چکن موموز میں کتے کے گوشت کے استعمال کا الزام

0
27

نئی دہلی، 22 جولائی (یو این آئی) اگر آپ کو چکن موموزکھانے کا شوق ہے تو ہوشیار رہو جائیں۔ راجدھانی دہلی میں چکن موموزمیں کتا کا گوشت استعمال کرنے کی سنگین شکایات اور اس کی جانچ کے بعد دہلی چھا¶نی کے علاقے میں اس کی 20 دکانوں کو بند کرایا گیا ہے ۔دہلی چھا¶نی کے علاقے میں چکن موموز کو لے کر کافی شکایتیں مل رہی تھیں۔ ایسی شکایات موصول ہونے پر علاقے میں لگنے والی ریہڑی پٹریوں اور دکانوں پر فروخت کئے جانے والے چکن موموز کے معیار کی جانچ کرائی گئی اور مشکوک 20 دکانوں کو بند کرایا گیا۔دہلی چھا¶نی بورڈ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر ریڈی شنکر بابو نے تسلیم کیا کہ اس طرح کی شکایات موصول ہوئی ہیں کہ علاقے کے چکن موموزفروخت کرنے والے کچھ دکاندار اسے بنانے میں کتے کے گوشت کا استعمال کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شکایات کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے موموز کے معیار کی جانچ کرنے کا فیصلہ کیا گیا اور کارروائی کی گئی۔ جانچ میں پتہ چلا کہ موموز کا معیار بہت خراب ہے ۔جانچ کرنے کے بعد مشتبہ خریداروں کا سامان ضبط کرنے کے بعد انہیں دکان بند کرنے کا حکم دیا گیا ہے ۔ گڑبڑی کرنے والے 20 دکانداروں پر کارروائی کرتے ہوئے ان کا سامان ضبط کر لیا گیا ہے ۔ شکایات کے بعد چھا¶نی علاقے کے صدر بازار، گوپی ناتھ مارکیٹ اور وینڈنگ زون کے سینکڑوں دکانداروں کے یہاں ویجلینس محکمہ نے جانچ کی تھی۔ دہلی کینٹ سے چار بار رکن اسمبلی رہے اور اس وقت نئی دہلی بلدیہ کونسل کے نائب صدر کرن سنگھ تنور نے پورے معاملے کی کے تفتیشی بیورو (سی بی آئی) سے جانچ کی مانگ کرتے ہوئے الزام لگایا کہ یہ سب کچھ دہلی کینٹ کے چیف ایگزیکٹو افسر کی معلومات میں ہو رہا تھا اور اس میں چھا¶نی بورڈ کے کچھ افسران ملوث تھے ۔مسٹر تنورنے چیف ایگزیکٹو آفیسر کو فوری طور پر معطل کرنے کا مطالبہ کیا اور کہا کہ اس پورے معاملے کی غیر جانبدارانہ جانچ ضروری ہے ۔