مدد ملنی چاہئے، خصوصی ریاست کادرجہ ضروری نہیں:آر سی پی سنگھ

0
18

ویشالی 09اکتوبر (تاثیر بیورو): جدیو رہنما آر سی پی سنگھ نے ایک بڑا بیان دیا ہے۔ جس میںکہا گیا ہے کہ اگر خصوصی ریاست کا درجہ ملے بغیر بھی کچھ خصوصی سہولیات ملیں تو پارٹی ریاست کے خصوصی درجہ کامطالبہ چھوڑ دے گی۔ راجیہ سبھا میں پارٹی کے رہنما اورنتیش کمار کے بے حد قریبی مانے جانے والے آر سی پی سنگھ نے بے حد صاف گوئی سے یہ اعتراف کیا ہے کہ حالات بدل گئے ہیں اور بدلے حالات میں جدیو خصوصی درجہ کی اپنی مانگ سے سمجھوتہ کرنے کیلئے تیار ہے۔ ایک وقت تھا جب بہار میں نتیش کمار کی پارٹی جدیو میں بہار کے خصوصی ریاست کے درجے کیلئے دہلی کے رام لیلا میدان میں ریلی کرکے مرکزی حکومت کو یہ واضح اشارہ دیا تھا کہ خصوصی ریاست کے درجے سے کم پر سمجھوتہ نہیں ہوگا۔ ایک وقت وہ بھی آیا جب خود نتیش کمار نے کہا کہ جو بھی پارٹی یااتحاد بہار کو خصوصی ریاست کا درجہ دے گی جدیو اس کے ساتھ رہے گا۔ لیکن اسے بدلے سیاسی حالات ہی کہیںگے کہ جدیو نے خصوصی ریاست کے درجے کے اپنے پرانے مطالبہ سے کنارہ کرلیا ہے۔ حاجی پور میں منعقد پارٹی کے ایک پروگرام میں پہنچے آر سی پی سنگھ نے کہا کہ پارٹی خصوصی ریاست کے درجے کی بجائے خصوصی سہولت بھی ملے تو اس کا استقبال کرے گی۔ ان کا کہنا ہے کہ حالات تھوڑے بدلے ہیں، مرکزی حکومت نے پہلے خصوصی ریاست کا درجہ دینے کا منصوبہ تھا اس میں تھوڑا بدلاﺅ آیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم لوگوں کا نشانہ کیا ہے؟ سرمایہ کاری ہو، صنعت کاری ہو ، زیادہ گرانٹ ملے اور حکومت اگر دوسرے توسط سے بھی دیتی ہے تو بھی ہم اس کا خیر مقدم کریںگے۔ ہم تو چاہیںگے کہ ہمیں فائدہ ملے ، ہم کو دے ،خواہ جیسے بھی ہو ،ہمیںملنا چاہئے۔ خصوصی ریاست کا درجہ دے یا کوئی اور انتظام کر کے دے۔ بے نامی ملکیت کے سلسلے میں گھرے لالو خاندان کی بے نامی املاک میں اسکول کھولے جانے کے سوال پر آر سی پی سنگھ نے کہا کہ حکومت قبل میں بھی بے نامی ملکیت ضبط کر اس میں اسکول کھول چکی ہے۔ ایسے میں آگے بھی ایسا ہو تو کسی کو تعجب نہیںہونا چاہئے۔