سیاست

بہار میں امتحانات مذاق بن کر رہ گئے ہیں: پپو

Written by Taasir Newspaper

پٹنہ 12 اکتوبر (تاثیر بیورو):جن ادھیکار پارٹی کے سرپرست اور رکن پارلیمنٹ راجیش رنجن عرف پپو یادو نے کہا ہے کہ ریاست میں تعلیمی نظام پوری طرح چوپٹ ہوگیا ہے۔ امتحانات مذاق بن کر رہ گئے ہیں اور حکومت طلبا کے مستقبل سے لگاتار کھلواڑ کررہی ہے۔جمعرا ت کو پٹنہ میں ٹی ای ٹی سنگھ کے زیر اہتمام منعقد احتجاجی مارچ اور مظاہرے کے دوران میڈیا سے بات کرتے ہوئے پپو یادو نے کہا کہ بہار اسکول اکزامنیشن بورڈ کی لاپروائی سے ہر امتحان کے بعد نیا تنازعہ شروع ہوجاتا ہے۔ بی ای ٹی ای ٹی امتحان کے نتائج سے مشتعل اور ناراض طلبا کامظاہرہ امتحان کے نظام کی ناکامی کا ثبوت ہے۔ بی ای ٹی ای ٹی امتحان کے نتائج میںگڑبڑی اور غلط سوال کے جواب میں امیدوار پٹنہ آرٹس کالج سے بہار بورڈ دفتر تک مظاہرہ اور مارچ میں شامل ہوکر رکن پارلیمنٹ پپو یادو نے ان کے ساتھ اپنی حمایت کا اظہار کیا اور حکومت سے ان کے مطالبات تسلیم کرنے کی اپیل کی۔پپو یادو نے کہا کہ امتحانات کاانعقاد کرنے والے ادارے میں ناکارہ لوگ بیٹھے ہوئے ہیں جنہیں نہ صحیح معلومات ہے اور نہ ہی نصاب کی پوری جانکاری۔ یہ لوگ غلط سوالات سےٹ کرنے کے ساتھ ہی غلط جوابی کاپی بھی جاری کردیتے ہیں۔ اس کا خمیازہ طلبا کو بھگتنا پڑتا ہے۔ انہوںنے کہا کہ اس نظام سے ناراض لوگ جب سڑک پر اترتے ہیں تو پولس ان پر لاٹھیاں برساتی ہیں اور ان سے بدسلوکی کرتی ہے۔ انہوںنے کہا کہ بہار کے بدحال تعلیمی نظام کے خلاف جن ادھیکار پارٹی تحریک چلائے گی اور تعلیم کے نام پرجاری لوٹ کھسوٹ کی مخالفت کرے گی۔

About the author

Taasir Newspaper