اردو | हिन्दी | English
262 Views
Bihar News

نتیش نے کسانوں کی بات غور سے سنی،ساتھ بیٹھ کر کھانا کھایا

NITI2
Written by Taasir Newspaper

پٹنہ 16 جون (طارق حسن): پٹنہ کے شری کرشن میموریل ہال میں جمعہ کو کسان سماگم کا انعقاد کیا گیا۔ اس سماگم میں پوری ریاست سے آئے کسانوں کے ساتھ وزیراعلیٰ نتیش کمار نے کھل کر بات کی۔ اور کسانوں کی باتوں کو بھی بہت دھیان سے سنا۔ وزیراعلیٰ نے زرعی منصوبوں کی خوبیوں اور خامیوں دونوں پر کسانوں کی رائے جانی۔ کسانوں نے جہاں اس کی خوبیاں گنائی، وہیں خامیوں کی طرف بھی اشارہ کیا۔ ماحول پورے طور پر دوستانہ تھا۔ دن بھر کے سماگم میں وزیراعلیٰ پوری طرح کسانوں کے ساتھ گھل مل کر رہے۔ انہوں نے باتوں باتوں میں کسانوں کے ساتھ مزے بھی لئے تو کہیں کہیں ان کی غلطیاں بھی سدھارتے رہے۔ سماگم کی خاص بات یہ رہی کہ جب کھانے کا وقت آیا تو وزیراعلیٰ نے کھانا بھی کسانوں کے ساتھ پنگت پر بیٹھ کر کھایا۔ کھانا بھی ان کیلئے الگ نہیں تھا جو لنچ پیکٹ کسانوں کو دیئے گئے تھے وہیں وزیراعلیٰ کو بھی ملا۔ پورے پروگرام کے دوران وزیراعلیٰ کسانوں کے درمیان بیٹھے رہے۔ صرف دو منٹ کیلئے ایک بار اسٹیج سے اٹھے ۔ کسان بھی وزیراعلیٰ کو اپنی بات کہنے کیلئے بے چین نظر آئے۔ کسانوں کی کسی بات پر اگر وزیراعلیٰ بغل میں بیٹھے چیف سکریٹری انجنی کمار سنگھ سے بات کرنے لگتے تو بولنے والا کسان اس وقت تک خاموش رہتا جب تک وزیراعلیٰ پھر اس کی طرف مخاطب نہ ہوجاتے۔ اس دوران وزیراعلیٰ نے کسانوں کے ساتھ ہنسی مذاق بھی کیا۔ پروگرام کے آغاز میں ہی ایک کسان نے نیل گائے کا ذکر کیا تو وزیراعلیٰ نے کہا کہ ارے گھوڑ پراس نہ کہیے ، اسی طرح ایک کسان نے جوکی کھیتی کی بات کی تو وزیراعلیٰ نے کہا کہ جئی کہیے نا۔ بات جب ایم ایس پی یعنی منیمم سپورٹ پرائس کی شروع ہوئی تو ایک کسان نے کہا کہ لاگت کا دو گنا سپورٹ پرائس دینے کی بات کہی گئی تھی۔ اس پر وزیراعلیٰ نے غلطی سدھارتے ہوئے کہا کہ دوگنا نہیں ڈیڑھ گنا ۔ وزیراعلیٰ نے افسران سے صاف طور پر کہہ رکھا تھا کہ کسان سماگم میں آئے کسانوں کے وقار کا پورا خیال رکھا جائے اور ان کے ساتھ اچھا سے اچھا سلوک کیا جائے۔ لیکن اس موقع پر کچھ لوگ سیاست کرنے سے بھی باز نہیں آئے۔ سماگم سے ہٹ کر کچھ لوگوں نے سڑکوں پر آلو پیاز اور دودھ پھینکنے کا ڈرامہ بھی کیا اور ایک منفی تاثر دینے کی کوشش کی۔

About the author

Taasir Newspaper