اردو | हिन्दी | English
69 Views
Uttar Pradesh

سابق نائب صدر جمہورےہ ہند حامد انصاری کی موجودگی مےںسےد حامد فاﺅنڈیشن کے قےام کی تقرےب

4+4
Written by Taasir Newspaper

علی گڑھ ۹اکتوبر(پریس ریلیز)انڈےا انٹرنےشنل سےنٹر نئی دہلی مےںمورخہ ۸اکتوبر ۷۱۰۲ءکو اےک نمائندہ تقرےب مےں سےّد حامد فاﺅنڈیشن کا قےام عمل مےں آےا ۔ جناب حامد انصاری صاحب سابق نائب صدرجمہوریہ ہند اس پروگرام کے خصوصی مہمان تھے اور جسٹس راجندرسچر نے صدارت کی ۔ جناب رضی خان آفرےدی کی تلاوت سے پروگرام کا آغاز ہوا ۔ خواجہ محمد شاہد سابق وائس چانسلر مولانا آزادنیشنل اردو ےونےورسٹی، حیدر آباد جو خود بھی اس پروگرام مےں مقرر تھے نظامت کے فرائض انجام دئے۔ مقررےن مےں صدر اور مہمان خصوصی کے علاوہ فاﺅنڈےشن کے ذمہ دارا ن امان اللہ خاں ، ڈاکٹر سےّد فاروق ، ڈاکٹر عاصم رضوی ، ڈاکٹر ظفر محمود، نسیم احمد وغےرہ ڈائس جلوہ افروز تھے۔جناب حامد انصاری صاحب نے خاص طور پر اس بات کا ذکر کےا کہ اعلیٰ تعلےم کے مراکز بنانے سے پہلے ےہ ضروری ہے کہ ابتدائی تعلےم کی طرف توجہ دی جائے اور خواتےن کو بھی برابرکادرجہ دےا جائے جےسا کہ علی گڑھ مسلم ےونےورسٹی کے قےام کے وقت ہی محسوس کےا گےا تھاکہ ابتدائی تعلےم اور خواتےن کو بھی برابرکادرجہ دےا جائے مگر یہ اےجنڈا آج بھی جوں کا توں ہے۔ ملّت اسلامےہ ہند خود اس کمی کی ذمہ دار ہے۔ پروگرام کے شروع مےں جناب امان اللہ خان جو فاﺅ نڈےشن کے ذمہ دار بھی ہےں حاضرےن کو استقبالےہ دےتے ہوئے فاﺅنڈےشن کے قےام کے پس منظرسے آگاہ کےا اور غرض ونماےت بےان کی جو سےّد حامد صاحب کا مشن تھا اسکو آگے بڑھانا ہے انھوں نے دو دہائےوں پر مشتمل سید حامد سے اپنی رفاقت کا حوالہ دیتے ہوئے بتاےا کہ اےک طوےل مدّت وہ حامد صاحب کے ساتھ رہے ہےں اور ان کی ےادےں بھی ہم لوگوں کی سرگرمےوں مےں مشعل راہ ہونگی اور سےّد حامد فاﺅنڈےشن حامد صاحب کے مشن کو جاری رکھے گا۔ہمالےہ ڈرگس کے ڈائرےکٹر ڈاکٹر سےّد فاروق صاحب نے فرماےا کہ حامد صاحب کے ساتھ اکثر وبےشتر چھوٹے چھوٹے مدارس و اسکولوں مےں بچوں و اساتذہ کی تعلےمی کارکردگےوں کا جائزہ لےنے کا موقع ملا۔ وہ بظاہر ہر چھوٹی چھوٹی نظرآنے والی چےزوں کا بڑی گہرائی سے جائزہ لے کراساتذہ کو بتاتے تھے کہ بچوں مےں تعلےم کے تئےں دلچسپی پےدا کرنے اور ان کے تعلےمی معےار کو پڑھانے اور انکھارنے کے لئے ےہ چےزےںضروری ہےں۔مشہور معالج ڈاکٹر عاصم رضوی نے سےّد حامد مرحوم کو اےسا نبض شناس بتاےا جو امّتِ مسلمہ کے رنج و مصائب کا مداوا کے لئے اپنا سب کچھ نچھاور کرنے کو تےار رہتے تھے۔ آپ نے فرماےا کہ مرحوم نے اپنے دورِوائس چانسےلری مےںےونےورسٹی کو بہتر بنانے کے لئے جو خطوط متعےن کئے تھے اس پر چل کر ےونےورسٹی اےک اعلی تعلےمی ادارہ بن پائی ہے۔زکوة فاﺅنڈےشن آف انڈےا کے صدر محترم ظفر محمود صاحب نے سےّد حامد صاحب کے ساتھ وابستہ ےادوں کا تذکرہ کرتے ہوئے مشالےں دے کر ثابت کےا کہ وہ واقعتا ملّت کے تئےں بے انتہامخلص تھے ۔وہ نام ونمود کی شہرت سے بے غرض ہو کر کام کرتے تھے جن سے ملّت کو ہر ممکن فائدہ پہونچ سکے۔علی گڑھ مسلم ےونےورسٹی کے سابق وائس چانسلر اور نےشنل ما ئےنارےٹی کمےشن کے چےرمےن نسےم احمد نے فرماےا کہ خاص طور پر مسلمان سےّد حامد صاحب کی خدمات کو نہےں بھولےںگے۔ سےّدحامد فاﺅنڈےشن کا قےام ان کے مشن کو آگے بڑھانے میں اہم رول ادا کرے گا۔جسٹس راجندر سچر صاحب نے فرماےا کہ سےّد حامد صاحب سچر کمےٹی مےں شامل ہونے سے کافی پہلے سے وہ ان کے ربط مےں تھے ۔ بابری مسجد کی شہادت کے افسوس ناک واقعہ کے تناظر مےں وہ سےّد حامد صاحب کے ساتھ تبادلہ¿ خےال کرتے رہے۔ سچر کمےٹی میں شامل ہو نے کے بعد سےّد حامد صاحب نے بہت ہی اخلاص کے ساتھ کمےٹی کے کاموں مےں شامل رہے۔ اپنی اُمےد ظاہر کرتے ہوئے سچر صاحب نے فرماےا کہ ان کے دوست و احباب ان کے اعلی مشن کو جاری رکھیں گے اور ےہ سےّد حامد صاحب کے لئے سب سے بہتر خراجِ تحسےن ہوگا۔ایڈوکیٹ اسلم احمد نے اظہار تشکر پیش کیا۔

About the author

Taasir Newspaper