امریکی ریاست کیلیفورنیامیں کیچڑ کے سیلاب کے باعث 13 افراد ہلاک

0
14

نیویارک 10جنوری ( آئی این ایس انڈیا ) امریکی ریاست جنوبی کیلیفورنیا میں شدید بارش کے بعد سیلاب اور کمر تک اونچے کیچڑ کے ریلے کے سبب کم از کم 13 افراد ہلاک ہو گئے ہیں جبکہ150 سے زائدافراد کو ہسپتال پہنچایا گیا ہے۔ہسپتال پہنچائے جانے والے افراد میں سے کم از کم 20 افراد کو طوفان کے باعث زخم آئے ہیں جب کہ چار کی حالت تشو یشنا ک بتائی جا رہی ہے۔سینٹا باربرا کے مشرق رومیرو کینیون میں کم از کم 300 افراد پھنسے ہوئے ہیں اور پو لیس کا کہنا ہے کہ وہاں کا منظر پہلی جنگ عظیم کے کسی میدان کا سماں پیش کرتا ہے۔حکام کا کہنا ہے کہ کیچڑ کا سیلاب اسی علاقے میں آیا ہے جہاں گذشتہ ماہ جنگل کی آگ سے تباہی ہوئی تھی۔ سیلاب اور کیچڑ کے سبب ساحلی ریل لائن تقریبا 50 کلومیٹر تک بند ہے۔ ایمر جنسی سروسز کا کہنا ہے کہ بہت سے لوگوں کا ابھی کوئی سراغ نہیں ہے اور یہ کہ ہلاکتوں میں اضافے کا خد شہ ہے۔ہزاروں لوگ سیلاب سے بچنے کے لیے محفو ظ مقام کی طرف بھاگے ہیں جبکہ 50 سے زیاد امدادی کارروائی عمل میں لائی جا چکی ہے۔حکام کا کہنا ہے کہ سب سے زیادہ نقصان ان گھروں کو ہوا ہے جو خالی کرائے جانے والے زون میں نہیں آتے تھے۔سینٹا باربرا کا و¿نٹی کے محکمہ آتش کے ترجمان مائک ایلیاسن نے کہا کہ شدید بارش کی وجہ سے مونٹسیٹو کے علاقے میں کیچڑ کا سیلاب آ گیا جس کی وجہ سے کئی گھر بنیاد سے ڈھے گئے۔لاس اینجلس میں بی بی سی کے نما ئندے جیمز کک نے بتایا کہ چھوٹی کاروں کی سائز کے لکڑی کے ٹکڑے پہاڑوں سے بہہ کر آئے ہیں جس سے راستے بند ہو گئے ہیں۔بچنے والوں میں ایک 14 سالہ لڑکی شامل ہے جو اپنے تباہ شدہ گھر میں تقریبا چار گھنٹے تک پھنسی رہی۔کاو¿نٹی کے فائر کیپٹن ڈیو زینیبونی نے کہا پانچ افراد منگل کی صبح مونٹیسیٹو میں مردہ پائے گئے۔ ان کی موت طوفان کی وجہ سے ہوئی تھی۔اس علاقے کے پڑوس میں امیر افراد کے گھر ہیں جن میں اداکار روب لو اور چیٹ شو کے میزبان ایلن ڈیجنرس کے مکانات شامل ہیں۔ معروف ادا کارہ اوپرا ونفری کی بھی وہاں املاک ہے جس کی مبینہ قیمت نو کروڑ ڈالر لگائی جاتی ہے۔امریکی کوسٹ گارڈ ز نے امدادی کارروائی کے لیے کئی پراوازیں بھیجی ہیں اور لوگوں سے ڈرون نہ اڑان کی اپیل کی ہے نہیں تو پروازیں معطل کر دی جائیں گی۔دسمبر میں لگنے والی آ گ بشمول ’’تھامس فائر‘ کے سبب اس علاقے کے سبز ے جل کر خاکستر ہو گئے جو کہ سیلاب اور مٹی کے تو دے گرنے سے حفاظت کر تے تھے۔دو ماہ میں دوسر ی بار پیر کو کیلیفورنیا کے ہزاروں باشندوں کو اپنے مکا نات خالی کرنے کا حکم دیا گیا تھا۔ برن بینک میں حکام نے لازمی طور پر مکان خالی کرنے کا حکم دیا تھا۔ اطلا عا ت کے مطابق وہاں کیچڑ میں گاڑیوں کو بہتے دیکھا گیا ہے۔بہت سے لوگوں نے سوشل میڈیا پر کیچڑ میں گھر ے اپنے گھر کی تصاویر پوسٹ کی ہیں۔ ملبے اور کیچڑ کے سبب بہت سی سڑکیں بند ہیں جن میں اہم شاہراہ نمبر 101 بھی شامل ہے۔فیڈرل ایمرجنسی مینجمنٹ ایجنسی نے کیلیفورنیا کے رہائیشیوں کے لیے انتباہ جا ری کیا تھا کہ جن علاقوں میں پہلے سیلاب کا خطرہ نہیں تھا اب وہاں بھی سیاب کا خطرہ ہے۔پیر کے روز تقریبا 30 ہزار افراد کو گھر بار چھوڑنے کا حکم دیا گیا تھا۔ یہ تباہ کاریاں موسم کی تبدیلی کا سبب ہیں۔