دنیا بھر سے

شام کے تنازع پر ٹرمپ اور پوتن کا مشترکہ اعلامیہ

Profile photo of Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

ماسکو11نومبر (آئی این ایس انڈیا) امر یکہ اور روس کے صدور نے شام سے متعلق ایک مشترکہ اعلامیے کی منظوری دی ہے جس کے مطا بق اس بات پر اتفاق کیا گیا کہ “اس بحران کا کوئی فوجی حل نہیں ہے۔”ڈونلڈ ٹرمپ اور ولاد یمر پوتن نے اس بیان کی منظوری ویتنام میں ایشیا پیسیفک اکنامک کوآپریشن کے اجلاس کے موقع پر دی۔روسی حکام کے مطابق پوتن اور ٹرمپ نے اجلاس کے راہنما کے ساتھ گروپ فوٹو سے قبل گفتگو کی تھی۔وائٹ ہاو¿س کی طرف سے کر یملن کے اس اعلان کے بارے میں پوچھے گئے سوال کا فوری طور پر کوئی جواب سامنے نہیں آیا ۔بیان کے مطابق دونوں راہنماو¿ں نے شدت پسند تنظیم داعش کو فوری تباہ کرنے کی ضرورت کا اعادہ کرتے ہوئے اتفاق کیا کہ “شام میں امر یکی اور روسی فورسز کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے دونوں ملکوں کے مابین فوجی مواصلاتی رابطے کو برقرار رکھا جائے۔”ٹرمپ اور پوتن نے شام کی خودمختاری اور آزادی کے احترام کا عزم ظاہر کر تے ہوئے شام کے تنازع کے فریقین پر زور دیا کہ مسئلے کا حل جنیوا مذاکرات کے ذریعے تلاش کیا جائے۔یہ بیان روس کی وزارت خارجہ کی طر ف سے جاری کیا گیا اور اس کے بقول یہ اعلامیہ روس اور امریکہ کے ماہرین نے تیار کیا تھا۔
گو کہ وائٹ ہاو¿س نے کہا تھا کہ دونوں راہنماو¿ں کے درمیان کوئی ملاقات طے نہیں ہے لیکن ٹرمپ اور پوتن نے اجلاس کے اعشایے کے موقع پر مصافحہ کیا اور رسمی گفتگو بھی کی تھی۔

About the author

Profile photo of Taasir Newspaper

Taasir Newspaper

Skip to toolbar