نامعلوم قاتلوں نے چاقو سے گلا ریت کر بے رحمی سے کیا قتل

0
13
Taasir Urdu News | Uploaded on 14-OCTOBER-2017

مہاراج گنج ،14 اکتوبر( نمائندہ ) بہار کے مہاراج گنج اسٹیشن کے پاس خون سے لت پت ایک لڑکا سڑک پر پڑا تھا۔ اس کے ساتھ موجود لڑکی لوگوں سے مدد مانگتی رہی ، لیکن کوئی آگے نہیں آیا۔ اس دوران کچھ لوگ پورے معاملے کا ویڈیو بناتے رہے ،بعد میں کسی طرح لڑکی لڑکے کو لے کر ہاسپٹل پہنچی لیکن تب تک اس کی موت ہوچکی تھی۔ مہاراج گنج اسٹیشن کے پاس نامعلوم قاتلوں نے 17 سال کے لڑکے کا گلا ریت کر قتل کردیا۔ مقتول کی پہچان گوپال گنج تھانہ علاقہ کے نیرج کمار کی شکل میں ہوئی ۔واقعہ کے وقت لڑکا اپنے رشتہ کی خالہ ارچنا کے ساتھ مہاراج گنج کے اندولی گاو¿ں میں دھرتی ماتا مندر میں پوجا کرنے کے لئے آیا تھا اور دونوں اسٹیشن پر ٹرین کا انتظار کررہے تھے۔ اسی دوران نیرج رفع حاجت کرنے گیا اور جہاں پہلے سے ہی گھات لگائے بائک پر سوار دو نامعلوم قاتلوں نے چاقو سے بے رحمی سے اس کا گلا ریت دیا۔ واقعہ کے بعد لہو لہان نیرج واپس اسٹیشن آیا اور وہیں اس نے دم توڑ دیا۔ واردات کو انجام دے کر بھاگ رہے نامعلوم بد معاشوں کو وہاں موجود لوگوں نے دوڑ کر پکڑنے کی بھی کوشش کی۔ لیکن دونوں بائک موقع پر ہی چھوڑ کر فرار ہوگئے۔ اطلاع کے بعد موقع پر پہنچے مہاراج گنج کے پولس افسر ارون کمار منڈل نے پورے معاملے کی جانکاری لی ۔ گفتگو کرتے لوگوں کی مانیںتو لڑکی کی شادی کسی اشوک نام کے لڑکے کے ساتھ طے تھی اس کی فیملی کے لوگ اس کی تیاری میں لگے تھے۔ پولس کے مطابق نیرج ارچنا کے ساتھ موجود تھا اور شاید قاتلوں کو یہ پسند نہیں تھا۔ بادی النظر میں معاملہ معاشقہ کا لگ رہا ہے ۔ ارچنانے اپنے بیان میں بتایا کہ جس وقت وہ مندر میں پوجا کے بعد پریکرما کررہی تھی ، اسی دوران ایک نقاب پوش وہاں پہنچ گیا ۔اپنا نام اشوک بتاتے ہوئے کہا گھوم لو وہ ڈر گئی اور پھر وہاں سے نیرج کو لے کر مہاراج گنج اسٹیشن پہنچ گئے۔ نیرج اپنے ماموں کے گھر رہ کر پڑھائی کررہا تھا۔ وہ انٹر پاس بھی کرچکا تھا۔ اس کے والد نول کشور کشواہا بیرون ملک میں رہتے ہیں ۔نول کشور کشواہا کا پورا خاندان گوپال گنج میں کرائے کے مکان میں رہتا ہے۔ وہ اپنے مامو کے گھر سے اپنے گھر گیا تھا ۔ بتایا جارہا ہے کہ جمعہ کو نیرج گھر سے بتاکر نکلا تھا کہ امتحان دینے جارہا ہے ۔ ادھر اس کی خالہ کی فیملی کی مانیں تو نیرج نے فون کر ارچنا کو بھی مہاراج گنج یہ کہہ کر بلالیا کہ کپڑا خریدنے جانا ہے۔