آج کا شماره | اردو | हिन्दी | English
Bihar News

ڈاکٹر بھیم راو¿ امبیڈکر کی برسی پر مجسمے کی نقاب کشائی کی گئی

begu jayanti
Written by Taasir Newspaper

بلیا/ بیگوسرائے ، 06 دسمبر ( بی کے گلشن ) آئین ساز باباصاحب ڈاکٹر بھیم راو¿ امبیڈ کر کی 61 ویں برسی پر ان کے مجسمہ کے نقاب کشائی بلیا ایس ڈی او مسٹر بدری کشور چودھری اور بلیا سب ڈویزنل پولس افسر مسٹر رنجن کمار نے مشترکہ طور پر فیتہ کا ٹ کر گل پوشی کیا۔ وہیں افتتاحی تقریب میں بکھری کے اوپندر پاسوان ضلع تعلیمی افسر مسٹر شیام بابو رام نے کیا۔ اس موقع پر ایک شاندار پروگرام منعقد کیاگیا۔ جس کا افتتاح شمع روشن کر کیاگیا۔ پروگرام کی صدارت بلیا بلاک کے ترقیاتی افسر پروشوتم ترویدی نے کی ۔ وہیں مہمان خصوصی کی شکل میں ضلع تعلیمی افسر شیام بابو رام اور بکھری کے ایم ایل اے اوپندر پاسوان جی تھے ۔ وہیں مہمان اعزازی سابق ایم ایل اے شمش الضحیٰ، بلیا ویاپار منڈل صدر راکیش سنگھ ،ناو¿ کوٹھی بلاک کے بی ڈی او ، او ایس ڈی ،افسر بلیا اگزکٹیو جوڈیشیئل مجسٹریٹ محترمہ مینا ویاس موجود تھیں۔ پروگرام میں مقامی پرائیویٹ اور سرکاری اسکولوں کے طلبا و طالبات کے ذریعہ مختلف طرح کے ثقافتی پروگرام پیش کئے گئے ۔ جس میں ڈاکٹر بھیم راو¿ امبیڈ کر کے بتائے گئے راستے پر چلنے والے اکانکی ناٹک پیش کیا گیا اور جہیز مخالف ناٹک کا بھی مظاہرہ کیا گیااور بچے اور بچیوں کے توسط سے اس موقع پر رقص بھی پیش کیاگیا۔ پروگرام میں بلیا امبیڈ کر مشن کے تحت مہمان خصوصی کو اور مہمان اعزازی کو افتتاح کنندوں کو شال ،بوکے اور امبیڈ کر کی تصویر دے کر انہیں اعزاز سے نوازہ گیا۔ اجلاس کو خطاب کرتے ہوئے بکھری ایم ایل اے مسٹر اوپندر پاسوان نے کہا کہ ہمارے بابا بھیم راو¿ امبیڈ کر جب تعلیم حاصل کررہے تھے ، تو اس زمانے میں ملک میں دلتوں کے ساتھ چھوا چھوت کا رواج عام بات تھی ۔ چھوا چھوت کا عالم یہ تھا کہ دلت کی پرچھائی سے بھی لوگ پرہیز کرتے تھے ۔ تعلیم حاصل کرنے کے دوران ڈاکٹر بھیم راو¿ امبیڈ کر کو اسکول کے چپراسیوں کے ذریعہ چلوں میں پانی پلا یا جاتا تھا۔ انہیں پانی پینے کے لئے کوئی برتن نہیں دیا جاتا تھا۔ کیونکہ وہ اچھوت مانے جاتے تھے ۔ لیکن موجودہ حالات میں اس رسم کو تعلیم یافتہ ہونے کے بعد ختم کردیاگیا ہے۔ وہیں دلت خاندان والوں کو ریزرویشن بھی دیا گیا ہے۔ ہمارے بھیم راو¿ امبیڈکر ملک تو کیا بیرو ن ملک میں بھی انعام یافتہ ہوکر آئے ہیں اور انہوں نے دیکھا کہ غیر ملکوں میں امبیڈ کر کے ساتھ ہوئے چھوا چھوت نام کا ضابطہ و قانون نہیں تھا۔ انہیں وہاں بھی عزت کے ساتھ اعزاز سے نوازہ گیا۔ آئین ساز بھیم راو¿ امبیڈکر کا بلیا میں مجسمہ قائم ہونے سے لوگوں میں کافی خوشی پائی جارہی ہے ۔

About the author

Taasir Newspaper