اردو | हिन्दी | English
64 Views
Sports

ہیٹ ٹرک بہترین فارم نہیں:اسٹارک

stark
Written by Taasir Newspaper

برسبین، 13 نومبر (یو این آئی) آسٹریلیا کے تیز گیند باز مشل اسٹارک نے کہا ہے کہ فرسٹ کلاس کے ایک میچ میں دو بار حاصل کی گئی ہیٹ ٹرک ان کی اعلی درجے کی فارم نہیں ہے اور وہ اس سے بھی بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرنا چاہتے ہیں۔ اسٹارک نے پچھلے ہفتے شیفیلڈ شیلڈ میں یہ کارنامہ انجام دیا تھا اور 23 نومبر سے شروع ہونے والی ایشیز سیریز کے لئے انگلینڈ کو خطرے کا اشارہ دیا تھا۔ اسٹارک نے شیفیلڈ شیلڈ ٹورنامنٹ میں نیو سا¶تھ ویلس کی جانب سے کھیلتے ہوئے ویسٹرن آسٹریلیا کے خلاف میچ کی دونوں اننگز میں ہیٹ ٹرک کرکے تاریخ رقم کی تھی۔ گزشتہ 39 برسوں میں ایک فرسٹ کلاس میچ میں دو ہیٹ ٹرک کرنے والے وہ پہلے گیند باز بنے تھے ۔ اسٹارک نے کہا کہ ہیٹ ٹرک میری بہترین فارم نہیں ہے ۔ میں اس سے بھی بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرنا چاہتا ہوں۔ اس میچ میں جوش ہیزل وڈ نے چھ وکٹ لئے تھے ۔ بلے باز دبا¶ میں تھے جس سے مجھے ہیٹ ٹرک بنانے میں مدد ملی۔ اس کا کریڈٹ ان کو بھی جاتا ہے ۔ انہوں نے اچھی لائن لینتھ سے گیند بازی کی اور مجھے اور پیٹ کمنس کو دوسرے سرے سے جارحانہ گیند بازی کرنے کا موقع دیا۔ بائیں ہاتھ کے تیز گیند باز نے میچ میں کل سات وکٹ حاصل کئے ۔ انہوں نے پہلی اننگز میں 20 رن دیکر چار وکٹ لئے ۔ اسٹارک نے 67 ویں اوور کی چوتھی، پانچویں اور چھٹی گیند پر بالترتیب جیسن بہرنفورڈ، ڈیوڈ موڈی اور سائمن میکن کو آ¶ٹ کرکے ہیٹ ٹرک پوری کی۔ 27 سالہ اسٹارک نے کہا کہ میں نے صحیح وقت پر ہیٹ ٹرک کی۔ میں نے ویسٹرن آسٹریلیا کے خلاف کافی ساری گیندیں صحیح سمت میں پھینکیں جس کا مجھے فائدہ ملا۔ لیکن جوش نے ان کے ٹاپ آرڈر کو ہلاکر رکھ دیا۔ مجھے لگتا ہے کہ ایک ٹیم کے طور پر ہم نے کافی اچھی گیند بازی کی اور میں چاہتا ہوں کہ اپنے اس فارم کو ایشیز کے پہلے ٹسٹ میں جاری رکھوں۔ اسٹارک نے آئندہ ایشیز سیریز کی تیاریوں کے سلسلے میں کہا کہ بھلے ہی گھریلو حالات کا ہمیں فائدہ ملے لیکن ہمارے لئے یہ اہم ہے کہ ہم صحیح سمت میں گیند بازی کریں۔ اس وکٹ پر ہمارا ریکارڈ اچھا ہے ۔ ہم نے ابھی تک پچ کا معائنہ نہیں کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم ایک ٹیم کے طور پر پچ کا معائنہ کریں گے اور پھر یہاں کے حالات کا جائزہ لیں گے ۔ حالانکہ جہاں تک مجھے پتہ ہے کہ اس وکٹ پر اگر آپ خراب گیند بازی کریں گے تو آپ کو اس کا خمیازہ بھگتنا پڑے گا اور اگر صبر سے بلے بازی کرتے ہیں تو آپ کو اس کا فائدہ ضرور ملے گا۔ آسٹریلیا کے لئے حال ہی میں ٹسٹ ریکارڈ بھلے ہی ملا جلا رہا ہو لیکن اسے ایشیز کا مضبوط دعویدار مانا جارہا ہے ۔ کنگارو¶ں نے پچھلی بار 14۔2013 کی ایشیز سیزیز میں اپنے گھر میں انگلینڈ کو 5۔0 سے شکست دی تھی۔ اس سیریز میں تیز گیند باز مشل جانسن نے مجموعی طور پر 37 وکٹ لئے تھے ۔ اسٹارک کا ماننا ہے کہ وہ بھی جانسن جیسی کارکردگی دہرانا چاہتے ہیں۔ تیز گیند باز نے کہا کہ ہم میں سے کوئی بھی گیند باز جانسن جیسی کارکردگی کا مظاہرہ کرتا ہے تو وہ غیر معمولی ہوگا لیکن ایشیز سیریز جیتنے کے لئے ہم سب کو متحد ہوکر اپنی بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرنا ہوگا۔ ہمارے پاس کافی جارح گیند باز موجود ہیں اور گھریلو حالات ہمارے موافق ہونے کے سبب ہمیں اس کا فائدہ مل سکتا ہے ۔ امید ہے کہ ایشیز میں متحد ہوکر ہم شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کریں گے ۔

About the author

Taasir Newspaper