آج کا شماره | اردو | हिन्दी | English
Bihar News

انٹر امتحان فیس میں اضافہ کے خلاف اے آئی ایس ایف کا احتجاجی مارچ

khagaria wirodh
Written by Taasir Newspaper

کھگڑیا، 07 دسمبر ( ارو ن ورما ) انٹر اکزام فارم کی فیس میں اضافہ اور تعلیم کی بد حالی کے خلاف کھگڑیا میں طلبا نے احتجاجی مارچ نکالا ۔ آل انڈیااسٹوڈنٹس فیڈریشن کے ریاست گیر پروگرا م کے تحت طلبا نے کوسی کالج کے مین گیٹ کے سامنے بہار کے وزیر تعلیم کرش نند ن پرساد ورما کا پتلا نذ ر آتش کیا احتجاجی مارچ کی قیادت ضلع سکریٹری کیشو کمار نے کیا۔ سبھی طلبا اپنی مانگوں کی تختی ہاتھ میں لئے بہار کے خستہ حال تعلیمی نظام کو درست کرو ۔ انٹر امتحان فارم کی فیس میں اضافہ واپس لو۔ اسکول اور کالج میں ٹیچروں کا انتظام جلد کرو،و غیرہ نعروں کی گونج کے ساتھ کوسی کالج کھگڑیا کے مین گیٹ کے سامنے پہنچا۔ فلک شگاف نعروں کے درمیان وز یر تعلیم کا پتلا نذ ر آتش کیاگیا۔ اس کے بعد وہیں پہ ایک جلسہ منعقد کیاگیا ، جس کی صدارت تنظیم کے نائب صدر روشن کمار نے کیا۔ اجلاس کو خطاب کرتے ہوئے اے آئی ایس ایف کے کھگڑیا ضلع صدر ابھیشیک کمار نے کہا کہ بہار اسکول اکزامنیشن بورڈ نے بڑے پیمانے پر فیس میں اضافہ کیا ہے۔ گذشتہ سال انٹر امتحان فارم کی فیس 900 روپے تھی۔ اس بار اسے بڑھاتے ہوئے بورڈ نے 1200 روپے کردیا ہے۔ سرکار تعلیم کو منافع کی اشیاءبناکر لوٹ مچانا چاہتی ہے۔ لگاتار مختلف قسم کے فیس میں اضافہ کر طلبا کا مالی استحصال کیا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بہار میں تعلیم کی حالت بڑی قابل رحم ہے۔ اسکول اور کالجوں میں پڑھانے کے لئے ٹیچر نہیں ہیں سرکار پروفیسر ، لیکچرار کی بحالی نہیں کررہی ہے۔ جس کی وجہ سے اہل نوجوان بے روزگار بیٹھے ہیں۔ کوسی جسے فرکیہ کا آکسفور ڈ کا کہا جاتا تھا آج ٹیچر نہ ہونے کی وجہ کر یہاں کلاس نہ ہو پاتا ہے۔ سرکار کی عوام مخالف پالیسیوں کی وجہ کر طلبا کا مستقبل برباد ہورہا ہے۔ موقع پر کئی طلبا نے اپنی باتیں رکھیں ۔ کرم ویر نے کہا کہ اے آئی ایس ایف مسلسل طلبا کے حق کی باتیں کرتا رہا ہے۔ آج بھی فیس میں اضافہ کے سوال کو لے کر پوری ریاست میں تحریک چلا رہا ہے۔ موقع پر پرنس ، رنویر ، دھیرج ، نتیش ، آدرش ، سورج ، رانا پرتاپ ، راکیش ،ا کھلیش ، روشن ، امن وغیرہ طلبا موجود تھے ۔

About the author

Taasir Newspaper