People stand on rubble of damaged buildings, after an airstrike in the besieged town of Hamoria, Eastern Ghouta, in Damascus, Syria Janauary 9, 2018. REUTERS/Bassam Khabieh 3

شام: 10 روز میں بمباری کے دوران 80 شہری جاں بحق

دمشق،ااجنوری(پی ایس آئی)اقوام متحدہ کے مندوب برائے انسانی حقوق شہزادہ زید بن رعد الحسین نے کل بدھ کو ایک بیان میں بتایا کہ شام میں دمشق کےقریب مشرقی الغوطہ میں اسدی فوج کی وحشیانہ بمباری کے نتیجے میں 10 ایام میں 85 عام شہری مارے گئے۔ متقولین میں بچے اور خواتین بھی شامل ہیں۔ایک بیان میں اقوام متحدہ کے مندوب برائے انسانی حقوق نے کہا کہ شامی عوام کی مصیبتیں ختم ہونے کا نام نہیں لے رہیں۔ مشرقی الغوطہ میں چار لاکھ افراد اسد رجیم کے خوفناک محاصرے میں ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ اسدی فوج اور اس کی معاون ملیشیا مشرقی الغوطہ میں دن رات فضائی اور زمینی حملے کررہی ہے، جس کے نتیجے میں وہاں پرانسانی المیہ رونما ہونے کا اندیشہ ہے۔اقوام متحدہ کے مندوب نے مشرقی الغوطہ میں بمباری کے نتیجے میں ہونے والی ہلاکتوں پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہارکرتے ہوئے اسدی فوج کی غیرانسانی سرگرمیوں کی مذمت کی۔ رعد الحسین کا کہنا تھا کہ محصور اور نہتے شہریوں پر تباہ کن بمباری کرنے والے بنیادی انسانی حقوق اور انسانی اقدارواصولوں کی توہین کررہےہیں۔ان کا کہنا تھا کہ 31 دسمبر کے بعد کی گئی بمباری میں دمشق کےقریب 21 خواتین اور 30 بچوں سمیت 85عام شہری جاں بحق ہوچکے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں