بہار میں تعلیمی اصلاح کے لئے مشترکہ کوشش ضروری:کشواہا

0
45
PATNA GANDHI MAIDAN MEN SIKSHA SAMMELAN KO SAMBODHIT KERTE UNION MINISTER UPENDRA KUSWAHA

15اکتوبر(تاثیر بیورو): راشٹریہ لوک سمپتا پارٹی کے زیراہتمام اتوارکو پٹنہ کے گاندھی میدان میں شکچھا سدھار سنکلپ مہاسمیلن کاانعقاد کیا گیا جس میں پارٹی کے قومی صدر اور مرکزی وزیر مملکت برائے فروغ انسانی وسائل اوپندرکشواہاکو وزیراعلیٰ بنانے کا عزم ظاہرکیاگیا۔اس موقع پر کشواہا نے کہا کہ تعلیم کے بغیر ترقی ممکن نہیں ہے۔ اس کے باوجود ریاست میں گذشتہ 37برسوں سے تعلیمی معیار میں گراوٹ کا سلسلہ جاری ہے۔انہوں نے کہاکہ حکومت کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے بہارمیں تعلیم کا براحال ہے۔ تعلیم کے ساتھ کھلواڑ کے نتیجے میں تین تین نسلیں برباد ہوچکی ہیں۔ اس نقصان کی تلافی تو ممکن نہیں ہے مگر آگے ہونے والے نقصانات کو روکا ضرور جا سکتا ہے۔ مرکزی وزیر نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ تعلیم میں بہتری کے لئے اپنی طرف سے جو بھی کرسکتے ہیں کریں۔ کشواہانے کہا کہ تعلیم میں گراوٹ سے حکومت میں بیٹھے لوگوں کواتنانقصان نہیں ہوگا جتنا عام لوگوں کو۔ صرف حکومت کے بھروسے تعلیمی میدان میں بہتری نہیں لائی جاسکتی ہے۔ اس کے لئے سماج کو بیداربھی ہونا ہوگا اورآگے بھی آناہوگا۔انہوں نے کہاکہ 27سال بعد مرکز اورریاست میں این ڈی اے کی حکومت ہے۔ اس کا فائدہ اٹھانا چاہئے۔ کشواہا نے کہاکہ ہم اچھائی کا ساتھ دینے میں کبھی پیچھے نہیں رہے۔ حکومت میں نہ رہنے کے باوجود ہم نے شراب بندی کی حمایت کی اوراب ہم وزیراعلیٰ نتیش کمارکے جہیز اور کم عمری کی شادی کے خلاف مہم کی بھی حمایت کررہے ہیں۔ ہماری پارٹی بھی تعلیم میں اصلاح کے لئے جنتادل یو سے مدد لے گی۔ انہوں نے کہا کہ غیرمالی تعلیمی پالیسی کو بلاتاخیر ختم کرنا چاہئے۔ ان ٹرینڈ اساتذہ کو نوکری سے ہٹایا نہیں جانا چاہئے لیکن انہیں تدریسی کاموں سے آزاد کردینا چاہئے۔