہوں نے اعادہ کیا کہ ریاست تلنگانہ کی تشکیل کے بعد کئی اقدامات کئے گئے ۔ 20جون کے بعد دھنگروں میں بکروں کی تقسیم کا کام شروع ہوگا اور بیشتر روایتی ملازمت کرنے والے افراد کی ترقی کے لئے کئی منصوبے تیار کئے گئے ہیں۔

About the author

Taasir Newspaper