آج کا شماره | اردو | हिन्दी | English
Sports

بھارت ۔پاک ہائی وولٹیج ہاکی مقابلہ آج

1
Written by Taasir Newspaper

ڈھاکہ، 14اکتوبر (یو این آئی) ہندوستانی مردوں کی ہاکی ٹیم اتوار کو یہاں ایشیا کپ 2017کے طویل عرصے کے منتظر ہائی وولٹیج مقابلے میں اپنے دیرینہ حریف پاکستان کے خلاف جیت حاصل کرنے کے مقصد سے اترے گی۔اس برس ہندوستان اور پاکستان کے درمیان لندن میں ہاکی ورلڈ لیگ سیمی فائنل میں بہترین میچ دیکھنے کو ملا تھا اور اب ہاکی شائقین کے لئے یہ دوسرا موقع ہے جب انہیں ایک بار پھر دیرینہ حریف ٹیموں کے مابین کانٹے مقابلہ دیکھنے کو ملے گا۔طویل عرصے کے انتظار والے میچ کے سلسلے میں ہندوستانی کپتان من پریت سنگھ نے فتح حاصل کرنے کی یقینی دہانی کرائی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ لندن میں جو ہوا تھا وہ ہمارے لئے اب تاریخ بن چکا ہے ۔ ہم نے وہاں بہت اچھی کارکردگی کا مظا ہرہ کیا تھا۔ اسی طرح کی کارکردگی کا مظاہرہ دوہبار کر نے کے لئے ہمیں کھیل پر توجہ دینی ہوگی۔ لندن میں ہوئے ورلڈ لیگ سیمی فائنل میچ میں ہندوستان نے پاکستان کو پول مرحلے میں 7۔1 سے شکست دی تھی جبکہ کلاسی فکیشن میچ میں دیرینہ حریف کو 6۔1سے ہرایا تھا۔حالانکہ من پریت نے مانا کہ ٹیم کو گزشتہ کارکردگی یا نتائج کے بارے میں نہیں سوچنا چاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ ہماری ٹیم کی توجہ فہرست کے اپنے پول میں ٹاپ پر رہنے پر ہے اور اس کے لئے ہمیں پاکستان کے خلاف ہر شعبے میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنا ہوگا۔ہندوستانی ہاکی ٹیم ایشیا کپ کا خطاب جیتنے کی مضبوط دعویداروں میں شامل ہے اور فی الحال دو میچوں میں دونوں ٹیمیں جیت کر چھ پوائنٹ کے ساتھ ٹاپ پر ہے ۔ ہندوستان نے ٹورنامنٹ میں اپنے پول اے میں جاپان کو 5۔1 سے اور بنگلہ دی کو 7۔0 س ہرایا ہے ۔ 25سالہ مڈ فیلڈر نے کہا کہ ہاکی کے پرستاروں کے لئے ہندوستان اور پاکستان کا میچ ہمیشہ اہم ہوتا ہے لیکن ہم اس ٹیم کو دوسری حریف ٹیموں کی طرح ہی دیکھتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہم اپنی حکمت عملی پر توجہ مرکوز کرکے کھیلیں گے اور کوشش کریں گے کہ اچھا آغاز کریں نیز شروعات میں گول نہ دیں۔ ہندوستانی ٹیم کے فارورڈ لائن نے اب تک اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے لیکن اسے پنالٹی کارنر کو گول میں بدلنے میں ہمیشہ ہی دقت کا سامنا کرنا پڑا ہے ۔من پریت نے اس بارے میں کہا کہ ہمیں نہیں لگتا کہ ہمارا پنالٹی کارنر خراب ہے لیکن ہم نے کئی مواقع گنوائے ہیں اور ہمیں بنگلہ دیش کو پنالٹی کارنر پر دفاعی طریقے سے کھیلنے کے لئے بھی کریڈٹ دینا ہوگا۔اس دوران پاکستانی ٹیم کے کپتان محمد عرفان نے دعوی کیا ہے کہ ان کی ٹیم لنڈن جیسی غلطی اتوار کو نہیں دہرائے گی اور اب وہ پہلے سے بہتر ٹیم بن گئی ہے ۔ 27 سالہ عرفان نے کہا کہ لندن میں جو ہوا، ہماری حالت اب اس سے مختلف ہے ۔ ہمیں پتہ ہے کہ ہم نے لندن میں ہندوستان سے لگاتار میچ ہارے لیکن اب ہماری ٹیم مختلف ہے جس میں پاکستان کے کئی سینئر کھلاڑی بھی واپس آرہے ہیں۔پاکستان ہاکی کپتان نے کہا کہ ہمارا پورا منیجمنٹ بدل گیا ہے اور ہمیں یقین ہے کہ ہندوستان کے خلاف ہم چیلنجنگ کارکردگی کا مظاہرہ کریں گے تاکہ دنیا بھر میں جتنے بھی ہاکی کے شائقین ہیں انہیں اچھا اور برابر ی کا مقابلہ دیکھنے کو ملے ۔ستائس سالہ عرفان کے دعو ے کو سرسری نہیں لیا جاسکتا کیونکہ پاکستانی ٹیم نے ٹورنامنٹ میں بہترین شروعات کی ہے اور میزبان بنگلہ دیش کو یکطرفہ طور پر 7۔0 سے شکست دی ہے ۔ حالانکہ جاپان سے انہوں نے 2۔2 سے ڈرا کھیلا ہے ۔پاکستان کے لئے ہندوستان کے خلاف میچ اب سپر ۔4 مرحلے میں پہنچنے کے لحاظ سے بھی اہم ہے ۔ کپتا ن نے کہا کہ ہمارے لئے ہندوستان کے خلاف میچ ‘کرو یا مرو’ کا ہے کیونکہ پھر بنگلہ دیش اور جاپان کے درمیان میچ کے نتائج سے یہ دونوں ٹیمیں آگے بڑھ جائیں گی اور ہم مشکل میں آجائیں گے ۔ عرفان نے ساتھ ہی تسلیم کیا کہ جاپان کے خلاف گزشتہ میچ میں ان کی پاکستان ٹیم کے فارورڈوں نے کافی غلطیاں کی تھیں۔ لیکن انہوں نے امید ظاہر کی کہ ہندوستان کے خلاف ایسی غلطیاں نہیں ہوں گی۔ عرفان نے کہا کہ ہم نے گزشتہ میچ کی ویڈیو دیکھی ہیں اور ہمیں پتہ ہے کہ ہم نے آسان موقعوں کو گنوایا تھا لیکن ہم ان غلطیوں کو ہندوستان کے خلاف بالکل نہیں دہرائیں گے ۔ ہندوستان مضبوط ٹیم ہے اور وہ حکمت عملی کے ساتھ کھیلتی ہے لیکن ہمیں اپنے ہر کھلاڑی کی انفرادی صلاحیت پر بھروسہ ہے ۔

About the author

Taasir Newspaper