اردو | हिन्दी | English
339 Views
Around the World

کابل میں افغان صدر کے خلاف احتجاج، جھڑپوں میں 4 مظاہرین ہلاک 8 زخمی

on.d8bb63fc679731ac4d7c3480e99acd8d
Written by Taasir Newspaper

کابل: افغانستان کے دارالحکومت کابل میں بم دھماکے کے واقعے کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے درجنوں افراد سڑکوں پر نکل آئے اور صدر اشرف غنی سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا۔ اس دوران پولیس سے جھڑپوں میں 4 مظاہرین ہلاک اور 8 زخمی ہو گئے۔ غیر ملکی خبر ایجنسی کے مطابق افغان دارالحکومت میں گزشتہ دنوں ہونے والے بم دھماکے پر احتجاجی مظاہرین نے ایوان صدر کی طرف مارچ کرنے کی کوشش کی۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر حکومت ہمیں تحفظ فراہم نہیں کرسکتی تو مستعفی ہو کر گھر چلی جائے۔ پولیس نے مظاہرین کو ایوان صدر کی طرف جانے سے روکنے کی کوشش کی تو مظاہرین نے پولیس پر پتھراؤ کیا۔ سیکورٹی اہلکاروں نے مظاہرین پر براہ راست فائرنگ کی اور واٹر کینن سے احتجاجی مظاہرین کو منتشر کر دیا۔ اس دوران سیکورٹی اہلکاروں اور احتجاج کرنے والوں کے درمیان شدید جھڑپیں ہوئیں جس میں 4 مظاہرین ہلاک اور 8 زخمی ہو گئے۔ مظاہرین نے کابل دھماکے کو حکومت کی انٹیلی جنس ناکامی قرار دیا۔ دوسری جانب سرکاری ذرائع نے غیر ملکی خبر ایجنسی کو بتایا کہ صدر اشرف غنی حملے کے جواب میں طالبان اور حقانی نیٹ ورک سے تعلق رکھنے والے 11 قیدیوں کو سزائے موت دینے کی منظوری دے سکتے ہیں۔

About the author

Taasir Newspaper