اردو | हिन्दी | English
164 Views
Bihar News

تین دن کی زبردست مشقت کے بعد پیار کی ہوئی جیت

raxaul
Written by Taasir Newspaper

رکسول، 4جون (محمد حسن)۔ 21 ویں صدی میں جہاں پیار دھوکہ دہی کے نام سے جانا جانے لگا ہے۔ وہیں جمعہ کو رکسول میں محبت کی ایسی مثال سامنے آئی ہے جس میں ہزاروں کلومیٹر دور کے دو دل آپس میں کافی قانونی مشقت کے بعد ملے۔معاملہ نیپال کے سندھوپال چوک اور مغربی بنگال کے کولکاتہ سے جڑا ہے۔ کولکاتہ میں وپرو کمپنی میں کام کرنے والے بنگالی بابو راج سنگھ کو نیپال کے سندھوپال چوک کی رہنے والی مایا تمانگ سے گزشتہ ایک سال سے محبت تھی۔ اس دوران گذشتہ بدھ کو مایا اپنے عاشق راج سے ملنے سندھو پال چوک سے رکسول آ رہی تھی۔راج بھی مایا سے ملنے کی امید لے کر رکسول آ گیا تھا۔مایا قریب 800 کلومیٹر کی دوری طے سندھو پال چوک سے بھارت۔ نیپال سرحد تک تو پہنچ گئی۔لیکن سرحد پر پہنچتے ہی اس کے ساتھ جو کچھ ہوا وہ اس کی زندگی کے لئے سیاہ دن بن گیا۔ سرحد پر انسانی تجارت کی روک تھام کے لئے کام کر رہی تنظیم مائیتی نیپال نے مایا تمانگ کو سرحد پر ہی روک دیا۔ جب تک مایا کچھ سمجھ پاتی، مائتی نیپال کے اہلکار اسے شارٹ اسٹے ہاؤس میں لے گئے۔مایا نے بتایا کہ وہ راج سے محبت کرتی ہے اور اس سے شادی بھی کر چکی ہے۔ اس کے بعد بھی مائتی نیپال نے اسے نہیں چھوڑا۔راج سنگھ جو کہ رکسول میں مایا کا انتظار کر رہا تھا، اس کو جب اس کی بھنک لگی تو پاگلوں کی طرح بیرگنج گیا۔ اس کے بعد بھی وہاں اس کی ایک نہیں سنی گئی۔ دونوں نے اپنی محبت اور شادی کی کئی بات بتائی۔ اس کے بعد بھی مایا کو رہا نہیں کیا گیا۔ تھک ہار کر راج رکسول آ گیا۔ اس کے بعد اس نے محبت کی بدولت پھر پہل شروع کی۔جیسے تیسے مایا کی ماں اور اس کے خاندان سے رابطہ کیا۔بیٹی کی محبت کی کہانی اور داماد کی باتیں سن کر مایا کا خاندان جمعہ کو بیرگنج پہنچا۔اس کے بعد پرسا ایس پی گووند ساہ اور ڈی ایم کیشوراج گھیمرے تک معاملہ پہنچا۔ اس کے بعد جمعہ کو دونوں فریقوں کو ایک ساتھ بیٹھا کر پولیس نے معاملے کو حل کیا اور دونوں عاشق جوڑے کو ایک ساتھ رہنے کی اجازت دے دی۔ راج نے بتایا کہ ہم لوگ ایک سال سے محبت سلسلے میں ہیں۔ نیپال میں جب مایا کو روک دیا گیا تو مجھے لگا کہ وہ نہیں مل پائے گی۔لیکن آخرکارمحبت کی جیت ہوئی اور ہم ایک ہو گئے۔ مایا کی ماں اور اس کے خاندان والے بھی اس سے کافی خوش تھے۔ پرسا ایس پی گووند ساہ نے بتایاکہ دونو ایک ساتھ رہنے کو راضی تھے۔ مائتی نیپال نے شک کی بنیاد پر مایا کو روکا تھا۔ معاملے کی حقیقت جاننے کے بعد کنبہ والوں کے سامنے دونوں کو ایک ساتھ رہنے کی اجازت دے گئی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper