یونیورسٹی کی تاریخی عمارت سر سید ہال سے’علی گڑھ بچوں کا گھر‘ کاایجوکیشنل ٹور جنوبی ہندوستان کے لئے روانہ

0
54

شعلی گڑھ29دسمبر(پریس ریلیز) حسبِ سابق اِس سال بھی ’ علی گڑھ بچوں کا گھر‘ کا ایجوکیشنل ٹورآج بعد نمازِ جمعہ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی تاریخ عمارت سر سید ہال سے آگرہ ہوتے حیدر آباد، چنئی اور بنگلور کے لئے روانہ ہوگیا-روانگی سے قبل ادارہ کے چیرمین امان اللہ خان نے بچوںکو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ سیر و سیاحت حصولِ علم کا ایک بہتر وسیلہ ہے -اس کی ترغیب اللہ تعالیٰ نے قرآن مجید کی ایک آیت میں بھی دی ہے تاکہ انسان اللہ تعالیٰ کی زمین کی سیر و سیاحت کر کے اس کی قدرت وربوبیت کا اعتراف کرے -لہٰذا ہر طالب علم کو سیر و سیاحت سے دلچسپی رکھنی چاہئے اور اُن مقامات کی سیر کرنے کی کوشش کرنی چاہئے جن کی تاریخی حیثیت ہے یا اُسے قدرت نے اتنا قابلِ دید بنایا ہے کہ جسے دیکھ کر دل و دماغ کو سکون و توانائی ملتی ہے-واضح ہوکہ’ علی گڑھ بچوں کا گھر‘ جو کہ ایک دارالایتام ہے جس کے ذریعہ دو سو پچاس سے زائد یتیم و نادار بچوں کی مکمل کفالت کی جارہی ہے اپنے دیگر تعلیمی اور ثقافتی پروگراموںکے علاوہ ہر سال ایجوکیشنل ٹور پروگرام کے تحت بچوں کو ہندوستان کے مختلف تاریخی اور قابلِ دید مقامات کی سیر وسیاحت کے لئے بھیجا جاتا ہے تاکہ انہیں مختلف تہذیب و ثقافت سے روشناس ہونے کا موقع فراہم ہو اور مُلک میں ہو رہی سائنسی اور تعلیمی ترقی کا اپنی نظروں سے مشاہدہ کر سکیں-اس ٹور کی جہاں تعلیمی افادیت ہے وہیں’ علی گڑھ بچوں کا گھر‘ میںاس بات کا بھی خیال رکھا جاتا ہے کہ اِ س میں قیام پذیر یتیم بچوں کو کبھی احساسِ یتیمی نہ ہو -ادارہ ہر وہ ممکن کو شش کرتا ہے جو ایک اعلیٰ اور معیاری اسکول کے نظم وضبط میں شامل ہوتا ہے-ایجوکیشنل ٹور کو آرگنائز کرنے میں انیس احمد کی خاص دلچسپی اور تعاون حاصل رہتا ہے -اس تعلیمی ٹورکوادارہ کے چیر مین امان اللہ خان، سر سید ہال ساﺅتھ کے پرووسٹ پروفیسر بدر الدجیٰ خان، وقار الملک ہال کے پرووسٹ نسیم احمدخان اور علی گڑھ مسلم یونیورسٹی اسٹوڈینٹس یونین کے سکریٹری محمد فہد اور ڈاکٹر مسعود احمدنے دعاﺅں کے ساتھ ہری جھنڈی دکھاکریونیو رسٹی کی تاریخی عمارت سر سید ہال سے یونیورسٹی کی کئی معزز شخصیات اور سیکڑوں طلبا کی موجودگی میں راونہ کیا – اس تعلیمی ٹورکو روانہ کرتے وقت پروفیسر بدر الدجیٰ خان نے بچوں کو بڑی نصیحت آمیز باتیں بتائیں کہ دورانِ سفر کس طرح بچوں کو رہنااور کیسے پیش آنا چاہئے- محمد فہد نے بچو ں کو سفر کی دعا پڑھائی۔بچوں کا یہ قافلہ علی گڑھ سے بذریعہ بس آگرہ کے لئے روانہ ہوا ،وہاں سے تلنگانا اکسپریس کے ذریعہ حیدر آباد کے لئے روانہ ہواجہاں تاریخی و ثقافتی نوعیت کے حامل مقامات کی سیر و سیاحت کے بعدوہاں سے چنئی اور بنگلورکے مختلف شہروں کے تاریخی مقامات و آثار قدیمہ کی سیر کرتاہوا9جنوری کی صبح میں علی گڑھ واپس ہوگا-اس ٹور کی نگرانی کے فرائض ادارہ کے منیجر عبدالمنان اور محمد اسامہ انجام دے رہے ہیں-ہر شہر میںدورانِ قیام اس تعلیمی ٹور میں شامل بچوں کی میزبانی مختلف ملّی و فلاحی اداروں کے سربراہوں نے قبول کی ہے اُن کے لئے اللہ تعالیٰ سے اجرِ عظیم کی دعا ہے۔