جان لےوا مہنگائی :ہائے رے ہائے ےہ بھگوا سرکار ، عوام گھاس کھائے ، ےا پھانسی لگائے : حاجی فہےم صدےقی

0
53

لکھنو¿: 28 دسمبر (پریس ریلیز)راشٹرےہ بھاگےدار ی آندولن نے اپنی معاون تنظےموں کے ساتھ بڑھتی ہو ئی جان لےوا مہنگائی کی مخالفت مےں مہنگائی کا پتلا پرےس کلب کے گےٹ کے سامنے دن مےں ساڑھے تےن بجے پتلا نذر آتش کےا گےا ۔ جس مےں خصوصی طور سے انڈےن نےشنل لےگ کے قومی صدر حاجی فہےم صدےقی ، سماجک کارکن محمد آفاق ، مسلم فورم کے رےاستی صدر ڈاکٹر آفاق احمد ، قمر سےتا پوری ، ناگرک ادھےکار پرےشد کے صدر محمد شعےب ، شاہ رخ خان صحافی وغےرہ مو جود تھے ۔ راشٹرےہ بھاگےداری آندولن کے قومی کنوےنر پی سی کر ےل نے کہا کہ آج ملک مےں مہنگائی اپنے عروج پر ہے ۔ پورا ملک مہنگائی کی مار سے جو جھ رہا ہے ۔ اس حکومت نے تو غرےبوں کی تھالی سے دال اور روٹی بھی چھےن لی ۔ آج ملک مےں کروڑوں لوگ رات کو بھوکے سو جاتے ہےں ۔ لےکن ملک کے پردھان سےوک جس نے سب کا ساتھ سب کی تر قی کانعرہ دےاتھا ۔ غرےبوں کے کھاتہ مےں 15&15 لاکھ روپئے دےنے کا وعدہ کےاتھا ۔ جو بعد مےں اےک جملہ کہہ کر ٹال دےاگےا ۔ بی جے پی کے پرچار مےں اپنا وقت بتاتے ہےں اےسالگتا ہے کہ وہ وزےراعظم نہےں وہ بی جے پی کے تر جمان ےا پرچار وزےر ہےں ۔ کسان خودکشی کر رہا ہے ۔ اس کو حکومت کی طرف سے پورا معاوضہ نہےں مل رہا ہے ۔ اےسی قاتل حکومت کو بدلنے کے لئے تمام چھوٹی بڑی پارٹےوں کو متحد ہونا ہوگا۔تبھی اس مہنگائی سے آزادی مل سکتی ہے ۔ اسی ضمن مےں حاجی فہےم صدےقی اور محمد آفاق نے کہا کہ سال 2014 مےں رسوئی گےس سلنڈر 355 روپئے تھا ۔ اپوزےشن مےں بےٹھی بی جے پی کو بہت مہنگا لگ رہا تھا ۔ آج قرےب آٹھ سو روپئے کا ہے ۔ توسارے بھاجپائےو ں اور مودی بھکتوں کے منھ سلے ہو ئے ہےں ۔ دال 200 روپئے کلو تک پہونچ گئی تھی ۔ ٹماٹر اسی لکھنو¿ مےں 80 سے 100 روپئے کلو عوام کو خرےدنا پڑا ۔ دہلی وغےرہ مےں تو 180 سے 200 روپئے کلو تک ٹماٹر فروخت ہوا ۔ آج بھی پےاز کی قےمت آسمان چھو رہی ہے ۔ پٹرول جو کہ انٹر نےشنل مارکےٹ مےں رےٹ گرا ہوا ہے ۔ لےکن ہمارے ہندوستان مےں پٹرول کے دام بڑھتے ہی جارہے ہےں ۔ رےل کے کراےہ مےں برابر اضافہ ہو تا جارہا ہے ۔ جو عوام پر بوجھ پر ہے ۔ ےہ عوام کے مفاد کی بات کرنے والے عوام کا ہی خون چوس رہے ہےں ۔ عوام بھی سب دےکھ رہی ہے ۔ سمجھ رہی ہے ۔ وقت آنے پر اس کا جواب ضروردے گی ۔ مہنگائی کے پتلا نذر آتش مےں شلو خان ، محمد انس ، سماجی خدمت گار مشےر خان ، نرےندر ےادو ، انکت گوتم ، اندر پرکاش وےد وغےرہ سمےت کثےرتعداد مےں لوگ موجود تھے ۔ سب نے مہنگائی مر دآباد ، گھوٹالہ مرد آباد کے نعرے لگائے ۔