بہار

گینگ ریپ کے ملزم نے بتایا ، لڑکی دیکھتے ہی کیوں جگا تھا اس کے اندر کاحیوان

Written by Taasir Newspaper
Taasir Urdu News | Uploaded on 05-OCTOBER-2017

مظفر پور ، 5 اکتوبر ( نمائندہ ) مظفر پور گینگ ریپ معاملے میں ایک ملزم نے ایسا انکشاف کیا ہے جس سے پولیس کے ہوش اڑ ے ہوئے ہیں۔ گرفتار کئے گئے چار افراد میں سے ایک نے پوری سچائی کو پولس کے سامنے رکھا ۔ اس نے بتایا کہ وہ اکثر فحش ویڈیوز دیکھتا تھا جس سے اس کے دماغ میں گندی باتیں چلتی رہتی تھیں ۔ملزم نے بتایا کہ اس دن بھی اس پردرندگی چھائی تھی۔ اس نے میلے سے لوٹتے وقت لڑکی کو اکیلی دیکھ پہلے اس سے چھیڑ خانی کی اور پھر اسے زبردستی کھیت میں لے گیا اور فحش فلموں کی ہی طرح دوستوں کے ساتھ مل کر اس کا ریپ کیا۔ اس گینگ ریپ کے دیگر تینوں ملزموں روشن ، گگن اور سچن نے بھی گنا ہ قبول کیا ہے۔ پولس نے کٹرا گینگ ریپ اسکینڈل میں واقعہ والے دن کے لڑکی کے کپڑے کو بھی ضبط کر لیا گیا ہے۔ چوتھے ملزم روشن کمار کو پولس ٹیم نے منگل کی دوپہر قریب 12 بجے اہیاپور تھانہ کے زیرو مائل چوک کے پاس سے گرفتار کیا تھا۔ حالانکہ وہ کورٹ میں سرینڈر کرنے جا رہاتھا۔ روشن شادی شدہ ہے اور ایک بچے کا باپ ہے۔ گرفتاری کے بعد، ملزموں کے حوصلے اب بھی بلند ہیں ۔ ان کی طرف سے ایک نوجوان کے ایک رشتہ دار کو صلح کے لئے دھمکی ملی ہے۔ پنچایت کرنے والے نامزد تین ملزموں کے آدمی کی طرف سے دھمکی دی گئی ہے۔ حالانکہ اس کی پولس سے شکایت نہیں کی گئیہے ۔گینگ ریپ اسکینڈل کی تحقیقات کے لئے ڈی ایس پی ممتا کلیانی کی قیادت میں چار رکنی ٹیم مظفر پور پہنچی۔ ٹیم نے خاتون انسپکٹر جیوتی کماری کے سامنے لڑکی کا بیان لیاگیا ۔ لڑکی کے ان کپڑوں کو ٹیم نے قبضے میں لے لیا، جسے وہ اس واقعے کے دوران پہنی تھی ۔ لڑکی نے جانچ ٹیم کو جسم پر ناخن کے نشان بھی بتائے ۔

About the author

Taasir Newspaper