آج کا شماره | اردو | हिन्दी | English
Politics

مڑھورا ریل انجن کارخانہ بند نہیں ہوگا

28psi14
Written by Taasir Newspaper

نئی دہلی، 28 ستمبر (یو این آئی) ریلوے کے مرکزی وزیر پیوش گوئل نے آج واضح کیا کہ جنرل الیکٹریکلس (جی ای) کی سرمایہ کاری سے بہار کے مڑھورا میں بننے والے ڈیزل ریل انجن کارخانہ پروجکٹ کو بند کرنے کا کوئی منصوبہ نہیں ہے اور اگر ضرورت پڑی تو اس دوہرے ایندھن والے انجن یا برقی انجنوں کی بھی تعمیر کی جائے گی۔مسٹرگوئل نے وزیر ریل بننے کے بعد ریل بھون میں منعقد اپنے پہلی پریس کانفرنس میں یہ وضاحت کی۔ وزیر مملکت منوج سنہا اور ریلوے بورڈ کے صدر اشونی لوھان¸ اور دیگر اعلی حکام بھی اس موقع پر موجود تھے ۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ ملک کا پہلاسودیشی ٹرین سیٹ 2018 تک بن کر تیار ہوجائے گا۔ایک سوال کے جواب میں وزیر ریل نے کہا کہ مڑھورا میں ڈیزل ریل انجن کا کارخانہ قائم کیا جا رہا ہے ۔ ایک لوکوموٹیو امریکہ سے روانہ ہوچکا ہے جو اگلے ماہ یہاں پہنچ جائے گا۔انہوں نے کہا کہ یہ سچ ہے کہ ریلوے نے اپنی صد فی صد ٹریک کی برق کاری کا اصولی فیصلہ کیا ہے اوراس سے ملک کے اربوں ڈالر کی غیر ملکی کرنسی کی بچت ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ جی ای کے اعلی حکام کے ساتھ بات چیت ہوئی ہے اور ان سے اس تعلق سے کئی متبادل پر تبادلہ خیال کیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت مڑھورا میں ریل کارخانہ لگانے کے اپنے فیصلے پر قائم ہے ۔ وارانسی کے ڈیزل ریل کارخانے میں ڈبل استعمال کے انجن بننے شروع ہوگئے ہیں اور دو برقی انجن بھی بنائے جا چکے ہیں۔ ڈیزل انجن کو دوہرے ایندھن کے انجن میں تبدیل کرنے یا بجلی کے انجن میں تبدیل کرنے میں کوئی “راکٹ سائنس” نہیں لگتی ہے ۔ اگر یہ وارانسی میں ہوسکتا ہے تو یہ بھی مڑھورا میں بھی ہوجائے گا۔ٹرین سیٹ کی بابت مسٹر گوئل نے کہا کہ ریلوے نے 17 ٹرین سیٹ بنانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ ابتدائی دوٹرین سیٹ چنئی کے انٹیگرل کوچ فیکٹری میں بنائے جا رہے ہیں۔ پہلا سیٹ مئی 2018 میں آئے گا اور دوسرا سیٹ دو سے تین ماہ بعد آئے گا اور بقیہ 15 سیٹ غیر ملکی شراکت داروں کے ساتھ ٹیکنالوجی کی منتقلی کے معاہدے کے بعد 2019-20 میں آئیں گے ۔وزیر ریل نے کہا کہ اب وہ دن دور نہیں جب ٹرین کے ہر ڈبے میں سی سی ٹی وی کیمرے لگیںگے۔ اس کے علاوہ ریلوے اسٹیشن اور پلیٹ فارموں پربھی سی سی ٹی وی کیمرے لگائے جائیںگے۔ کیونکہ مسافروں کا تحفظ ریلوے کی ترجیح ہے۔پیوش گوئل نے کہا کہ سبھی ٹی ٹی ای اور ریلوے پولس کے اہلکار اپنی ڈیوٹی کے دوران یونیفارم میں رہیںگے۔ انہوں نے افسران سے کہا کہ وہ ٹرینوں میں فراہم کرائے جانے والے کھانے اور اسے سپلائی کرنے والے ٹھیکیداروں کے بارے میں پوری جانکاری لی جائے اور کیٹرنگ سروس میں سدھار کی لگاتار کوشش کی جائے۔

About the author

Taasir Newspaper